شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

اسلام آباد سے گاڑی سے نامور صحافی کی نعش برآمد۔۔۔!! پورے شہر میں ہلچل مچ گئی


راولپنڈی (نیوز ڈیسک ) راولپنڈی کے ہولی فیملی اسپتال کی پارکنگ میں کھڑی گاڑی سے لاش برآمد ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق راولپنڈی کےہولی استپال کی پارکنگ میں کھڑی گاڑی سے لاش برآمد ہوئی ہے۔ذرائع کے مطابق گاڑی چار روز سے پارکنگ میں کھڑی تھی لیکن کسی نے دھیان نہ دیا۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ لاش دو تین پرانی ہے جس کا بدبو

پھیلنے سے پتہ چلا۔پولیس بھی فوری طور پر موقع پر پہنچ گئی، فرانزک ٹیم کو بھی طلب کر لیا گیا ہے جو اس بات کی نشاندہی کریں گے کہ آیا مرنے والے شخص کے جسم پر کوئی نشانات تو موجود نہیں ہیں،دیگر شواہد کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ اس حوالے سے پولیس کا موقف ہے کہ لگتا ہے نامعلوم شخص حرکت قلب بند ہونے سے جاں بحق ہوا ہے۔یہ واقعہ تھانہ نیوٹاؤن کی حدود میں پیش آیا۔میڈیا رپورٹس میں اس حوالےسے مزید بتایا گیا ہے گاڑی سے برآمد ہونے والی لاش ایک سینئیر صحافی کی ہے۔کار کے اوپر بھی جرنلسٹ کی نمبر پلیٹ لگی ہوئی ہے تاہم پولیس نے ابھی تک لاش کی شناخت کی تصدیق نہیں کی۔دوسری جانب گھوٹکی کے قریب بیلو میرپور تھانے کی حدود میں افسوسناک حادثہ پیش آیاکہ ڈرائیور کو نیند آ جانے کی وجہ سے بس کو حادثہ پیش آ گیا جس کے نتیجے میں 3خواتین جاں بحق جبکہ 10افراد شدید زخمی ہو گئے ہیں۔حادثے کی اطلاعات ملتے ہی موٹروے پولیس اور ریسکیو کی ٹیمیں موقعہ پر پہنچ گئیں اور حادثے کا شکار ہونے والے افراد کو ریسکیو کیا گیا۔موٹروے پولیس ترجمان کے مطابق حادثہ تیز رفتاری اور ڈرائیور کو نیند آنے کے سبب پیش

آیا۔ڈرائیور کو نیند آ رہی تھی اور گاڑی کی رفتار بھی تیز تھی جس وجہ سے افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے۔جائے حادثہ پر امدادی کارروائی ابھی بھی جاری ہے اور زخمیوں کو ابتدائی طبی امداد دی جا رہی ہے۔حادثے کے بعد بس میں آگ بھڑک اٹھی جس وجہ سے اور بھی زیادہ نقصان ہوا ہے اور ریسکیو ٹیموں نے علاقائی لوگوں کی مدد سے بس کو لگی آگ پر قابو پا لیا ہے۔اطلاعات کے مطابق بس بنوں سے کراچی جا رہی تھی جوکہ گھوٹکی میں حادثے کا شکار ہوئی ہے۔زخمیوں کو قریبی اسپتال میں پہنچا دیا گیا ہے جبکہ کئی افراد کو موقعہ پر ہی ابتدائی طبی امداد دی گئی ہے۔آئینی شاہدین کا کہنا ہے کہ بس بہت تیز تھی اور ڈرائیو نیند میں تھا تو اس سے بس کنٹرول نہیں ہو سکی جس کی وجہ سے بس الٹ گئی اور حادثہ وقوع پذیر ہو گیا۔مقامی افراد نے موٹروے پولیس نے اطلاع دی جس نے موقعہ پر پہنچ کر حادثے کا شکار خواتین و حضرات کو ریسکیو کیا۔تیز رفتاری کی وجہ سے آئے روز اس قسم کے حادثات پیش آتے رہتے ہیں اور خاص طور پر جن کمپنیوں کے پاس ڈرائیو کم ہوتے ہیں تو وہ اپنے ڈرائیور کو ایک کے بعد ایک سفر پر روانہ کر دیتے ہیں اور ان ڈرائیورز کی نیند پوری

نہ ہونے کی وجہ سے اس قسم کے حادثات پیش آتے ہیں۔حکومت کی طرف سے سبھی کمپنیوں کو اس بات کا پابند کیا جانا چاہیے کہ جس ڈرائیور نے گاڑی چلانی ہے اس کی بھرپور نیند ہونی چاہیے تاکہ اس قسم کے حادثے سے بچا جا سکے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس