شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

”میاں نواز شریف اور آصف زرداری کو ایٹم بم باندھ کر انہیں انڈیا کے بارڈر پر چھوڑ دیا جائے“


اسلام آباد(نیوزڈیسک) معروف اینکر عارف حمید بھٹی اپنے دلچسپ اور بے باک تجزیوں کی بناء پر خصوصی شہرت رکھتے ہیں۔ وہ کوئی لگی لپٹی رکھے بغیر سیاسی معاملات پر اپنی رائے کا کھُل کر اظہار کرتے ہیں۔ گزشتہ روز بھی انہوں نے ایک نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں ایک صحافی کے بیان کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ کون لوگ ہیں جو کہتے

ہیں کہ میاں صاحب اندر ہوں۔ میاں صاحب باہرہوں۔ اس صحافی ملک جیسے فلاسفروں نے اس مُلک کو ممی ڈیڈی ایلیٹ کلاس کی جانب دھکیل دیا ہے۔ وہ کہہ رہے ہیں کیا بُرائی ہے اس کو چھوڑ دو۔ حالانکہ یہ میاں صاحب اور زرداری صاحب وہ لوگ ہیں جن کی وجہ سے ہم اس خراب حالت کو پہنچے ہیں، ستر سالوں سے انہوں نے گِدھوں کی طرح اس مُلک کو لُوٹا ہے۔ آج ہم امریکا کی بتا رہے ہیں، سعودی عرب کی بتا رہے ہیں، ایکسپورٹ کیا ہے۔ اور یہ کہہ رہے ہیں ان کو چھوڑ دو۔ کل کو کہو گے کشمیر کو چھوڑ دو۔ پھر کہو گے کہ جو پاکستان کا کشمیر ہے، ادھر انڈیا آ رہا ہے، اس کو بھی چھوڑ دو۔ پھر اگر بھارتی فوج لاہور داخل ہو جائے تو اسکو بھی چھوڑ دو۔ تو اس سے پہلے خود کُشی نہ کر لیں۔ اگر ہم اپنے مسلمان بھائیوں کے لیے کچھ نہیں کر سکتے۔ ہو سکتا ہے ملک صاحب کی بات میں یہ لاجک ہو کہ اس وقت ہم حالتِ جنگ میں ہیں۔ تو پھر ایسا کرتے ہیں میاں صاحب اور زرداری کو انڈیا کے بارڈر پر چھوڑ دیتے ہیں ۔ ساتھ میں ان کے جسم پر ایٹم بم باندھتے ہیں۔ اور پھر میاں صاحب کو اُس طرف دھکا دیتے ہیں کہ جاؤ میاں صاحب ذرا مودی کے گھر جاؤ اور اس کا شکریہ ادا

کر کے آؤ۔ اور پھر یہاں سے ایٹم بم کا بٹن دبا دیتے ہیں۔ یہ مذاق نہیں ہے۔ ہم کیوں چھوڑیں ان کو۔ پاکستانی فوج کے جو آج تین جوان شہید ہوئے ہیں، اُن کی کوئی ماں نہیں تھی۔ وہ ایل او سی پر کیوں شہید ہوئے ہیں؟ آپ جرائم پیشہ لوگوں کو کیوں چھُڑوا رہے ہیں۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس