شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

نیوزی لینڈ سے مسلسل 12 واں میچ ہارنے کی وجہ کیا ہے؟،سرفراز احمد نے بتا دیا


ابوظہبی (نیوزڈیسک) نیوزی لینڈ نے قومی کرکٹ ٹیم کو مسلسل 12 ویں ون ڈے انٹرنیشنل میں شکست دی جس پر پاکستانی خاصے برہم ہیں اور سوشل میڈیا پر گرما گرم تبصرے جاری ہیں۔ سابق کپتان رمیز راجہ نے کپتان سرفراز احمد سے جب پوچھا کہ آخر نیوزی لینڈ کی ٹیم ون ڈے کرکٹ میں ایسا کیا کرتی ہے کہ آپ پرفارمنس نہیں دے پاتے؟ تو انہوں نے ایسا جواب

دیدیا کہ پاکستانی اور بھی غصہ ہو جائیں گے۔ کپتان نے کہا کہ ان کی باﺅلنگ بہت اچھی ہے اور ایک ہی اوور میں تین وکٹیں گرنے سے کم بیک کرنا مشکل ہو گیا جبکہ گزشتہ سیریز میں بھی ایسا ہی ہوا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر ورلڈکپ کی تیاری کرنی ہے تو اوپننگ بلے بازوں پر کام کرنا پڑے گا کیونکہ جلدی وکٹیں گرنے سے کم بیک کرنا مشکل ہو جائے گا۔ ماہرین کرکٹ نے سرفراز احمد کے بیان پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیوزی لینڈ کیخلاف گزشتہ سیریز میں سامنے آنے والی خامیوں پر قابو نہ پانا کوچنگ عملے کی کارکردگی پر بھی سوالیہ نشان ہے۔ اگرچہ قومی ٹیم ٹی 20 میں عمدہ کارکردگی دکھا رہی ہے مگر ون ڈے کرکٹ میں مسلسل ناقص کارکردگی بھی انتہائی تشویشناک ہے بالخصوص ایسے وقت میں جب میگا ایونٹ میں صرف 6 ماہ کا عرصہ ہی باقی رہ گیا ہو۔یاد رہے کہ پہلے ون ڈے میں نیوزی لینڈ نے پاکستان کو 47 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں ایک صفر کی برتری حاصل کرلی۔دبئی کے شیخ زید سٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ میں نیوزی کے 267 رنز کے ہدف کے تعاقب میں پاکستانی بیٹنگ لائن مکمل طور پر ناکام ہوگئی اور

پوری ٹیم 219 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔ ٹرینٹ بولٹ نے ابتدا ہی میں گرین شرٹس کے ٹاپ آڈر کے پرخچے اڑاتے ہوئے شاندار ہیٹ ٹرک کی، بائیں ہاتھ کے فاسٹ بولر نے 8 کے مجموعے پر فخرزمان، بابر اعظم اور محمد حفیظ کو پویلین بھیج دیا جبکہ امام الحق 34 اور شعیب ملک 30 رنز بنا کر چلتے بنے۔85 رنز پر 6 بیٹسمین آﺅٹ ہونے کے بعد کپتان سرفراز احمد نے آل

راﺅنڈر عماد وسیم کےساتھ 103 رنز کی شراکت داری قائم کرکے ڈوبتی کشتی کو ساحل پر لانےکی کوشش کی تاہم وہ نیہ پار لگانے میں ناکام رہے اور 64 رنز پر بولڈ ہوگئے۔ عماد وسیم 50، شاداب خان 7، حسن علی 16،شاہین شاہ آفریدی صفر جبکہ جنید خان ناٹ آﺅٹ رہے۔ نیوزی لینڈ کی جانب سے بولٹ اور فرگوسن نے 3،3 جبکہ گرینڈ ہوم نے 2، ساو¿تھی اور سوڈھی نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔قبل ازیں کیوی کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیتا اور پہلے بیٹنگ کرنے کو ترجیح دی، نیوزی لینڈ کی پہلی وکٹ 13 کے مجموعی سکور پر اس وقت گری جب شاہین آفریدی کی گیند پر ورکر وکٹ کے پیچھے کیچ آﺅٹ ہوئے، انہوں نے صرف 1 رن بنایا جبکہ منرو 29 اور کپتان ولیمسن 27 رنز بنا کر آﺅٹ ہوئے۔78 پر تین کھلاڑیوں کے پویلین لوٹنے کے بعد تجربہ کار بیٹسمین روس ٹیلر نے لیتھم کےساتھ ملکر 130 رنز کی شراکت داری کرکے ٹیم کی پوزیشن کو مستحکم بنایا، لیتھم 68 رنز بنا کر شاداب خان کا شکار بنے، نوجوان سپنر اگلی ہی گیند پر نکولس کو چلتا کیا جبکہ وہ ہیٹ ٹرک میں کامیاب نہ ہوسکے اور ایک گیند کے بعد گرینڈ ہوم کو بھی پویلین کی راہ دکھا دی، دو رنز کے اضافے کےساتھ روس ٹیلر بھی 80 رنز پر عماد وسیم کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔210 کے مجموعے پر 7 کھلاڑیوں سے ہاتھ دھونے کے بعد ایک بار پھر کیوی بیٹسمینوں نے فائٹ بیک کیا اور سکور کو 266 رنز تک پہنچا دیا، نیوزی لینڈ نے مقررہ اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 266 رنز بنا کر پاکستان کو جیت کے لیے فائٹنگ اسکور دیا۔پاکستان کی جانب سے نوجوان فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی اور شاداب خان نے 4،4 وکٹیں حاصل کیں جبکہ عماد وسیم کے حصے میں ایک وکٹ آئی۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس