Tag Archives: حکومت

حکومت کی بڑی کفایت شعاری مہم کی تیاری، 40 ارب روپے بچانے پر غور


اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) حکومت نے آئندہ بجٹ میں تاریخ کی سب سے بڑی کفایت شعاری مہم کی تیاری مکمل کر لی ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے ہدایات جاری کی تھیں۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی ہدایات کے تحت کفایت شعاری کی مختلف تجاویز تیار کر لی گئی ہیں۔ کفایت شعاری مہم کے ذریعے 40 ارب روپے بچانے پر غور کیا جا رہا ہے۔دنیا نیوز ذرائع کے مطابق کفایت شعاری مہم کے تحت سرکاری افسران کی تنخواہیں منجمند کرنے جبکہ دفاعی افسران کی طرح بیورو کریسی کی تنخواہیں بھی نہ بڑھانے پر غور کیا جا رہا ہے۔اس کے علاوہ سرکاری افسران کی تنخواہیں نہ بڑھانے،
ایوان صدر اور ایوان وزیراعظم اور گورنر ہاؤسز میں سادگی مہم، صدر اور وزیراعظم کے لیے تنخواہوں میں اضافہ نہ کرنے اور گورنرز اور اراکین کابینہ کی تنخواہوں میں اضافہ نہ کرنے پر تجویز کیا جا رہا ہے۔ تنخواہوں میں اضافہ صرف گریڈ ایک سے 16 کے ملازمین پر ہو سکتا ہے۔ذرائع کے مطابق آئندہ بجٹ میں تمام غیر ضروری اخراجات ختم کیے جائیں گے۔ تمام وزارتوں میں غیر ضروری اخراجات ختم کرنے اور وزارتوں میں نئی گاڑیاں اور ایئرکنڈیشنز خریدنے پر پابندی لگانے کی تجویز دی گئی ہے۔وزارتوں اور محکموں میں تزین وآرائش کا فنڈ ختم کرنے، وزارتوں اور محکموں میں تحفے تحائف اور انٹرٹینمنٹ الاؤنس ختم کرنے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔کفایت شعاری مہم کی ابتدائی منظوری منگل کو کابینہ اجلاس میں دی جائے گی تاہم حتمی فیصلہ پارلیمنٹ بجٹ سیشن میں کرے گی۔

حکومت نےعالمی بزنس ٹائیکونز کی آمد کی خوشخبری سنا دی


لندن(سی پی پی) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز زلفی بخاری نے رواں ماہ عالمی بزنس ٹائیکونز کی پاکستان آمد اور غیر ملکی سرمایہ کاری کے بڑے منصوبوں کی نوید سنادی۔لندن میں یو کے اور پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام عید ملن پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے اوورسیز زلفی بخاری کا کہنا تھا

کہ حکومت کی سرمایہ کار دوست پالیسیوں سے مرعوب ہو کر مصر،ملائیشیا اور گلف ممالک سے پاکستان میں بڑے پیمانے پر براہِ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہو گی۔انہوں نے انکشاف کیا کہ رواں ماہ کے آخر میں 9 بزنس ٹائیکونز پاکستان پہنچیں گے۔وہ سرمایہ کاری کے بڑے منصوبوں کاارادہ رکھتے ہیں۔ حکومت پاکستان ان کی سرمایہ کاری کی مکمل حفاظت کرے گی اور انہیں سہولیات فراہم کی جائیں گی۔زلفی بخاری کا مزید کہنا تھا کہ سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے شاندار مواقع سے فائدہ اٹھانے کی دعوت دیتے ہیں جن سے انھیں بھاری فائدہ ملے گا۔

حکومت کا ختم نبوت ﷺ انٹرنیشنل کانفرنس بلانے کا فیصلہ


اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے آئندہ 12 ربیع الاول کو شایان شان طریقے سے منانے اور 2 روزہ ختمِ نبوت ﷺ انٹرنیشنل کانفرنس منعقد کرانے کا اعلان کر دیا۔وزیرِاعظم عمران خان سے وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری نے ملاقات کی ہے کی جس میں وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری سمیت دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ملاقات میں وفاقی وزیر مذہبی امور

نے حالیہ احتجاج اور اس سے نمٹنے سے متعلق کمیٹی کی رپورٹ پیش کی۔اعلامیے کے مطابق وزیرِاعظم عمران خان کو موجودہ صورتحال پر بھی بریف کیا گیا۔وزیر اعظم عمران خان نے 12 ربیع الاول کو شایانِ شان طریقے سے منانے کا اعلان کیا اور ساتھ ہی تمام صوبوں کو ہدایات بھی جاری کیں۔ انہوں نے کہا کہ سیرت طیبہ کے پیغامِ رحمت کو آئندہ نسلوں تک پہنچانا ریاست کی ذمہ داری ہے۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں دو روزہ ختمِ نبوت ﷺ انٹرنیشنل کانفرنس کا اہتمام کیا جائے گا جس میں امامِ کعبہ، وائس چانسلر جامعۃ الاظہر اور شام کے مفتی خطاب کریں گے۔وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مشائخ اور علما کے ساتھ مسلسل خود رابطے میں رہوں گا، ہم پر امن اسلام کے امیج کو دنیا کے سامنے پیش کرنا چاہتے ہیں۔تحریک انصاف کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ملک گیر مشائخ کانفرنس کے انعقاد کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کی صدارت چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کریں گے۔ اعجاز چوہدری کا کہنا ہےکہ مشائخ کانفرنس جناح کنونشن سینٹر اسلام آباد میں ہوگی جس کی تاریخ اور وقت کا اعلان جلد کیا جائے گا۔یاد رہے کہ یاد رہے کہ توہین رسالت

کے جرم میں ماتحت عدالتوں سے سزائے موت پانے والی آسیہ بی بی کی سزا کو کالعدم قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ نے 31 اکتوبر کو خاتون کی رہائی کے احکامات جاری کیے تھے جس کے بعد مذہبی جماعتوں کی جانب سے ملک بھر میں احتجاج کیا گیا تھا۔احتجاج کے دوران کئی شہریوں میں مظاہرین نے توڑ پھوڑ کی اور شہریوں کی املاک کو نقصان پہنچاتے ہوئے کئی گاڑیوں کو بھی آگ لگادی تھی۔حکومت اور تحریک لبیک پاکستان کے درمیان 5 نکاتی معاہدہ ہوا تھا جس کے بعد ملک بھر میں دھرنے ختم کردیئے گئے تھے۔

حکومت کا مظاہرین سے مذاکرات کا آپشن استعمال کرنے کا فیصلہ


لاہور (نیوزڈیسک) وفاقی حکومت نے احتجاجی مظاہرین سے مذاکرات کا آپشن استعمال کرنے کا فیصلہ کرلیا، احتجاجی مظاہرین سے پہلے مرحلے میں مذاکرات کیے جائیں گے، حکومت نے مذاکرات کیلئے 2رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ہے،کمیٹی کے ارکان احتجاجی مظاہرین سے مذاکرات کیلئے لاہور روانہ ہوگئے ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم

عمران خان نے توہین رسالت ﷺکیس میں آسیہ بی بی کی رہائی کے بعدملک بھر میں اٹھنے والی شدید احتجاج کی لہر کے پیش نظر قوم سے خطاب کیا اور دوٹوک الفاظ میں کہا کہ ریاست کی رٹ کو ہرحال میں یقینی بنایا جائے گا۔ احتجاجی مظاہرین کے سامنے گھٹنے نہیں ٹیکے جائیں گے ، کسی بھی جگہ پر نہ کاروبار بند ہوگا اور نہ ہی سڑکیں بلاک کرنے کی اجازت دی جائے گی۔ اگر ایسا کیا گیا تو سختی سے نمٹا جائے گا۔تاہم آج حکومت نے براہ راست آپریشن کی بجائے احتجاجی مظاہرین سے مذاکرات کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی ہے کمیٹی میں دورکنی جن میں پیر نورالحق اور محبوب سلطان شامل ہیں۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب کے دوران کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پرجوزبان استعمال ہوئی اس پر آپ سے بات کرنے پرمجبورہوں۔ جوججزنے فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق دیا ہے۔ ہم نے پہلی بار او آئی سی میں معاملہ اٹھایا اور یو این میں معاملہ اٹھایا۔ کسی کاایمان اس وقت تک مکمل نہیں ہوتاجب تک نبی کریم ﷺسےعشق نہیں کرتا۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ والہٰ وسلم کی شان میں گستاخی آزادی رائے نہیں۔ ہم نبی کریم ﷺکی شان میں

کسی قسم کی گستاخی نہیں دیکھ سکتے۔ تاہم آسیہ بی بی کیس پر ججز نے آئین و قانون کے مطابق فیصلہ دیا ہے۔ پاکستان کا آئین و قانون قرآن کے تابع ہیں۔ سپریم کورٹ کے فیصلے پرچھوٹے سے طبقے نے ردعمل دیا ہے۔ مدینہ کی ریاست کے بعد پاکستان واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا۔ اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں کوئی قانون اسلام کے منافی نہیں ہوسکتا۔ بعض لوگ فوج اور جرنیلوں کوکہہ رہے ہیں کہ آرمی چیف کیخلاف بغاوت کریں۔ فیصلے کے بعد بعض لوگ کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ کےججرواجب القتل ہیں۔ جوزبان استعمال کی گئی کون سی حکومت چل سکتی ہے۔ اس معاملے میں حکومت کا کیا قصورہے۔ سپریم کورٹ کے ججوں نے جو فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق ہے۔ یہ لوگ کوئی اسلام کی خدمت نہیں کررہے،یہ ملک دشمن عناصراس قسم کی باتیں کرتے ہیں۔
اپنی سیاست اور ووٹ بینک کے چکر میں ملک کے خلاف کام نہ کریں۔ ملک دشمن عناصرایسی باتیں کرتے ہیں کہ ججوں کوقتل کردوفوج میں بغاوت ہوجائے۔ ریاست کومجبور نہ کریں کہ وہ ایکشن لینے پر مجبور ہو جائے، ریاست لوگوں کی جان ومال کی حفاظت کرے گی، ہم کوئی توڑ پھوڑ نہیں ہونے دیں گے، امن و امان کی صورتحال کسی صورت خراب نہیں ہونے دیں گے۔

حکومت اور اپوزیشن نیب قانون میں تبدیلی کیلئے تیار ہوگئے


اسلام آباد (نیوزڈیسک) حکومت اور اپوزیشن نیب قانون میں تبدیلی کیلئے تیار ہوگئے، اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے قومی احتساب بیورو کے قانون میں تبدیلی کے حوالے سے اپوزیشن اور حکومت کے درمیان اتفاق طے پا جانے کی تصدیق کردی۔ تفصیلات کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ احتساب بلا تفریق اور قانون کے مطابق ہونا

چاہیے، کسی کے خلاف انتقامی کاروائی نہ ہو۔ شہباز شریف کی گرفتاری سے حکومت کا کوئی تعلق نہیں نیب خود مختار ادارہ اور کام کرنے میں آزاد ہے۔ عہدہ بڑا نہیں ہوتا مخلوق کیلئے کام کرنا بڑا ہوتا ہے مسائل پر قومی اسمبلی میں کھل کر بحث ہونی چاہیے۔ حکومت یا اپوزیشن کو پیار و محبت سے چلانا چاہتا ہوں، اس مقصد کیلئے وزیراعظم عمران خان کی پوری ضمانت حاصل ہے۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر مزید کہتے ہیں کہ نیب ایک آزاد ادارہ ہے وہ قانون کے مطابق فیصلے کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیب کسی کو گرفتار کرتا ہے تو میں مداخلت نہیں کرسکتا۔ احتساب بلا تفریق سب کا ہونا چاہیے کسی کے خلاف انتقامی کاروائی نہیں ہونی چاہیے۔ جب اسمبلی کے اندر اگر کسی کو گرفتار کیا جاتا ہے تو سپیکر سے اجازت لی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ نیب قوانین میں تبدیلی کیلئے وزارت قانون نے کام کیا ہے اور تمام سیاسی جماعتیں نیب قوانین پر اسمبلی میں بحث کیلئے متفق ہیں۔ اسد قیصر کہتے ہیں کہ پارلیمنٹ میں نعرے نہیں سنجیدہ بات ہونی چاہیے۔ ہم چاہتے ہیں کہ معیشت پر ایک مکمل بحث ہو۔ اچھی بات یہ ہے کہ وزیر اعظم اور اسد عمر بھی چاہتے ہیں کہ ہمارے

مسائل خارجہ پالیسی ، پانی اور دیگر امور پر پارلیمنٹ کے اندر سیر حاصل بحث ہو۔ ہمیں گورننس ، ڈیلیوری اور پر فارمنس پر توجہ دینی ہے۔ ہم نے اسمبلی بھی چلانی ہے اور حکومت بھی چلانی ہے۔ عزت اور ذلت خدا کے ہاتھ میں ہے۔

عالمی بنک پاکستان میں نئی حکومت کے اصلاحاتی پروگرام میں تعاون کیلئے تیار ہے،


اسلام آباد ۔ (نیوزڈیسک) عالمی بینک نے کہا ہے کہ وہ پاکستان میں نئی حکومت کے اصلاحاتی پروگرام میں تعاون کیلئے تیار ہے، یہ اصلاحاتی پروگرام ملک سے غربت کے خاتمہ اور خوشحالی کے فروغ کے سلسلہ میں معاشی استحکام اور تیز نمو کیلئے ضروری ہے۔ عالمی بینک کے نئے نائب صدر برائے جنوبی ایشیاء ہارسٹوگ شیفر نے حکومتی

نمائندوں سے ملاقات میں اس عزم کا اظہار کیا۔ انہوں نے پاکستان کی ترقیاتی ترجیحات اور اصلاحاتی ایجنڈے کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اپنے دورہ میں کروڑوں پاکستانی عوام بالخصوص نوجوانوں کی ضروریات کو سمجھنے کا موقع ملا کہ کس طرح صحت، غذائیت، تعلیم،، ہنر اور ڈیجیٹل اکانومی کے شعبوں میں سرمایہ کاری میں معاونت فراہم کی جا سکتی ہے۔ اپنے 2 روزہ دورہ اسلام آباد کے دوران انہوں نے وزیر خزانہ، وزیر خارجہ اور مشیر برائے تجارت، ٹیکسٹائل، صنعت و پیداوار سے ملاقاتیں کیں۔ عالمی بینک کے نائب صدر نے کہا کہ وہ پاکستان کی نئی حکومت کی جانب سے انسانی ترقی، روزگار، کاروبار میں آسانی، بہتر علاقائی رابطہ کاری، انفراسٹرکچر کی ترقی اور پانی و ماحولیات کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے پروگرام سے متاثر ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو اصلاحاتی ایجنڈے کے نفاذ میں معاونت فراہم کرنے کیلئے تیار ہیں۔

حکومت نےاہم فیصلوں پرقواعدوضوابط کوپس پشت ڈال دیا


لاہور(نیوزڈیسک) وفاقی حکومت نے اہم فیصلوں پرقواعدوضوابط کوپس پشت ڈال دیا،وزارتیں اور کابینہ ڈویژنز کابینہ اجلاسوں کیلئےعجلت میں سمریاں تیارکرنے لگے،عجلت کے باعث سمریوں میں متعلقہ ڈویژنزکی رائے بھی نہیں لی گئی، ہفتے کی چھٹی منسوخ کرنے کی سمری اسی خلاف ورزی کے باعث نامنظورہوگئی۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ

ہفتے دونوں کابینہ اجلاسوں میں رولزآف بزنس کے اہم نکات نظراندازکردیے گئے۔ رولز آف بزنس کے مطابق کابینہ میں سمریاں بھجوانے سے ایک ہفتہ پہلے کابینہ ڈویژن کوپیش کرنا ضروری ہیں۔ کابینہ اجلاسوں میں پیش کی گئی سمریاں کابینہ ڈویژن کونہیں بھجوائی گئیں۔ کابینہ میں سمریاں پیش کرنے سے قبل متعلقہ ڈویژنزکی رائے بھی نہیں لی گئی۔ سمریوں پرمتعلقہ ڈویژنزکی منفی یا مثبت رائے آنی ضروری ہے۔ ہفتہ وار دوچھٹیاں ختم کرنے کی سمری میں داخلہ اور پاورڈویژن کی رائے بھی نہیں لی گئی۔ دوچھٹیاں ختم کرنے کی سمری وزیراعظم کی منظوری سے کابینہ میں پیش کرنے کا ذکرنہیں تھا۔ حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ اجلاسوں کیلئے وزارتیں اور ڈویژنزعجلت میں سمریاں تیارکررہے ہیں۔ عجلت کے باعث سمریوں میں متعلقہ ڈویژنزکی رائے نہیں لے پارہے۔ ہفتےکی چھٹی منسوخ کرنے کی سمری اسی خلاف ورزی کےباعث نامنظورہوئی ہے۔ واضح رہے نئی وفاقی حکومت نے کابینہ کے اجلاس بلائے۔ بیس اگست کے وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ گستاخانہ خاکوں کی کابینہ نے سخت مذمت کی ہے۔ کابینہ نے فیصلہ کیا کہ

ہالینڈ کے سفیر کوطلب کرکے احتجاج کیا جائے گا۔حکومت عوام کے جذبات کو سمجھ سکتی ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے تین مہینے غیرملکی دورے نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تمام سیکرٹریوں اور سفیروں کوبھی بیرون ملک دوروں کومحدود کرنے کا حکم دیا ہے۔ خود بھی تین مہینے تک غیرملکی دورے پرنہیں جائیں گے۔ وزیراعظم نے کہا کہ سرکاری خرچے

پرکوئی بھی باہر نہیں جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے اجلاس میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی پاکستان کی نمائندگی کریں گے۔ فواد چودھری نے کہا کہ احتساب کا عمل ہم نے خود سے شروع کیا، ہمارا کرپشن کیخلاف عزم کسی شک سے بالا ہے۔ تمام اثاثے عوام کے سامنے رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حسن ،،حسین نواز اور اسحاق ڈار قومی مجرم ہیں ۔ان کوواپس لایا جائیں گے۔ تاکہ سب قانون کے سامنے پیش ہوں اور مقدمات کا سامنا کریں۔ جبکہ نوازشریف ،،مریم نواز اور کیپٹن ر صفدر کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایون فیلڈ پراپرٹیز پاکستان کی ملکیت ہے ان پراپرٹیز کوواپس لانے کیلئے برطانوی عدالت سے رجوع کریں گے۔ مہنگی گاڑیاں نیلام کردیں گے۔ جن میں 88 گاڑیاں نیلام کر دی جائیں گی۔ وزیراعظم ہاؤس کے اخراجات کم کریں گے لیکن ملازمین کونوکری سے فارغ نہیں کیا جائے گا۔سرکاری اور تاریخی عمارتوں کا جائزہ لینے کیلئے کمیٹی بنا دی ہے۔ ان میں ڈی سی اور کمشنرز کی رہائشیں بھی شامل ہیں۔ سرکاری خرچ پرکسی وزیر کا بیرون ملک علاج نہیں ہوگا۔

سوچ رہےہیں حکومت مہنگے نجی اسکولوں کوٹیک اوورکرلے


اسلام آباد(نیوزڈیسک) : سپریم کورٹ آف پاکستان نے نجی اسکولوں کو گرمیوں کی فیس وصول کرنے سے روک دیا ہے۔ چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس میاں ثاقب نثار نے حکم دیا کہ بچوں کے والدین کیلئے پبلک نوٹس جاری کیا جائے،سوچ رہےہیں حکومت کوکہیں مہنگے نجی اسکولوں کوٹیک اوور کرلے،16سال تک مفت تعلیم دینا آرٹیکل 25 اے میں یہ ریاست

کی ذمہ داری ہے،نجی اسکولوں میں غریب کا بچہ نہیں پڑھ سکتا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے نجی اسکولوں میں زیادہ فیسوں سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پرسپریم کورٹ نے نجی اسکولوں کو گرمیوں کی فیس وصول کرنے سے روک دیا۔ جبکہ سپریم کورٹ نے بچوں کے والدین کیلئے پبلک نوٹس جاری کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے اٹارنی جنرل کو بھی طلب کیا۔ نجی اسکولوں کے مالکان کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے دلائل دیے کہ میں1500 سے3000 روپے ماہانہ فیس وصول کرنیوالوں کی نمائندگی کررہا ہوں۔ اگر دو ماہ کی فیس نہ لیں تو ہمیں اپنے اسکولوں کو بند کرنا پڑے۔ جس پرچیف جسٹس سپریم کورٹ میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیے کہ سوچ رہے ہیں کہ حکومت سے کہیں تمام مہنگے نجی اسکولوں کو نیشنلائز کرلے۔ انہوں نے کہا کہ جتنی فیس نجی اسکول لیتےہیں غریب کابچہ وہاں نہیں پڑھ سکتا۔ یہ معاملہ 184/3 کا ہے۔ حکومتوں کی نااہلی ہے جنہوں نے تعلیم کو ترجیح نہیں دی۔ چیف جسٹس سپریم کورٹ میاں ثاقب نثار نے کہا کہ کیا ہم خود نجی اسکولوں کی فیسوں کا

تعین کردیں؟ انہوں نے کہا کہ نجی اسکولوں میں سرکاری اسکولوں سے زیادہ بچے پڑھ رہے ہیں۔ تعلیم دینا آرٹیکل 25 اے میں یہ ریاست کی ذمہ داری ہے۔ 16سال تک مفت تعلیم دینا ریاست کی ذمہ داری ہے۔ ریاست پیسے دیکرعام آدمی کے بچوں کوپڑھائے یاا ن اسکولوں کو ٹیک اوور کریں۔ چیف جسٹس سپریم کورٹ میاں ثاقب نثار نے مزید ریمارکس میں کہا کہ دانش

اسکول پنجاب میں بنے تھے وہ بھی گئے۔ اگر میں اچھے اسکولوں میں پڑھا نہ ہوتا تو آج کلرک ہوتا۔ انہوں کا کہنا تھا کہ تعلیم قوم کی ترقی کی بنیاد ہے۔ گرمیوں کی فیس والد کتاب میں ڈال کردیتے تو ہم خود جمع کرواتے تھے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ والدین کو سنے بغیر آپ کو ریلیف نہیں دے سکتے۔ پہلی مرتبہ گرمیوں کی فیس ادا نہ کرنے والے والدین کو خوشی ہوئی ہوگی۔ والدین نے یہ فیس بچوں کی تفریح پر لگائی ہوگی۔ ہم اس معاملے پر پبلک نوٹس جاری کرنے جارہے ہیں۔ انہوں نے وکیل شاہد حامد سے مخاطب ہوتے ہوئے پوچھا کہ شاہد حامد صاحب آپ کو پتا ہے گریڈ 18 کے افسر کی تنخواہ کتنی ہوگی؟

حکومت کی کارکردگی عوام کےسامنے آ گئی ، اربوں روپے لگا کر پل بنایا اور منٹوں میں گر گیا۔ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ


میامی (ویب ڈیسک) امریکی شہر میامی میں پیدل سڑک پار کرنے کے لیے نصب کیا گیا زیر تعمیر پل گر گیا، واقعے میں ہلاکتوں کی تعداد چار ہوگئی، دس افراد شدید زخمی ہیں۔امریکی ریاست فلوریڈا کےشہر میامی میں پل گر گیا، 950 ٹن وزنی پل کو گذشتہ ہفتے ہی نصب کیا گیا تھا، پل گرنے سے آٹھ گاڑیاں نیچے دب گئیں، جائے وقوعہ پر امدادی کام جاری ہے۔صدر

ڈونلڈ ٹرمپ کو واقعے کے بارے میں بتایا گیا، پل بنانے والی تعمیراتی کمپنی کا کہنا ہے کہ مکمل تحقیقات کر رہے ہیں کہ غلطی کہاں ہوئی ہے۔ میامی میں فلوریڈا انٹرنیشنل یونیورسٹی پر نصب پل کا مقصدد یونیورسٹی کو ہاسٹل سے ملانا تھا۔

1500 اور 100روپے رکھنے والے افراد تیاری کر لیں ، حکومت نے اعلان کردیا


لاہور(نیو زڈیسک )100اور1500روپے مالیت کے قومی انعامی بانڈز کی قرعہ اندازی 15فروری کو ہو گی ۔ 100روپے مالیت کے سٹوڈنٹس بانڈ کا پہلا انعام 7لاکھ روپے کا ایک، دوسرے انعام میں2لاکھ روپے کے 3جبکہ تیسرے انعام میں1ہزار روپے کے 1199انعامات ہوں گے۔1500روپے مالیت کا پہلا انعام30لاکھ روپے کا ایک، دوسرے انعام میں10لاکھ

روپے کے 3جبکہ تیسرے انعام میں18500روپے کے 1696انعامات کامیاب خوش نصیبوں میں تقسیم ہوں گے۔