Tag Archives: عمران خان

قانون کی بالادستی کے بغیرقوم نہیں اٹھ سکتی، وزیراعظم عمران خان


اسلام آباد(نیوزڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ قانون کی بالادستی کے بغیرقوم نہیں اٹھ سکتی،آج وقت ہے کہ ہم اپنی حالت بدلیں،ریاست مدینہ میں حکمران قانون سے اوپر نہیں تھے،لیڈر عوام کوجوابدہ ہوتا ہے،انہوں نے وزارت عظمیٰ کا قلمدان سنبھالنے کے بعد قوم سے اپنے پہلے خطاب میں کہا کہ سب سے

کارکنان کا شکریہ ادا کرتاہوں۔ جو 22سال قبل میرے ساتھ اس تحریک میں شامل ہوئے تھے۔دوسرا میرے رول ماڈل قائداعظم نے ایک مشن کیلئے سیاست کی۔جیسے نبی پاک ﷺ نے ریاست مدینہ کیلئے مشن کیلئے کام کیا۔۔دنیا میں وہ کیا تھا کہ تھوڑے سے قبیلے تھے اور آپ ﷺ نے دنیا کے ان تمام قبیلوں کی امامت کی۔آج احسن رشیداورسلونی بخاری ہمارے ساتھ چلی تھیں وہ آج نہیں ہیں۔ میں تمام کارکنان کاشکریہ ادا کرتا ہوں۔ لوگ ان کا مذاق اڑاتے تھے کہ کس تانگہ پارٹی کے ساتھ آپ ہیں۔انہوں نے کہا کہ قوم کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں کہ آج ہم کدھر ہیں ؟آج پاکستان کا قرض 28ارب اور 10سال قبل 6ہزار ارب تھا۔2013ء سے قرض 15ہزار ارب سے 28ارب تک پہنچ گیا ہے۔ہم حقائق قوم کے سامنے لائیں گے یہ پیسا کہاں گیا؟عمران خان نے کہا کہ ہم قرضوں کے اوپر جوہم سود دے رہے ہیں وہ سود اتارنے کیلئے قرض لے رہے ہیں۔ پیپلزپارٹی حکومت کا سالانہ دوارب قرض تھا۔جب پیپلزپارٹی گئی تو60ارب آج 95ارب ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے روپے پرپریشر اسی صورتحال کا ہے۔قوم کوگھبرانے کی ضرورت نہیں ،ہم حل کریں گے۔ایک طرف قرض ہیں دوسری طرف ہیومن

ڈویلپمنٹ ہے۔یواین ڈی پی کی رپورٹ ہے ہم دنیا میں پانچ ممالک میں ہیں جہاں سب سے زیادہ بچے گندا پانی پینے ، سب سے زایدہ عورتیں ڈلیوری کے باعث مرجاتی ہیں ۔ اسی طرح ہم ان پانچ ممالک میں ہیں جہاں غذا نہ ملنے سے بچے مر جاتے ہیں۔اور نشرونما ہی نہیں کرسکتے۔ان بچوں میں 45فیصد بچے شامل ہیں۔ایسے بچے زندگی کی دوڑ میں شروع سے ہی پیچھے

رہ گئے، وہ 21ویں صدی میں چل ہی نہیں سکتے۔۔عمران خان نے کہاکہ ہمارے پاس دو راستے ہیں ایک راستہ جہاں ہم آج کھڑے ہیں ہمارے پاس پیسا نہیں ہے، روزگار، کسانوں کودینے کیلئے پیسا نہیں قرض چڑھ رہے ہیں۔ دوسرا راستہ یہ ہے۔۔پاکستان میں اشرافیہ ،حکمرانوں کا رہن سہن ،جیسے وزیراعظم کے 524ملازم ہیں، 80گاڑیاں ، جن میں 33بلٹ پروف ،ایک ایک کی قیمت 5کروڑ سے زائد ، ہیلی کاپٹر، گھر ، ریسٹ ہاؤسز، وزراعلیٰ ہاؤسز، گورنرہاؤسز، ڈی سی بڑے بڑے گھروں میں رہتے ہیں۔ایک طرف قوم غریب اور دسری طرف صاحب اقتدار محلات میں رہتے ہیں ویسے ہی رہتے جیسے انگریزوں نے حکومت بنائی تھی۔65کروڑ روپے وزیراعظم بیرونی دورے پرکرتا ہے۔اسپیکر قومی اسمبلی کا بجٹ کروڑ ں میں ہے انہوں نے 8کروڑ روپت بجٹ خرچ کیا۔۔وزیراعظم نے کہا کہ اگر ہم نے اپنا رخ نہ بدلا توہم تباہ ہوجائیں گے۔اللہ قرآن میں کہتا ہے جواللہ اس قوم کی کبھی حالت نہیں بدلتا جواپنی حالت خود نہیں بدلتی۔۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سوا دو کروڑ بچے سکولوں سے باہر ہیں۔ ہم ان کوتعلیم نہیں دیں گے توروزگار کیسے ملے گا؟ پانی کا مسئلہ حل نہیں کریں گے، ماحولیاتی تبدیلیوں سے متاثر ہورہے ہیں۔آج وقت ہے کہ ہم اپنی حالت بدلیں۔قانون کی بالادستی کے بغیرقوم نہیں اٹھ سکتی، نبی پاک ﷺ نے سب سے پہلے قانون کی بالادستی قائم کی اگر میری بیٹی بھی ہوگی تووہ بھی قانون کے کٹہرے میں ہوگی۔خلیفہ بھی قانون کے نیچے تھے۔ اقلیتیں کے حقوق بھی برابر تھے۔نبی پاک ﷺ نے زکوٰة کا نظام بنایا۔جس سے نچلے طبقے کی ضروریات پوری کی جاتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ مغرب میں جمہوری حکومتیں اقتدار میں فائد ہ نہیں اٹھا سکتا۔آج پیسا بنانے کیلئے لوگ اقتدار میں آتے ہیں۔۔دنیا کے عظیم لیڈر اور عظیم انسان نبی پاک ﷺ نے دنیا کوتعلیم کے بارے بتایا ۔قیدیوں کوکہا گیا کہ جودس لوگوں کوپڑھائے گا ان کورہا کردیا جائے گا۔ عمران خان نے کہا کہ ملک اس لیے بنا تھا کہ ہندوپیسے والے تھے تواب مسلمان پیسے والے آگئے۔۔قائداعظم اور علامہ اقبال کا خواب تھا کہ پاکستا ن کوان اصولوں پرکھڑا کریں گے جس پرنبی پاک ﷺ نے ریاست مدینہ کھڑی کی تھی۔تیز فاسٹ باؤلر، دوپارٹی سسٹم میں تیسری پارٹی نہیں آسکتی،یہ کرکٹر نہیں بن سکتا، یہ سب سنتا آرہا ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں وزیراعظم ہاؤس میں نہیں رہوں گا۔ میں تین بیڈروم کے گھر میں رہوں گا،دو گاڑیاں رکھوں گا،دوملازم رکھوں گا۔میں اس لیے یہاں رہ رہاہوں کہ سکیورٹی ایجنسیز نے بتایا کہ جان کوخطرہ ہے ۔سب مہنگی گاڑیاں فروخت کریں گے۔پیسا قومی خزانے میں،․وزراء اعلیٰ ہاؤس ، گورنرہاؤسز میں خرچے کم کریں گے۔۔گورنر ہاؤسز میں کوئی ہمارا گورنر نہیں رہے گا۔اس لیے ہم نے کمیٹی بنائی ہے۔۔گورنر ہاؤس میں اعلیٰ قسم کی یونیورسٹی بنائیں گے۔جہاں لیبارٹریاں ہوں گی۔ایک ہم ٹاسک فورس بنائیں گے۔جس کاکام خرچے کم کرنا ہوگا۔

عمران خان کی سادگی،حقیقی معنوں میں عوامی نمائندہ ثابت کردیا


اسلام آباد(نیوزڈیسک) وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری کے اخراجات کی تفصیل سامنے آگئی ہے، عمران خان کی ایوان صدر میں تقریب حلف برداری پر50ہزار خرچہ ہوا ہے،ان اخراجات میں دودھ، چائے ، بسکٹ اور بجلی کا بل شامل ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے جو کہا وہ سچ

کردکھایا عمران خان نے ایوان صدر میں اپنی تقریب حلف برداری پراٹھنے والے اخراجات کو کم کرکے ثابت کردیا کہ وہ پاکستان میں سادگی کا کلچر عام کریں گے جس کے لیے انہوں نے وزیراعظم ہاؤس کے اخراجات کم کرنے اور وزیراعظم ہاؤس میں رہائش اختیار نہ کرنے کا بھی اعلان کیا تھا۔ تاہم انہوں نے اپنی تقریب حلف برداری میں اخراجات کم کروا کے ثابت کردیا کہ وہ پاکستان کے عوام کی حقیقی معنوں میں نمائندگی کے حق دار ہیں۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ پرپی ٹی آئی کی رہنماء عندلیب عباس نے ایک ٹویٹ شیئر کیا جس میں انہوں نے عوام کو بتایا کہ یہ سادگی ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری کیلئے صرف 50ہزار اخراجات کیے گئے ہیں۔ ان اخراجات میں تقریب حلف برداری میں آنے والے مہمانوں کیلئے دودھ، چائے ، بسکٹ اور پھول سمیت بجلی کا بل بھی شامل ہے۔ تاہم اس سے قبل پیپلزپارٹی کے وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی تقریب حلف برداری پر2008ء میں 76لاکھ روپے خرچ ہوئے۔ 2013ء میں مسلم لیگ ن کے وزیراعظم نوازشریف کی ایوان صدر میں تقریب حلف برداری پر92لاکھ روپے خرچ ہوئے۔تاہم اب

2018ء میں تحریک انصاف کے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پرتقریب حلف برداری کوانتہائی سادہ رکھا گیا جس کے باعث حلف برداری کی تقریب پر صرف 50ہزار روپے خرچ ہوئے ہیں۔ اگر ماضی کی نسبت عمران خان کی تقریب کا موازنہ کیا جائے توماضی کے دو ادوار حکومت کے وزراء کی تقریب حلف برداری پر80لاکھ سے زائد پاکستان کی عوام کے پیسے خرچ ہوئے۔واضح رہے یہ تمام تفصیلات پی ٹی آئی رہنماؤں کی جانب سے سوشل میڈیا پرجاری کی گئی ہیں۔

وزیراعظم عمران خان کی نو منتخب وزیراعلی پنجاب کو مبارکباد


لاہور (نیوزڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے نو منتخب سردارعثمان احمد خان بزدار کو مبارکباد دی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے عثمان بزدار کووزیراعلیٰ پنجاب بننے پرمبارکباد دی ہے۔۔وزیراعظم کا کہنا ہے کہ عثمان بزدار کے انتخاب سے پنجاب میں ایک نئے دور کا آغاز ہوا ہے،اس کے علاوہ پنجاب کی متوقع کابینہ

کے ناموں پر بھی غور کیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق میاں محمودالرشید، علیم خان اور میاں اسلم اقبال کو پنجاب کابینہ میں شامل کرنے پرغور کیا جا رہا ہے۔یاسمین راشد،فیاض الحسن چوہان،سبطین خان،اجمل چیمہ اور آصف نکئی کےنام زیرغور ہیں۔حامد یارہراج اور سردار محسن لغاری کو پنجاب کابینہ میں شامل کرنے پرغور کیا جا رہا ہے۔ یاد رہے پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے نامزد امیدوار سردار عثمان بزدار وزیر اعلی پنجاب منتخب ہو گئے ہیں۔ اسپیکرپرویزالہٰی نے نومنتخب وزیراعلیٰ کو مختصر خطاب کرنے کی دعوت دی۔۔۔عثمان بزدار کا پنجاب اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں قائد ایوان کےانتخاب کیلیے تہہ دل سے مشکور ہوں۔میرے گھرمیں آج تک بجلی نہیں ہے۔ سب سے پسماندہ علاقے سے تعلق رکھتاہوں۔اپنے قائد کے ویژن سے تمام مشکلات پرقابو پائیں گے ۔گڈگورننس ترجیح ہوگی کرپشن کا خاتمہ کریں گے اور بدعنوانی کاخاتمہ کریں گے۔ کے پی کی طرزپر پنجاب میں پولیس کاماڈل اپنائیں گے۔اداروں کومضبوط کریں گے اور اپوزیشن کی اچھی تجاویز کاخیرمقدم کریں گے۔’اسٹیٹس کو‘‘بھرپورطریقے سے توڑیں گے۔واضح رہے وزات اعلی کے

انتخاب میں پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے نامزد عثمان بزدار 186ووٹ حاصل کر کے کامیاب ہوئے جب کہ پاکستان مسلم لیگ ن کی طرف سے نامزد امیدوار حمزہ شہباز 159 ووٹ حاصل کر سکے۔

عمران خان نےپہلی تقریرمیں صرف دھمکیاں دیں،خورشید شاہ


اسلام آباد(نیوزیدسک) پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماء سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ عمران خان نے اپنی پہلی تقریر میں دھمکیاں دیں،اگر یہ نیا پاکستان ہے توپھر اللہ ہی رحم کرے، عمران خان کی تقریر سے لگا جیسے ان کی تربیت لالو پرساد یا پھر کسی دیوانے نے کی ہو۔انہوں نے آج یہاں اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی میں

عمران خان کی پہلی تقریر سے مایوسی ہوئی۔ امید نہیں تھی کہ عمران خان اتنی غیرذمہ داری کا مظاہرہ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کی تقریر وزیراعظم کی تقریر نہیں تھی۔ تقریر سے لگا جیسے وزیراعظم عمران خان بھاٹی چوک میں جلسہ کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایوان کا ماحول ٹھیک رکھنا حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمراں خان نے اپنی تقریر میں دھمکیاں دیں اور کنٹینرکی ترغیب دی۔ اگر یہ نیا پاکستان ہے توپھر اللہ ہی رحم کرے۔۔خورشید شاہ نے کہا کہ عمران خان قائد اعظم کواپنا آئیڈیل کہتے ہیں لیکن انہوں نے ان سے کچھ نہیں سیکھا ۔۔سید خورشید شاہ نے کہا کہ عمران خان کی تقریر سے لگا جیسے ان کی تربیت لالو پرساد یا پھر کسی دیوانے نے کی ہو۔واضح رہے عمران خان نے وزیراعظم منتخب ہونے کے بعد ایوان سے اپنے پہلے خطاب میں اپوزیشن کوخبردار کیا کہ میں کسی سے بلیک میل نہیں ہوں گا۔ احتجاج کرنا ہے تویا پھر سڑکوں پر نکلیں ،چیلنج کرتا ہوں کہ شہبازشریف اور مولانا فضل الرحمن طویل مدتی دھرنا دے کردکھا دیں۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ڈی چوک میں دھرنا دے ہم ان کوکنٹینر بھی فراہم کریں گے اور ان کھانا بھی

پہنچائیں گے۔۔عمران خان نے واضح کہا کہ حکومت کا پہلا کام کڑا احتساب کرنا ہے ۔ ملک کومقروض بنا دیا گیا ہے ۔لوٹا ہوا پیسا واپس لائیں گے انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جو مرضی کرلے لیکن ان کواین آر او نہیں ملے گا۔وعدہ کرتا ہوں کہ ان کو نہیں چھوڑوں گا۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کو طاقتور بناؤں گا۔ہر ہفتے پارلیمنٹ میں آؤں گا۔

نئے وزیراعظم کا نیا انداز! وزیر اعظم عمران خان چھٹی کے روز اپنے دفتر پہنچ گئے


لاہور (نیوزڈیسک) میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان چھٹی کے روز بھی امور مملکت چلانے میں مصروف ہیں۔۔عمران خان نے آج معمول کے مطابق ورزش کی اور بنی گالا میں صبح سویرے واک کی۔جس کے بعد عمران خان اپنے دفتر پہنچ گئے۔رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان چھٹی کے روز بھی امور مملکت چلانے

میں مصروف ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سرکاری امور سے متعلق اہم فیصلے بھی متوقع ہیں۔اس حوالے سے عمران خان کی تصاویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں جن میں دیکھا جا سکتا ہے کہ عمران خان نے ہاتھوں میں فائلیں پکڑی ہوئی ہیں۔اور وہ بہت ہر اعتماد انداز میں چل رہے ہیں۔یاد رہے وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے کابینہ کا بھی اعلان کر دیا گیا ہے اور وزیراعظم پاکستان چاہتے ہیں جلد از جلد ان کی کابینہ کام کرنا شروع کر دے۔ تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے جاری لسٹ کے مطابق ایم کیوایم کے سینیٹر فروغ نسیم کووزیر قانون ون انصاف اور خالد مقبول صدیقی کو انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ چوہدری طارق بشیر چیمہ وزیر سیفران، نورالحق قادری وزیر مذہبی امور، شیریں مزاری وزیر انسانی حقوق، غلام سرور خان وزیر پیٹرولیم ڈویژن، زبیدہ جلال وزیر دفاعی پیداوار، فواد چوہدری وزیر اطلاعات ہوں گے۔ کابینہ ارکان کل پیر کے روز ایوان صدر میں حلف اٹھائیں گے ۔جس کے بعد تمام وزرا اپنے اپنے عہدے کی ذمہ داریاں سنبھالتے ہوئے کام کا آغاز کر دیں گے۔جب کہ وزیراعظم

پاکستان عمران خان توپہلے سے ہی کام کا آغاز کر چکے ہیں اور آج چھٹی کے روز بھی عمران خان اپنے دفتر پہنچے ہیں۔۔وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سرکاری امور سے متعلق اہم فیصلے بھی متوقع ہیں۔

عمران خان کی حلف برادری میںکون کونسے پاکستانی اداکارئوں نے شرکت کی ،جانئے


اسلام آباد(نیوز دیسک)پاکستان کے 22 وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں سیاسی، اسپورٹس اور دیگر سماجی شخصیات کے ساتھ شوبز ستاروں نے بھی شرکت کی۔تقریب حلف برداری میں گلوکار و پی ٹی آئی رہنما ابرار الحق، معروف اداکار جاوید شیخ اور اداکارہ ثناء جاوید نے خصوصی طور پر شرکت کی۔اس موقع پر جاوید شیخ کا کہنا تھا کہ ‘آج

نیا پاکستان بننے جا رہا ہے، جس پر وہ بےحد خوش ہیں۔گلوکار ابرار الحق نے بھی تقریب حلف برداری میں شرکت کی اور اپنے ٹوئٹر پیغام میں تمام پاکستانیوں کو تبدیلی کی مبارک باد پیش کرتے ہوئے اپنے ہی گانے کے بول لکھے، ’سر اٹھا کے دیس میں چلنے کا موسم آگیا، آؤ کے اب ایک ہوجانے کا موسم آگیا‘۔ تقریب حلف برداری میں اداکارہ ثناء جاوید بھی دکھائی دیں، جو پی ٹی آئی رہنما یاسمین راشد کے ساتھ براجمان تھیں۔اس موقع پر انہوں نے بھی ملک کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔دوسری جانب دیگر شوبز اسٹارز کی جانب سے بھی عمران خان کو وزیر اعظم بننے پر مبارک باد دینے کا سلسلہ جاری ہے۔اداکار عمران عباس نے نئے وزیراعظم عمران خان کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے لکھا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ وہ پاکستان کو ترقی اور بڑھتا دیکھیں گے جو اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھا۔ اداکارہ ماورہ حسین نے ایک جذباتی ٹوئٹ شیئر کرتے ہوئے لکھا، ’اس دن کا طویل عرصے سے انتظار تھا، وزیراعظم عمران خان کے ساتھ اب یہ واقعی نیا پاکستان ہے۔‘ اداکارہ نے عمران خان کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار بھی کیا۔اداکارہ سجل علی نے ٹوئٹر پر عمران خان کی تصویر شیئر

کرتے ہوئے انہیں وزیراعظم بننے پر مبارکباد دی۔اداکارہ و میزبان ثمینہ پیرزادہ نے بھی اپنے ٹوئٹر پیغام میں بتایا کہ ‘وہ بہت خوش ہیں اور پاکستانی ہونے پر فخر محسوس کر رہی ہیں۔

وزیراعظم عمران خان اور بشریٰ بی بی کی نئی تصویر نے سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی


اسلام آباد(نیوز ڈیسک) اسلامی جمہوریہ پاکستان کے 22 وین منتخب وزیراعظم عمران خان اور خاتون اول بشریٰ بی بی کی نئی تصویر منظر عام پر آگئی ہے جس نے انٹرنیٹ صارفین کی توجہ حاصل کر لی ہے۔ منظر عام پر آنے والی نئی تصویر حلف برداری کی تقریب کے لیے ایوان صدر روانگی سے پہلے کی ہے۔ عمران خان نے اس تصویر میں کالے رنگ کی

شیروانی زیب تن کر رکھی ہے جبکہ بشریٰ بی بی سفید گاؤن میں ملبوس ہیں۔ ہمیشہ کی طرح آج بھی بشریٰ بی بی اس تصویر میں مکمل نقاب اوڑھے ہوئے ہیں۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان اور خاتون اول بشریٰ بی بی یہ تصویر دیکھ کر صارفین نے خوشی کا اظہار کیا اور کہا کہ بالآخر 22 سال کی ان تھک محنت کے بعد اللہ نے عمران خان کی مدد کی اور وہ پاکستان کے 22 ویں وزیر اعظم منتخب ہو گئے۔جبکہ بشریٰ بی بی بھی اپنے نقاب اور لباس کی وجہ سے اسلامی جمہوریہ پاکستان کی ہی خاتون اول لگ رہی ہیں۔وزیراعظم عمران خان اور خاتون اول بشریٰ بی بی کی یہ نئی تصویر انٹرنیٹ پر کافی مقبولیت حاصل کر رہی ہے۔ یاد رہے کہ آج نو منتخب وزیراعظم کی تقریب حلف برداری ایوان صدر میں منعقد ہوئی۔ جس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان ،پارلیمانی رہنما، ملکی و غیر ملکی مہمان اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں سمیت عمران خان کے قریبی دوست شریک تھے۔تقریب حلف برداری میں سابق بھارتی کرکٹ نوجوت سنگھ سدھو بھی شریک تھے۔ نومنتخب وزیر اعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں ان کی تیسری اہلیہ اور پاکستان کی خاتون اول بشریٰ

بی بی بھی شریک تھیں۔بشریٰ بی بی تقریب حلف برداری میں مرکز نگاہ بنی رہیں، انہوں نے ایوان صدر آمد پر آرمی چیف کی اہلیہ سے مصافحہ بھی کیا جبکہ حلف برداری کے بعد صحافیوں سے بھی ملاقات کی۔بشریٰ بی بی نے ایوان صدر روانگی سے قبل ایک تصویر بھی بنوائی جو سوشل میڈیا پروائرل ہو گئی۔ اس تصویر میں بشریٰ بی بی کے ہمراہ ان کی دوست اور عمران خان کے قریبی ساتھی زلفی بخاری کو دیکھا جا سکتا ہے۔ایوان صدر سے وزیرا عظم عمران خان بشریٰ بی بی کے ہمراہ اپنی نئی سرکاری رہائشگاہ کے دورے پر گئے جہاں سے بشریٰ بی بی واپس بنی گالہ روانہ ہو گئیں۔ اس موقع پر بشریٰ بی بی کے ہمراہ چار گاڑیوں کو قافلہ تھا۔

عمران خان کے وزیراعظم منتخب ہونے کی خوشی میں نیازی ایکسپریس کا شاندار اعلان ، عوام کو بڑی خوشخبری سنادی


لاہور(سی پی پی ) عمران خان نیازی نے آج صبح ایوان صدر میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے 22 ویں وزیراعظم کی حیثیت سے حلف اْٹھایا۔۔عمران خان کی اس حلف برداری کی تقریب کی خوشی میں ان کے آبائی حلقے میانوالی میں مٹھائیاں تقسیم کی گئی جبکہ ملک بھر میں عمران خان کے چاہنے والوں نے بھی مٹھائیاں تقسیم کیں اور عمران خان کے وزیراعظم

بننے کی خوشی منائی۔اسی خوشی کے پیش نظر معروف ٹرانسپورٹ سروس نیازی ایکسپریس نے مسافروں کے لیے شاندار اعلان کر دیا ہے۔ نیازی ایکسپریس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بْک پر اعلان کیا کہ عمران خان نیازی کے وزیر اعظم منتخب ہونے کی خوشی میں نیازی ایکسپریس میانوالی کی عوام کے لیے میانوالی سے لاہور کے لیے عیدالاضحٰی تک فری سفری سہولت فراہم کر رہی ہے۔اس پوسٹ میں بتایا گیا کہ مسافروں کو یہ سہولت نیازی ایکسپریس کے چئیرمین اعظم خان نیازی کے کہنے پر دی جا رہی ہے۔یہ پیشکش 21 اگست کو عید الاضحیٰ کے موقع پر میانوالی سے لاہور سفر کرنے والوں کے لیے ہو گی۔ قبل ازیں عمران خان کی حلف برداری کی خوشی میں راولپنڈی کے ایک ریڑھی بان نے مفت ناشتہ تقسیم کیا۔راولپنڈی کے راجا بازار میں ریڑھی بان نے ناشتہ کرنے آئے گاہکوں سے کوئی رقم وصول نہیں کی۔ ریڑھی بان کا کہنا ہے کہ مجھے عمران خان کے وزیراعظم منتخب ہونے کی بے حد خوشی تھی ، عمران خان کے وزیر اعظم منتخب ہونے اور حلف لینے کی خوشی میں آج میں نے تمام گاہکوں کو مفت ناشتہ کروایا اور کسی سے پیسے وصول نہیں کیے۔

 

عمران خان کے بعد ایک اور معروف کرکٹر کا سیاست میں قدم رکھنے کا فیصلہ


نئی دہلی (نیوزڈیسک) پاکستان کے وزیراعظم عمران خان سیاست میں آنے سے قبل ایک کرکٹر تھے۔۔وزیراعظم عمران خان سیاست میں آنے سے قبل ہی پوری دنیا میں جانے جاتے تھے۔22 سال کی مسلسل جدو جہد کے بعد عمران خان اپنا خواب پورا کرنے میں کامیاب ہوئے۔۔الیکشن 2018ء میں جیت کے بعد گزشتہ روز عمران خان نے وزیر اعظم پاکستان کا

منصب سنبھال لیا۔ عمران خان کی کامیابی کے بعد کئی دوسرے کرکٹرز نے بھی سیاست میں قدم رکھنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔اسی حوالے سے میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ عمران خان کی کامیابی سے متاثر بھارتی کرکٹر گوتم گمبھیر نے بھی سیاست کی دنیا میں قدم رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی بلے باز گوتم گمبھیر بھارتی جنتا پارٹی میں شامل ہو کر اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں ۔ ذرائع کے مطابق بی جے پی نے انہیں دلی سے انتخابات میں ٹکٹ دینے کا فیصلہ بھی کر لیا ہے، اس کے علاوہ اداکار اکشے کمار کو بھی بی جے پی کا ٹکٹ دیئے جانے کا امکان ہے۔یاد رہے 25 جولائی کے انتخابات میں فتح حاصل کرنے والے عمران خان نے 18 اگست کی صبح کو ایوان صدر میں وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھایا۔ وزیراعظم عمران خان کو دنیا بھر سے مبارکباد کے پیغامات موصول ہو رہے ہیں۔ عمران خان کے مبارکباد دینے والوں میں بڑے بڑے کھلاڑی بھی شامل ہیں۔جو عمران خان کے وزیراعظم بننے پر بہت خوش ہیں اور عمران خان کی زندگی سے بہت متاثر بھی ہیں۔یہی وجہ ہے گوتم گمھبیر نے بھی سیاست میں آنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

گوتم گمبھیر بھارتی جنتا پارٹی میں شامل ہو کر اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔جب کہ بی جے پی نے انہیں دلی سے انتخابات میں ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا ہے جس کے بعد گوتم گمبھیر اپنے سیاسی کیرئیر کا آغاز کریں گے۔

عمران خان کے بعد ایک اور معروف کرکٹر کا سیاست میں قدم رکھنے کا فیصلہ

وزیراعظم عمران خان کا وزارت داخلہ اپنے پاس رکھنے کا فیصلہ


اسلام آباد(نیوزڈیسک) وزیراعظم عمران خان کا وزارت داخلہ اپنے پاس رکھنے کا فیصلہ، پارٹی کے متعدد رہنماوں کے درمیان وزارت داخلہ حاصل کرنے کیلئے لابنگ کرنے پر وزیراعظم نے اہم ترین وفاقی وزارت اہنے ہاتھ میں رکھنے کا فیصلہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزارت داخلہ کے حوالے سے سربراہ تحریک انصاف اور وزیراعظم پاکستان عمران

خان ایک مشکل فیصلہ کرنے پر مجبور ہوگئے۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے پارٹی رہنماوں کے درمیان اختلافات کے باعث وزارت داخلہ کسی رہنما کو نہ سونپنے کا فیصلہ کیا ہے۔ عمران خان نے وفاقی وزارت داخلہ اپنے پاس ہی رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور وزیراعظم عمران خان نے 20 رکنی وفاقی کابینہ کی منظوری دے دی ہے،وفاقی کابینہ میں 15وفاقی وزراء اور5 مشیر شامل ہوں گے۔ ترجمان تحریک انصاف اور وفاقی وزیراطلاعات ونشریات کے لیے نامزد فواد چودھری کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے 20 رکنی وفاقی کابینہ کی منظوری دے دی ہے۔فواد چودھری نے کہا کہ وفاقی کابینہ کے ارکان پیر کی صبح اپنے عہدوں اور وزارتوں کا حلف اٹھائیں گے۔20 رکنی وفاقی کابینہ میں وزارت خارجہ کا قلمدان شاہ محمود قریشی، انسانی حقوق کی وزارت کا قلمدان شیریں مزاری کوسونپا گیا ہے۔ جبکہ غلام سرور خان وزیر پٹرولیم، نورالحق قادری مذہبی امور، فروغ نسیم قانون و انصاف کے وزیر ہوں گے۔ اسی طرح دفاعی پیداوار کیلئے زبیدہ جلال ، اطلاعات ونشریات کیلئے، وزارت ریلوے کا قلمدان

شیخ رشید کوسونپ دیا گیا ہے۔۔وزیراعظم نے وزارت دفاع پرویز خٹک سونپی ہے جبکہ طارق بشیر چیمہ ریاستی اور سرحدی امور،اسد عمروفاقی وزیرخزانہ ہوں گے۔ اسی طرح شفقت محمودفیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ،،خالد مقبول صدیقی انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن ،،فہمیدہ مرزا وزیربین الصوبائی رابطہ اور عامر محمود کیانی وزیرصحت ہوں گے۔اسی طرح وفاقی کابینہ میں 5مشیر بھی نامزد کردیے گئے ہیں۔ان میں ظہیرالدین بابراعوان مشیر پارلیمانی امور، امین اسلم مشیر ماحولیات،،ڈاکٹر عشرت حسین کومشیر اصلاحات،عبدالرزاق داؤد کومشیر برائے اقتصادیات اورمحمد شہزاد ارباب مشیر اسٹیبلشمنٹ کونامزد مقرر کیا گیا ہے۔ واضح رہے چیئرمین پی ٹی آئی اور وزیراعظم عمران خان نے آج اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔ایوان صدر میں وزیراعظم عمران خان سے صدرمملکت ممنون حسین نے حلف لیا۔ تقریب حلف برداری میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان ،پارلیمانی رہنما، ملکی و غیر ملکی مہمان اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں سمیت عمران خان کے قریبی دوست شریک تھے۔ تقریب حلف برداری میں سابق بھارتی کرکٹ نوجوت سنگھ سدھو بھی شریک تھے۔ نومنتخب وزیر اعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں ان کی تیسری اہلیہ اور پاکستان کی خاتون اول بشریٰ بی بی بھی شریک تھیں۔