شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

نواز شریف سے جیل میں سہولیات واپس لینے کا دعویٰ غلط ثابت


لاہور (نیوزڈیسک) پنجاب حکومت نے نوازشریف کو جیل میں دی گئی سہولتوں سے متعلق شہبازشریف کے خط کا جواب دے دیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شہباز شریف نے چیف سیکرٹری کے نام خط میں نواز شریف کو جیل میں فراہم کی گئی سہولیات سے متعلق وضاحت مانگی تھی۔چیف سیکریٹری نے خط محکمہ داخلہ کو ضروری کارروائی کیلئے

بھجوا دیا تھا۔ صوبائی حکومت نے خط میں بتایا ہے کہ نوازشریف کو میڈیکل بورڈ کی سفارش پر ائیرکنڈیشنز اور دیگر سہولیات دی جارہی ہیں۔ان کو جیل میں ہیٹر،ٹی وی، ٹیبل کرسی اور مشقتی کی سہولت بھی دستیاب ہیں۔پنجاب حکومت کے ذرائع کے مطابق خط میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ نواز شریف کی صحت کے حوالے سے ڈاکٹرز اور دیگر طبی سہولتیں بھی فراہم کی جارہی ہیں ہیں۔ ان کو گھر سے کھانا منگوانے اور اہل خانہ سے ملاقات کی بھی اجازت ہے۔ واضح رہے مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد شہبازشریف نے اپنے بھائی اور سابق وزیر اعظم محمدنوازشریف کو جیل میں سہولیات دینے کیلئے نگران حکومت کو خط لکھا تھا۔ایون فیلڈ پراپرٹیز ریفرنس میں سزا پانے والے نوازشریف ان دنوں اڈیالہ جیل میں قید ہیں جہاں انہوں نے اپنے وکلاء سے جیل میں سہولیات کی عدم فراہمی پر شکوہ کیا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے صدر شہبازشریف نے نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک اور نگران وزیراعلیٰ پنجاب حسن عسکری کے نام خط لکھے ہیں جس میں نوازشریف کو سہولیات فراہم کرنے کی درخواست کی گئی ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف 3مرتبہ ملک کے

وزیر اعظم رہ چکے ہیں۔ نواز شریفکو سابق وزیراعظم کے استحقاق کے مطابق سہولیات فراہم کی جائیں اور انہیں طبی معائنے اور ادویات کی فراہمی بھی یقینی بنائی جائے۔ خط میں مزید کہا گیا ہے کہ نوازشریف کو دل کا عارضہ ہے اس لیے ان کے ذاتی معالج کو تواتر کے ساتھ طبی معائنے کی اجازت دی جائے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شہبازشریف کا خط نگران وزیراعظم اور نگران وزیراعلی پنجاب کو پہنچا دیا گیا ہے۔ اس سے قبل نواز شریف کے صاحبزادے حسین نواز نے اپنی ایک ٹوئٹ میں اڈیالہ جیل میں والد کے لئے مختص بیرک اور اس موجود غسل خانے کی صفائی ستھرائی پر اعتراض کیا تھا۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس