شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

اب مولانا فضل الرحٰمن کی گرفتاری کی باری ہے


لاہور ۔ (نیوزڈیسک) گذشتہ روز پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کیا تھا۔جس کے بعد اب جمعیت علما اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کی گرفتاری کا امکان بھی ظاہر کیا جا رہا ہے۔اس حوالے سے سینئیر صحافی سعید قاضی کا کہنا ہے کہ شاہد خاقان عباسی کے بعد رانا افضل اور مولانا فضل الرحمن کی

گرفتاری کا بھی امکان ہے۔ جب کہ سینئیر صحافی طاہر ملک کا بھی یہی کہنا ہے کہ نیب کا مولانا فضل الرحمن کے گرد گھیرا تنگ ہو گیا ہے اور وہ بھی چند دن ایسے ہی گزاریں گے۔مولانا فضل الرحمن نے یہ بھی کہا تھا کہ میں نیب کو کچھ نہیں سمجھتا۔خیال رہے کہ مولانا فضل الرحمن پر چئیرمین کشمیر کمیٹی کی حیثیت سے آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔ چئیرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے مولانا فضل الرحمن کے خلاف انکوائری کی منظوری دے دی تھی۔ ب مولانا فضل الرحمن کے اثاثوں کی چھان بین کرے گا۔گذشتہ کچھ عرصے سے مولانا فضل الرحمن کی گرفتاری اور ان کی نیب طلبی کی خبریں چل رہی تھیں۔ جس کے بعدجمعیت علما اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ میں نیب کے ریفرنسوں کی دھجیاں بکھیر دوں گا۔ مولانا فضل الرحمن سے سوال کیا گیا کہ سنا ہے آپ کو بھی نیب نے طلب کیا ہے؟ جس پر مولانا فضل الرحمن نے جواب دیا کہ مجھے نیب نے طلب نہیں کیا۔ اور اللہ کا فضل ہے کہ مجھے کوئی طلب بھی نہیں کر سکتا۔مولانا فضل الرحمن نے مزید کہا کہ بے شک یہ ہزاروں ریفرنس کریں مجھے نہیں پرواہ۔میں وہ آدمی نہیں ہوں جو

اس قسم کے ریفرنس کے سامنے جھک جاؤں گا۔میں اس طرح کے ریفرنس کی دھجیاں بکھیر دوں گا۔اس ملک میں کوئی شرافت کی سیاست کرے تو اس کو سیاست نہیں کرنے دی جاتی۔یہ انصاف کے قتل کرنے والے ہیں میں ان کو انصاف کے ادارے تسلیم نہیں کرتا۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس