شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

گریڈ 16 کا ملازم کروڑ پتی کیسے بن گیا ؟ چونکا دینے والی خبر


لاہور(ویب ڈیسک) قومی احتساب بیورو (نیب)، لاہور کی گریڈ 16کے سابق سرکاری آفیسر کے خلا ف مبینہ اطلاع پرایک کارروائی کی گئی ہے جس میں ملزم کی جانب سے مبینہ طور پر چھپائے گئے کم و بیش 33کروڑ روپے برآمد کئے گئے ہیں۔ نیب لاہور حکام کی یہ کارروائی EMEسوسائٹی میں واقع ایک گھر پر ریڈ کی صورت میں کی گئی جبکہ نیب حکام

کی جانب سے ملزم کی شناخت فی الوقت صیغہ ر از میں رکھی گئی ہے تاکہ ملزم کے خلاف مزید شواہد کے حصول میں دشواری کا سامنا نہ ہو۔ ریڈ کے دوران برآمد شدہ کرنسی کی تفصیل کے مطابق 10کروڑ روپے پاکستانی کرنسی کی صورت میں ہیں جبکہ 17کروڑ کے مختلف پرائز بانڈ بھی شامل ہیں۔برآمد کی گئی رقم میں کم و بیش 3کروڑ مالیت پر مشتمل 11مختلف ممالک کی کرنسی بھی قبضے میں لے لی گئی ہے۔ملزم کی جانب سے یہ رقم گھر کے مختلف حصوں میں چھپائی گئی تھی تاہم ملزم کی ملکیت میں مبینہ طور پر کثیر جائیدادوں کی موجودگی کے شواہد بھی حاصل ہو رہے ہیں جن پر تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے۔ ڈی جی نیب لاہور کیجانب سے ملزم کے خلاف فوری طور پر آمدن سے زائد اثاثہ جات رکھنے کے الزام پر براہ راست انکوائری کے احکامات صادر کر دیئے گئے ہیں۔ای ایم ای سوسائٹی کے گھر سے نکلنے والے کروڑوں روپے کے مالکان کے نام منظر عام پر آ گئے، نیب نے ایک کارروائی کے دوران گھر سے 33کروڑ برآمدکئے، اس خطیر رقم کے مالک خواجہ وسیم حسن اور خواجہ شہزاد حسن بتائے گئے ہیں جو سابق سرکاری ملازم ہیں، نجی ٹی وی کے

مطابق دونوںملزمان بھائی ہیں، ان ملزم بورڈ آف ریونیو اور دوسرا ایکسائز اینڈ ٹیکسشن میں ملازم تھا، دونوں بھائی نوکری کے بعد ہاؤسنگ کے کام سے منسلک تھے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس