شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

امریکہ نے روس کے خلاف جنگ میں جہادیوں کو ہیروبنایا لیکن بعد میں یہی لوگ بُرے بن گئے


واشنگٹن/لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کرکٹ سے میں نے سیکھا کے کامیابی کے لیے کیسے جدوجہد کی جاتی ہے، چین ، سعودی عرب اور یو اے ای نے معاشی حالات بہتر کرنے میں مدد کی، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کی وجہ سے آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا،نائن الیون کے بعد امریکہ کو پاکستان کی ضرورت پڑ گئی، پہلے جہادیوں

کو روس کےخلاف جنگ لڑنے پر ہیرو بنایا گیا اور بعد میں یہی لوگ بُرے ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کا کونسل فار فارن ریلیشنز سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہکرکٹ سے میں نے سیکھا کے کامیابی کے لیے کیسے جدوجہد کی جاتی ہے ، کھیلوں سے آپ اپنے ہدف کو پانے کی جدوجہد کرنا سیکھتے ہیں،22 سال کی جدوجہد کے بعد اس مقام پر پہنچا ہوں ۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ گزشتہ حکومتیں معیشت کی سمت درست کرنے میں ناکام رہیں، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کی وجہ سے آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا، چین ، سعودی عرب اور یو اے ای نے معاشی حالات بہتر کرنے میں مدد کی، چین نے ڈیفالٹ سے بچنے کے لیے پاکستان کی مدد کی ،گھرکوچلانے کے لیے بھی اخراجات کم اورآمدن بڑھانا ہوتی ہے۔ عمران خان نے واضح کیا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں 70 ہزار لوگوں نے جانیں قربان کیں، 2008 میں امریکا آیاتو ڈیموکریٹس کو بتایا تھا کہ افغان مسئلے کا فوجی حل نہیں ،عمنائن الیون کے بعد پاکستان نے امریکا کی جنگ میں شامل ہوکر بہت بڑی غلطی کی، ڈیورنڈ لائن برٹش حکام نے بنائی تھی ،اب ہم پاک افغان سرحد پر باڑ لگا رہے ہیں،پاکستان میں 27لاکھ

افغان پناہ گزین رہ رہے ہیں، سوویت فوج نےافغانستان میں جنگ کے دوران 10لاکھ شہریوں کو ہلاک کیا، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 200 ملین ڈالرز کا نقصان ہوا، پاکستان کا امریکی جگا کا حصہ بننا تاریخی غلطی تھی، نائن لایون کے بعد امریکہ کو پاکستان کی ضرورت پڑی، روس کے خلاف جنگ میں جہادیوں کو ہیرو بنایا گیا، پاکستانی آرمی اور آئی ایس آئی نے القاعدہ کو ٹرین کیا، پہلے یہ لوگ امریکہ کے لیے اچھے اور نائن الیون کے بعد برے کیسے ہوگئے





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس