شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

ایتھوپیا کے آرمی چیف کو گولی مار کے ہلاک کر دیا گیا


ادیس ابابا (نیوزڈیسک) ایتھوپیا کے وزیراعظم آبی احمد نے کہا ہے کہ ملک کی شمالی ریاست میں مقامی حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش ناکام بنانے کے دوران ملکی فوج کے سربراہ گولی لگنے سے ہلاکہو گئے ہیں۔ گزشتہ روز سرکاری ٹی وی پر قوم سے خطاب میں وزیراعظم نے بتایا کہ جنرل سیارے میکننن تختہ الٹنے کی کوشش ناکام بنانے کے دوران

گولیوں کا نشانہ بنایا گیا۔ آبی احمد نے بتایا کہ فوجی سربراہ کو گولی مارنے والا ان کا ایک محافظ تھا۔ واضح رہے کہ گزشتہ برس برسراقتدار آنے والے آبی احمد ملک میں سیاسی اصلاحات کا عمل جاری رکھے ہوئے ہیں۔ ایتھوپیا میں موجود امریکی سفارت خانے نے تصدیق کی ہے کہ ایتھوپیا میں فائرنگ ہوئی ہے اور حالات کشیدہ ہیں۔ امریکہ نے ایتھوپیا میں موجود اپنے شہریوں کو احتیاط برتنے کو کہا ہے۔ امریکی سفارتخانے کے مطابق اس وقت ایتھوپیا میں انٹرنیٹ سروس بند ہے جس کی وجہ سے خبروں کی رسائی مشکل ہو گئی ہے۔ اس سے پہلے خبر آئی تھی کہ ایتھوپیا کے آرمی چیف کو گولی مار دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق افریقی ملک ایتھوپیا کی 9ریاستوں میں بغاوت کی کوشش کی گئی جس کو روکنے کے دوران ملک کے چیف آف آرمی سٹاف کو گولی لگ گئی۔ پہلے بتایا گیا تھا کہ ایتھوپیا کے چیف آف آرمی سٹاف کو گولی مارے جانے کے بعد ان کے بارے میں کوئی اطلاعات موصول نہیں ہو سکیں لیکن اب انکی موت کی تصدیق کر دی گئی ہے۔ اس وقت ملک بھر میں انٹرنیٹ سروس بند ہے جس کی وجہ سے خبروں کا حصول بھی ناممکن ہو گیا ہے۔ واضح رہے کہ اس

وقت ایتھوپیا میں شیل ورک زوید صدر جبکہ ابے احمد علی وزیراعظم ہیں۔ وزیراعظم ابے احمد علی نے بتایا ہے کہ ملک میں بغاوت کی کوشش کی گئی جس پر چیف آ ف آرمی سٹاف سمیت کچھ افسران حملے میں مارے گئے ہیں۔ایتھوپیا افریقہ کا ایک ملک ہے جس کی 66فیصدآبادی عیسائی اور 33فیصد آبادی مسلمان ہے۔ اس وقت ملک کا صدر کرسچن جبکہ وزیراعظم اور نائب وزیراعظم مسلمان ہے اور چیف آف آرمی سٹاف عیسائی تھا جسے گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس