شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

حافظ سعید رہا نہیں ہوئے بلکہ ۔۔۔۔ ایک اور ناقابل یقین خبر


لاہور (ویب ڈیسک) انسداد دہشت گردی عدالت گوجرانوالہ نے حافظ محمد سعید کیس کی سماعت 2 ستمبر تک ملتوی کردی ہے۔گزشتہ روز جماعۃالدعوۃ کے سربراہ کو گجرات کی اے ٹی سی عدالت میں پیش کیا جانا تھا تاہم جج شبیرحسین کے چھٹی پر ہونے کی وجہ سے انہیں گوجرانوالہ کی عدالت اے ٹی سی 2 میں جج ظفر اقبال کے سامنے پیش کیا گیا۔سی ٹی

ڈی کی طرف سے پیش کردہ چالان میں حافظ سعید پر الزام لگایا گیا ہے کہ 12 سال قبل ملکوال میں7مرلہ کی مسجد معاذ بن جبل وقف کی گئی تھی جس کے وہ ٹرسٹی ہیں،اسی الزام کی بنیاد پران کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔واضح رہے گوجرانوالہ کالعدم جماعت الدعوہ کے امیر حافظ سعید کو ریمانڈ پورا ہونے پر انسداد دہشت گردی عدالت میں نمبر 2 میں پیش کردیا گیا۔ مقدمے کاچالان بھی پیش کردیا گیا۔ چالان میں حافظ سعید کو گنہگار قرار دیا گیا ہے۔ خصوصی عدالت کے جج ظفر اقبال نعیم نے کیس انسداد دہشت گردی عدالت گجرات ریفر کردیا تھا، انسداد دہشت گردی عدالت گجرات کے جج کی رخصت کے باعث حافظ سعید کو ڈیوٹی جج گوجرانوالہ کے روبرو پیش کیا گیا، ڈیوٹی جج نے حافظ سعید کو واپس جیل بھجوا دیا۔ گوجرانوالہ میں حافظ سعید کی پیشی کے موقع پر کارکنوں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ کارکنوں نے حافظ سعید کی گاڑی پر پھول نچھاور کئے، کارکنوں کے کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے، حافظ سعید کارکنوں کے نعروں کا جواب دیتے رہے۔ عدالتی ذرائع کے مطابق حافظ سعید کو دوبارہ 2 ستمبر کو انسداد دہشت گردی گجرات میں

پیش کیا جائے گا۔منڈی بہائو الدین میں کالعدم تنظیم کیلئے چندہ اور اراضی حاصل کرنے کے مقدمے کی اگلی سماعت انسداد دہشت گردی عدالت گجرات میں ہوگی۔ حافظ سعید کے خلاف تھانہ سی ٹی ڈی میں مقدمہ درج ہے۔اور حافظ سعید انسداد دہشتگردی عدالت پیش، ریمانڈ مکمل ہونے پر جیل منتقل کر دیا گیا ہے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس