شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

بریکنگ نیوز: کشمیر کے مسئلہ پر پاکستا ن کو پہلی بار بڑی ناکامی کا سامنا


جنیوا (ویب ڈیسک) پاکستان جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں کشمیر سے متعلق قرارداد کے لئے درخواست درج کرنے میں ناکام ہو گیا ہے۔ 19 ستمبر کو کونسل کے پاس آنے کے لئے کسی مسودے کی تجویز داخل کرنے کی آخری تاریخ تھی۔ جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کا 42واں اجلاس جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستان اس

کونسل میں داخلے کے لئے مطلوبہ کم سے کم ارکاین کی حمایت بھی حاصل نہیں کرسکا۔قانون کے مطابق کسی ایسے ملک سے متعلق قرارداد کے تجویز کرنے والے کے خلاف کارروائی سے قبل اپنے اقدامات (ترجیحا 15 ممبروں) کے لئے وسیع تر ممکنہ حمایت حاصل کرنے کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے جنیوا سے اسلام آباد جانے سے پہلے ہی کشمیر سے متعلق ایک قرارداد کا پیش کی تھی تاہم پاکستان قرارداد داخل نہیں کروائی جا سکی کیونکہ پاکستان مطلوبہ کم سے کم حمایت حاصل کرنے میں ناکام رہا جس کے بعد قرارداد کو اپنانے کے لئے موجود ممبروں کی کونسل میں رائے دہندگی اور رائے دہندگی کی ضرورت ہوگی۔خیال رہے کہ 47 ممبروں کے مکمل ایوان میں سادہ اکثریت 24 ہے اگر کوئی غیر حاضر نہ ہو۔ تنظیم اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے 15 اراکین کے طور پر یو این ایچ آر سی کے مکمل ممبروں کی حیثیت سے، پاکستان کو کچھ امید تھی کہ پاکستان قرارداد پیش کرنے میں ناکام رہا۔ مسئلہ کشمیر پر مشترکہ بیان سنبھالنے کے بعد بھی پاکستان ووٹوں کا انتظام نہیں کرسکا۔پاکستان نے دس ستمبر کو جموں و کشمیر

کی صورتحال پر مشترکہ بیان بھی یو این ایچ آر سی کو پیش کیا تھا جس میں یہ دعویٰ کیا گیا تھا کہ اس دستاویز کو تقریبا 60،60 ممالک کی حمایت حاصل ہے۔ لیکن اب پاکستان اس کی حمایت کرنے والے ممالک کی فہرست کو عام کرنے میں بھی ناکام رہا۔ جنیوا میں 47 رکنی یو این ایچ آر سی میں پاکستان کے پاس تین آپشنز تھے، ایک قرارداد ، دوسرا فوری بحث اور تیسرا خصوصی سیشن۔ لیکن اب کوئی امید نظر نہیں آرہی۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس