شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

عید کے بعد فیڈرل کیبنٹ کے کُچھ ممبران کیخلاف کارروائی ہونے جارہی ہے


لاہور (نیوزڈیسک) : معروف صحافی خاور گھمن کا کہنا ہے کہ پہلے خبر دی تھی کہ آصف علی زرد زرداری صاحب گرفتار ہو جائیں گے، اب بھی خبر دے رہا ہوں کہ عید کے بعد فیڈرل کیبنٹ کے کُچھ ممبران کیخلاف کارروائی ہونے جارہی ہے۔خاور گھمن نے مزید کہا کہ سیاسی منظر ناموں پر پچھلے کچھ سالوں سے جو کیسز چل رہے ہیں۔یہاں پر یہ سوال پیدا ہوتا

ہے کہ احستاب کا یہ عمل حکومتی ارکان کے خلاف بھی چلے گا یا نہیں۔ ایک وقت آئے گا کہ وزیراعظم کے سامنے ایک مدعا پیش کیا جائے گا کہ آپ کے کابینہ کے ارکان کے خلاف کاروائی کرنی ہے۔خاور نے مزید کہا کہ عید کے بعد فیڈرل کیبنٹ کے کُچھ ممبران کیخلاف کارروائی ہونے جارہی ہے۔جب کہ دوسری جانب ایک میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا تھاکہ کارکردگی صفر‘ کرپشن کی شکایات اور اثاثوں میں اضافہ کی خبریں‘ وزیراعظم نے وفاقی کابینہ سے تین مزید وزرا کو باہر نکالنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں کے مطابق وزیراعظم عمران خان کو ایک نہیں دو بار خفیہ رپورٹس مل چکی ہیں جن میں دو وزراء اور ایک معاون خصوصی کی کرپشن اور اثاثوں میں اضافہ سمیت کارکردگی صفر بتائی گئی ہے۔ عمران خان نے چند رفقاء سے مشورہ کرنے کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ معاون خصوصی جو کہ وزیراعظم کے بہت قریبی بھی سمجھے جاتے ہیں انہیں سب سے پہلے کابینہ سے باہر جبکہ دیگر دو وزیروں کو بعد میں نکالا جائے گا، نیب نے بھی خفیہ رپورٹس کی روشنی میں خفیہ تحقیقات شروع کر رکھی ہیں۔ خیال رہے کہ کہ نیب ملتان نے وزیر منصوبہ بندی خسرو

بختیار کے خلاف انکوائری مکمل کر لی ہے جو کہ ہیڈ آفس بھجوا دی گئی ہے۔۔ خسرو بختیار کے خلاف انکوائری آمدن سے زائد اثاثوں کے حوالے سے کی گئیں۔وفاقی وزیر کے اثاثوں میں 2004ء کے بعد سے اچانک اضافہ ہوا۔ 2004ء میں خسرو بختیار کے پاس 5 ہزار 702 کنال زرعی اراضی تھی۔ایم این اے بننے کے بعد خسرو بختیار کے خاندان کے نام 4 شوگر ملز بنائی گئیں۔5پاور جنریشن سیکٹر، 4 کیپیٹل انوسمنٹ کمپنیز بنائی گئیں۔یہ کمپنیاں 2006ء سے 2016ء کے درمیان رجسٹرڈ ہوئیں۔ان کمپنیوں میں بھاری سرمایہ بھی لگایا گیا۔نیب ملتان کو ان پراپرٹیز میں خسرو بختیار کے بے نامی حصہ دار ہونے کا شبہ ہوا ہے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس