Tag Archives: سدھو

نو جو ت سنگھ سدھو کے جنرل باجوہ سے گلے ملنے کے اثرات ہمارے فوجیوں پرپڑے، بھارتی وزیردفاع نے حیران کن با ت کہہ دی


نئی دلی(نیوز ڈیسک ) بھارتی وزیردفاع نرملا سیتارمن نے کہا ہے کہ نوجوت سنگھ سدھو کے پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے گلے ملنے کے اثرات ہمارے فوجیوں پر پڑے ہیں۔بھارتی میڈیا کے مطابق انڈین ویمن پریس کارپوریشن میں گفتگو کے دوران نرملا سیتارمن نے نوجوت سنگھ سدھو کے جنرل قمر جاوید باجوہ سے گلے ملنے کو تنقید کا نشانہ

بناتے ہوئے کہا کہ سدھو کو پاک فوج کے سربراہ سے ملاقات کے دوران گلے ملنے سے گریز کرنا چاہیے تھا۔ان کا کہنا تھا کہ سدھوکے بہت سے پرستار ہیں اور ایسے میں ان کے پاکستان جا کر جنرل قمر جاوید باجوہ سے بغل گیر ہونے کے عمل نے ہمارے فوجی اہلکاروں پر اثرات ڈالے ہیں۔بھارتی وزیردفاع نے کہا کہ ہماری فوج پاکستان کے حوالے سے ایک خاص انداز میں سوچتی ہے اور اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے سدھو کا پاکستانی آرمی چیف سے ملنا ایک ایسا عمل تھا جس سے عوام کا مورال بھی گرا۔واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے دوران نوجوت سنگھ سدھوپاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے بغل گیر ہوئے تھے۔

سدھو کے دورہ پاکستان،سیاستدانوں سے گلے ملنے پر بھارتی وزیر خارجہ برہم


نئی دہلی (نیوزڈیسک) بھارت کے سابق کرکٹر نوجوت سنگھ کی پاکستان کے دورے اور آرمی چیف سے گلے ملنے پر بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج بھی برہم ہوگئیں، سابق کرکٹر سے ملاقات میں ناراضی کا اظہار کیا اور انہیں ڈانٹ پلادی۔ بھارتی ٹی وی کے مطابق سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار ملک بھارت کی سوچ سب سے چھوٹی ہے جس کا ثبوت یہ ہے کہ

سابق کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو کے پاکستان کے دورے پراس کا غصہ تاحال کم نہیں ہوا ۔ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے نوجوت سنگھ سدھو پر الزام لگایا کہ نارووال کے قریب کرتار پور بارڈر کھولنے کا معاملہ صرف ان کی وجہ سے سیاست کا شکار ہو گیا ۔سشما سوراج نے سدھو سے کہا کہ بھارت کرتار پور سرحد کھولنے کے لئے پاکستان سے بات کرنے کی تیاری کر رہا تھا لیکن ان کے بیانات کی وجہ سے معاملہ موخر ہو گیا ہے۔

سدھو کیخلاف 20 سال پرانا کیس پھر کُھل گیا،اب بچنا مشکل ، تشویشناک خبر آگئی


اسلام آباد(نیو زڈیسک)پاکستان کا دورہ کر کے بھارت میں شدید تنقید کا نشانہ بننے والے کانگریسی رہنما اور سابق کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو کے خلاف ایک 20 سال پرانا کیس پھر سے کُھل گیا۔ٹائمز آف انڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق بھارتی سپریم کورٹ نے 1998 میں ہونے والے ٹریفک حادثے میں ایک شخص کی ہلاکت سے متعلق کیس میں اپنے فیصلے پر

نظرثانی کا فیصلہ کیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق 27 دسمبر 1998ء کو سدھو اور ان کے دوست روپیندر سنگھ ساندھو کی گاڑی کی زد میں آ کر ایک شخص ہلاک ہو گیا تھا۔اس مقدمے میں سیشن کورٹ نے سدھو اور ان کے دوست کو 1999 میں بری کیا تاہم اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا گیا۔ہائی کورٹ نے بریت کے فیصلے کو معطل کرتے ہوئے 2006 میں دونوں کو 3 سال قید کی سزا سنائی جس پر انہوں نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا۔بعدازاں سپریم کورٹ نے رواں برس مئی میں ایک ہزار روپے جرمانہ عائد کرتے ہوئے دونوں کو بری کر دیا تھا۔تاہم اب ہلاک شہری کے لواحقین کی درخواست پر سپریم کورٹ نے نوٹس جاری کیا ہے کہ سدھو وضاحت کریں کہ انھیں سخت سزا کیوں نہ دی جائے؟