پاکستان کی معروف گلو کارہ خدیجہ حیدر کی والدہ بارے افسوس ناک خبر سامنے آگئی،دعائوں کی اپیل


پاکستان کی معروف گلو کارہ خدیجہ حیدرگلوکاری میں اپنے جوہر منوا چکی ہیںاس وقت بھی وہ کا فی مصروف تھیں کہ اچانک ان کیلئے ایک افسوس ناک خبرآ گئی۔ گلو کارہ خدیجہ حیدر کی والدہ بیرون ملک شدید علیل ہیں۔
گلو کارہ اپنی تمام مصروفیات کو منسوخ کرکے والدہ کے پاس جارہی ہیں۔
تمام پاکستانیوں سے صحت یابی کیلئے دعا کی اپیل بھی کی۔

700 ارب روپے لوٹی ہوئی دولت کاایک حصہ ہیں،دنیابھرمیں چھپائی گئی اصل رقم کتنی اوراس کاکھوج کیسے لگایاجارہاہے؟جعلی بینک اکائونٹس کی تحقیقات کے دوران ہوشرباانکشافات


اسلام آباد(ویب ڈیسک) 5ہزار جعلی بینک اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کے ذریعے متحدہ عرب امارات، برطانیہ اور سوئٹزر لینڈ سمیت صرف دس ممالک سے پاکستان کی لوٹی ہوئی دولت کے 700 ارب روپے یعنی 5.3ارب ڈالر کا سراغ ملنا. امیر اور بااثر لوگوں کا اپنے ڈرائیوروں، مالیوں اور ملازمین حتیٰ کہ فالودے والوں اور رکشے والوں کے نام استعمال کر

کے اربوں ڈالر کی رقم غیر قانونی طریقے سے بیرون ملک منتقل کرنا، اقامے کی آڑ میں اپنی شناخت چھپا کر ناجائز کاروبار کرنا، لانچوں میں پیسے چھپا کر ملک سے باہر لے جانا، اگر یہ معلومات پوری چھان بین کے بعد دیانتداری سے سامنے لائی گئی ہیں اور بظاہر ان کے درست ہونے پر شک و شبہ کی کوئی گنجائش نہیں .کیوں کہ ان کا انکشاف نیب، ایف آئی اے اور ایس ای سی پی کی گہری تحقیقات کے بعد کیا گیا ہے تو ہر محب وطن شخص سوچنے پر مجبور ہے کہ اس ملک، اس کی معیشت اور اس کے عوام کے ساتھ کیا ہوتا رہا ہے اور کیا ہو رہا ہے. حکام کا کہنا ہے کہ جعلی اکاؤنٹس کے حوالے سے نیب میں ریفرنس جلد فائل ہونے والا ہے انہوں نے یہ بھی کہا کہ پاکستان میں کالے دھن کا حجم ہماری معیشت کے پورے حجم کے برابر ہے جسے ماضی کے حکمرانوں نے نہیں روکا، صرف دبئی میں پاکستانیوں نے15ارب روپے کی جائیدادیں بنائیں.جن 700ارب روپے کا سراغ ملا وہ لوٹی ہوئی دولت کا صرف ایک حصہ ہیں‘ اصل رقم کا حجم تحقیقات مکمل ہونے کے بعد پتہ چلے گا. بیرون ملک بہت سے پاکستانیوں کے مشتبہ اکاؤنٹس منجمد کئے جا چکے ہیں‘ غیر قانونی رقم کی

واپسی قانونی کارروائی کے بعد ممکن ہو گی. سب سے بڑے منی لانڈرنگ سکینڈل کی تحقیقات سپریم کورٹ کی تشکیل کردہ جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کر رہی ہے.سوئس اکاؤنٹس کی بھی تحقیقات ہو رہی ہیں جہاں بتایا جاتا ہے کہ 200ارب ڈالر جمع ہیں‘ اس بارے میں اس ماہ کے آخر میں خوش خبری سنانے کا عندیہ دیا گیا ہے. جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کے چیف جسٹس نے جے آئی ٹی کو اپنی مکمل تحقیقاتی رپورٹ دو ہفتے میں جمع کرانے کا حکم دیا ہے اور اگلی سماعت پر متعلقہ بینکوں کے اعلیٰ حکام کو بھی طلب کر لیا ہے.جعلساز جو کچھ کر رہے ہیں اس کا خمیازہ تو انہیں بھگتنا ہی ہو گا مگر سوال یہ ہے کہ بینک حکام کیوں آنکھیں بند کرکے بیٹھے ہیں کیا اکاؤنٹس کھولتے وقت وہ جانچ پڑتال نہیں کرتے؟ چیف جسٹس نے کیس کے ملزمان سے درست کہا کہ لانچوں میں چھپاکے باہر لے جائے گئے پیسے واپس کردو، کیس ختم ہو جائے گا. وزیراعظم کے معاونین کا کہنا ہے کہ جعلی اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کے کیسوں کا پچھلے 60/70 دنوں میں پتہ چلایا گیا ہے گویا یہ کیس فائلوں میں دبا دیئے گئے تھے جو اب کھولے گئے‘ کس نے دبائے اور کیوں،

اس کا پتہ بھی چلانا چاہئے اور ذمہ داروں پر مقدمات چلانے کے علاوہ قوم کے سامنے ان کے نام بھی ظاہر کئے جانے چاہئیں ان لوگوں نے ملکی معیشت کے ساتھ کھلواڑ کیا ہے جو ناقابل معافی ہے.یہ فیصلہ بھی مستحسن ہے جس کے تحت یورپ، دبئی اور دوسرے ملکوں سے اقامہ ہولڈرز کی تفصیلات مانگی جا رہی ہیں‘ اگر انہوں نے واقعی کوئی جرم کیا ہے تو ان پر مقدمات چلائے جائیں ورنہ پوائنٹ اسکورنگ سے گریز کیا جائے اور کسی کو بلاجواز بدنام نہ کیا جائے‘ جو بھی کارروائی ہو شفاف اور غیرجانبدارانہ ہونی چاہئے اور انصاف کے تقاضےرو رعایت کے بغیر پورے کئے جانے چاہئیں.

آج کہاں کہاں بارش کاامکان ہے ،محکمہ موسمیات نے خوشخبری سنادی


کراچی (ویب ڈیسک (کراچی سمیت سندھ بھر میں دھند چھائی ہوئی ہے اور موسم میں معمولی سی ٹھنڈ بھی محسوس کی جاسکتی ہے جب کہ اسلام آباد اور راولپنڈی کے مختلف علاقوں میں صبح سویرے بارش ہوئی جس کے بعد سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا۔محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں 3 دن سے سمندری ہوائیں نہیں چل رہیں اور ہوا میں نمی کا تناسب زائد

ہونے سے دھند چھائی ہوئی ہے جو 11 بجے کے بعد چھٹنا شروع ہوجائے گی۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ جناح انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے علاقے میں حد نگاہ ایک کلو میٹر ہے۔خیبر پختونخوا کے مختلف شہروں پشاور، سوات، مالم جبہ، لوئر دیر اور صوابی میں صبح سویرے بارش کے بعد سردی میں اضافہ ہوگیا جب کہ اسلام آباد اور راول پنڈی کے بعض مقامات پر بھی صبح سویرے بارش ہوئی۔ ملکی بالائی علاقے دیامر، نیاٹ داریل، تانگیر اور بابو سر ٹاپ پر وقفے وقفے سے برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس سے خنکی میں مزید اضافہ ہوگیا۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے آج ملک کے بالائی علاقوں میں مطلع ابر آلود رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے جب کہ راول پنڈی ڈویژن، کشمیر، گلگت بلتستان، مالاکنڈ اور ہزارہ میں چند ایک مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش اور پہاڑوں پر برف باری کا امکان ہے۔جبکہ کل ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم سرد اور خشک رہیگا۔ تاہم گلگت بلتستان میں چند مقامات پر گرج چمک کیساتھ بارش اور پہاڑوں پر برفباری کا امکان ہے۔گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم سرد اور خشک رہا۔ تاہم مالاکنڈ، ہزارہ،

راولپنڈی، گوجرانوالہ ڈویژن، اسلام آباد اور کشمیر میں چند مقامات پر بارش اور پہاڑوں پر برفباری جبکہ پشاور، لاہور، فیصل آباد، سرگودھا، ساہیوال، ملتان ڈویژن، لسبیلا اور گلگت بلتستان میں بوندا باندی ہوئی۔ سب سے زیادہ بارش خیبرپختونخوا: پٹن08، دیر(زیریں05، بالائی01)، مالم جبہ، پاراچنار04، سیدوشریف03، چترال01، پنجاب: مری02، راولپنڈی (چکلالہ02، شمس آباد01)، سیالکوٹ، گوجرانوالہ، کامرہ، اسلام آباد01، کشمیر: راولاکوٹ05، گڑھی دوپٹہ، مظفر آباد02، کوٹلی01ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

بریکنگ نیوز ڈاکٹر عا فیہ صدیقی کی وطن واپسی ،،،بہن فوزیہ صدیقی ملاقا ت کیلئے روانہ ہو گئیں پاکستانیوں کےلئے بڑی خبر


اسلام آباد(نیو زڈیسک) شاہ محمود قرشی کا کہنا ہے عافیہ صدیقی کیلئے کونسلر کے باقاعدگی سے وزٹ کی ہدایت کر دی، وزٹ کا مقصد عافیہ کی صحت اور انسانی و قانون حقوق کا تحفظ یقینی بنانا ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے عافیہ صدیقی کی بہن ڈاکٹر فوزیہ سے ملاقات کی جس میں امریکی جیل میں قید ڈاکٹر عافیہ کی پاکستان منتقلی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر خارجہ نے ڈاکٹر فوزیہ کو عافیہ صدیقی کیس کے سلسلے میں کاوشوں سے آگاہ کیا، عافیہ صدیقی کے لیے کونسلر وزٹس کے باقاعدگی سے اہتمام کی ہدایت کر دی۔یاد رہے امریکی جیل میں قید پاکستانی خاتون عافیہ صدیقی نے وزیراعظم عمران خان سے رہائی میں مدد کی اپیل کی تھی۔ سفارتی ذرائع کے مطابق ڈاکٹر عافیہ صدیقی نے وزیراعظم عمران خان کے نام خط لکھا جس میں ان کا کہنا تھا عمران خان نے ماضی میں میری بہت حمایت کی، اب وزیراعظم بننے کے بعد میری رہائی میں مدد کریں، میں اس قید سے باہر نکلنا چاہتی ہوں، امریکا میں میری سزا غیر قانونی ہے، مجھے اغوا کر کے امریکا لایا گیا تھا۔عافیہ صدیقی نے خط میں مزید لکھا عمران خان پر تنقید کرنے والوں کو اپنی تنقید بند کر دینی چاہیے، انہوں نے ماضی میں غلطیاں کیں مگر اب وہ ویسے نہیں رہے، اسلامی قوانین میں غلطیوں پر توبہ کرنے والے کی غلطیاں معاف کر دی جاتی ہیں۔ خط میں کہا گیا اگر کسی کو عمران خان کے حوالے سے شک ہے تو میں اسے مناظرے کا چیلنج دیتی ہوں، عمران خان ہمیشہ سے میرے ہیرو رہے ہیں انھیں اپنے اردگرد موجود منافقین سے محتاط رہنا چاہیے۔

انتظار کی گھڑیاں ختم ، حکو مت کے 100روز مکمل


اسلام آباد(نیو ز ڈیسک) معروف صحافی چوہدری غلام حسین نے انکشاف کیا ہے کہ حکومت کے پہلے 100 روز مکمل ہونے پر 5,6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء اپنی ناقص کارکردگی کے باعث اپنی وزارتوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔۔تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو بنے ہوئے 2 ماہ مکمل ہو چکے ہیں ۔اس عرصے کے دوران پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اپنے 100 روزہ پلان پر عملدرآمد کے لیے انتہائی پر عزم نظر آتی ہے۔اس سلسلے میں جہاں تحریک انصاف کی حکومت مقبول فیصلے کرکے عوامی حمایت سمیٹ رہی ہے وہیں تحریک انصاف کی حکومت کو کچھ سخت فیصلے بھی کرنے پڑ رہے ہیں جس کے باعث عوام خاصی بے چین نظر آتی ہے۔اس ساری صورتحال میں پاکستان تحریک انصاف کو سب سے زیادہ جس پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہ ملک کے معاشی حالات ہیں۔زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی کے بعد ملک میں ڈالر کی اونچی اڑان جاری ہے۔ حکومت کو قائم ہوئے 100 دن مکمل ہو نے والے ہیں اور اس موقع پروزیر اعظم عمران خان نے تمام وزراء سے ان کی کارکردگی رپورٹ طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ بتایا جائے کتنا کام کیا گیا۔اس موقع پر وزیر اعظم کی جانب سے بنائی خفیہ ٹیم بھی وزیر اعظم کو مکمل طور پر آگاہ رکھے ہوئے ہیں۔اس موقع پر معروف صحافی چوہدری غلام حسین نے انکشاف کیا ہے کہ 100 روز مکمل ہونے پر وزیر اعظم کی جانب سے 5سے 6 وفاقی وزراء اور متعدد صوبائی وزراء کوانکے عہدوں سے ہٹا دیا جائے گا۔انکا مزید کہنا تھا کہ یا تو ان کو مکمل طور پرکابینہ سے باہر نکال دیا جائے گا یا پھر ان کو اہم وزارتوں سے ہٹا کر چھوٹی اور غیر اہم وزارتیں دے دی جائیں گی۔ یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے یہ کہا گیا تھا کہ 100 روزہ مرحلہ وزراء کے لیے بھی ٹیسٹنگ فیز ہے اور جو وزراء کام کریں گے وہ رہیں گے اور جو کام نہیں کریں گے وہ گھر جائیں گے۔

پا کستانی عوام کیلئے اب تک کی بڑی خو شخبری آگئی پٹر ول کی قیمتو ں میں شا ندار کمی کا امکان


کراچی (نیوز ڈیسک ) عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث پاکستان میں بھی پیٹرولیم مصنوعات سستی ہونے کے امکانات روشن ہوگئے۔یکم نومبر سے عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتیں گھٹنا شروع ہوئیں جس کی سب بڑی وجہ ایرانی سپلائی اور بین الاقوامی سطح پر معاشی سست روی ہے، امریکی خام تیل 1 ڈالر 60 سینٹس کمی کے بعد 59 ڈالر فی بیرل اور برطانوی خام تیل بھی 1 ڈالر 60 سینٹس کمی کے بعد 69 ڈالر36 سینٹس فی بیرل میں ٹریڈ کر رہا ہے، دو ہفتوں کے درمیان عالمی منڈی میں خام تیل 9 فیصد یعنی 6 ڈالر فی بیرل سستا ہوچکا ہے۔معاشی تجزیہ کاروں کے مطابق عالمی منڈی میں خام تیل سستا ہونے سے پاکستان میں بھی حکومت دسمبر میں پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کرسکتی ہے جس سے فیکٹریوں کی پیداواری لاگت میں کمی واقع ہو گی۔

کینیڈین وزیراعظم کے اعلان نے ہر کسی کے پیرو ں تلے زمین نکال دی


کینیڈا (نیوز ڈیسک )کینیڈا نے آسیہ بی بی کو پناہ دینے کے حوالے سے پیشکش کر دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز پیرس میں فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو انٹرویو دیتے کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈیو نے کہا کہ ہماری حکومت آسیہ بی بی کو سیاسی پناہ دینے کے لیے پاکستان کے ساتھ بات چیت کر رہی ہے ۔ کینیڈین وزیر اعظم فرانس کے صدر کی طرف سے منعقد کی جانے والی امن کانفرنس میں شرکت کے لیے پیرس میں موجود ہیں۔جسٹن ٹروڈیو نے آسیہ بی بی کو پناہ دینے کے حوالے سے کہا کہ اس معاملے میں مزید تفصیل میں جانے کی ضرورت نہیں تاہم کینیڈا لوگوں کو خوش آمدید کہنے والا ملک ہے ۔ آسیہ بی بی کو پاکستان سے باہر منتقل کرنے کے لیے اٹلی اور کینیڈا کا ٹی وی چینل میدان میں آگئے ہیں اور سپانسر کرنے کی پیشکش بھی کر دی ہے۔تفصیلات کے مطابق اٹلی کا کہنا ہے کہ وہ آسیہ بی بی کو پاکستان سے باہر منتقل کرنے میں مدد کرے گا کیونکہ وہاں اس کی زندگی خطرے میں ہے۔اطالوی ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے اٹلی کے نائب وزیراعظم ماٹیو سالوینی نے کہا کہ ہم آسیہ بی بی اور ان کے بچوں کا اٹلی میں یا کسی بھی یورپی ملک میں محفوظ مستقبل چاہتے ہیں۔اس سلسلے میں ہم سے جو ہو سکا ہم کرنے کے لیے تیار ہیں۔ اس کیس پر اٹلی اور دیگر مغربی ممالک کے ساتھ محتاط رہتے ہوئے کام بھی کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اٹلی پاکستانی حکومت کے خلاف نہیں ہے۔اصل دشمن تشدد، انتہا پسندی اور تعصب ہے۔ اٹلی کے نائب وزیراعظم نے کہا کہ ہم 2018ء میں رہ رہے ہیں اور یہ نہیں ہو سکتا کہ کسی مفروضے کے تحت کسی بے گناہ کی جان لے لی جائے۔ ادھر کینیڈا کے ممتاز بین المذاہب ٹی وی نے آسیہ بی بی کو سپانسر کرنے کی پیشکش بھی کر دی ہے۔ ٹی وی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اولورنا ڈیوک نے وزیراعظم جسٹن ٹروڈیو اور وزیر خارجہ کے نام خطوط ارسال کیے جس میں زور دیا گیا کہ وہ آسیہ بی بی کا کینیڈا میں خیر مقدم کریں ۔ان کا ٹی وی آسیہ بی بی کے خاندان کو کینیڈا میں مکمل طور پر سپانسر کرے گا۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ آسیہ بی بی کے شوہر عاشق مسیح نے آسیہ بی بی اور اہل خانہ کی جان کو خطرہ ہونے کے سبب امریکہ اور کینیڈا سے پناہ دینے کی درخواست کی تھی اورآسیہ کی اہل خانہ سمیے بیرون ملک منتقلی میں مدد کرنے کی اپیل کی تھی۔

مولانا سمیع الحق کا پراسرار قتل۔۔تحقیقات میں اب تک کا سب سے بڑا دھچکا


مولانا سمیع الحق کے سیکرٹری احمد شاہ لاپتہ
پولیس نے سید احمد شاہ کو تحویل میں نہیں لیا ،ْ تفتیش آگے بڑھانے کے لیے ان کی سخت ضرورت ہے ،ْ سینئر پولیس افسر

مولانا سمیع الحق کے سیکرٹری احمد شاہ لاپتہ
راولپنڈی: جمعیت علماء اسلام (س) کے شہید رہنما مولانا سمیع الحق کے سیکرٹری احمد شاہ لاپتہ ہوگئے۔تفصیلات کے مطابق جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق کو راولپنڈی میں ان کی رہائش گاہ پر چاقوئوں کے وار کرکے شہید کردیا گیا تھا۔ مولانا سمیع الحق کے سیکرٹری احمد شاہ اکوڑہ خٹک میں اپنی رہائش گاہ سے پراسرار طور پر چار دن سے لاپتہ ہیں۔
وہ مولانا کی زندگی میں آخری وقت تک ان کے ساتھ رہے اور ان کا موبائل فون بھی مسلسل بند مل رہا ہے ،ْ رابطہ نہ ہونے پر لواحقین اور قریبی حلقے تشویش کا شکار ہیں۔سربراہ جمعیت علماء اسلام مولانا حامد الحق حقانی نے کہا کہ احمد شاہ سے تین چار دن سے رابطہ نہیں، پولیس اور کئی دیگر ادارے مقدمے کی تحقیقات کر رہے ہیں، ممکن ہے ان میں سے کسی نے تفتیش کیلئے بلایا ہو۔تھانہ ائیرپورٹ میں مولانا سمیع الحق کے حوالے سے درج مقدمے میں پولیس سے بھرپور تعاون کیا جارہا۔ ادھر راولپنڈی پولیس کے سینئر آفیسر کا کہنا ہے کہ پولیس نے سید احمد شاہ کو تحویل میں نہیں لیا جبکہ تفتیش آگے بڑھانے کے لیے ان کی سخت ضرورت ہے۔

اہم ترین جماعت کے رہنما کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا۔۔۔ پارٹی سوگ میں ڈوب گئی


پشاور (ویب ڈیسک) صوبہ خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں معمولی تنازع پر ہونے والی فائرنگ سے 3 افراد جاں بحق جبکہ 2 زخمی ہوگئے۔ فائرنگ کا یہ واقعہ پشاور کے علاقے نوتھیہ میں پیش آیا، جس میں یونین کونسل نوتھیہ کے نائب ناظم شیر علی بھی جاں بحق ہوئے۔ پولیس کے مطابق ایک تقریب کے دوران شیر علی اور ان کے پڑوسی طارق کے

درمیان آتشبازی کے معاملے پر معمولی تکرار ہوئی تھی، تاہم اس دوران سخت جملوں کے تبادلے سے معاملہ بگڑ گیا۔ پولیس کا کہنا تھا کہ سخت جملوں کے تبادلے کے بعد دونوں فریقین کی جانب سے فائرنگ کا تبادلہ ہوا، جس میں یوسی نائب ناظم شیر علی، ان کے بھائی اور پڑوسی طارق جاں بحق ہوگئے جبکہ اس دوران 2 افراد زخمی بھی ہوئے۔ دوسری جانب عوامی نیشنل پارٹی کے ضلع رکن محمد سعید ظاہر نے واقعے کی تصدیق کی ہے اور بتایا کہ اس واقعے میں 2 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ فائرنگ کے بعد زخمیوں اور لاشوں کو پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کردیا گیا جبکہ پولیس مزید تحقیقات کر رہی ہے۔ واقعے کے عینی شاہدین کے مطابق یہ واقعہ اتوار کی رات ایک بجے کے قریب پیش آیا۔ واضح رہے اے این پی کے نائب ناظم شیر علی کے گھر میں شادی کی تقریب جاری تھی جس میں اس کے دوست دعوت کے لیے مدعو تھے کہ ان کے درمیان کسی بات پر تلخ کلامی ہوئی اور انہوں نے فائرنگ کردی۔ جاں بحق افراد میں شیر علی، اس کا بھائی طارق اور قریبی دوست شامل ہیں۔ گولیاں لگنے سے ایک راہ گیر سمیت دو افراد زخمی بھی ہوئے۔ پولیس نے لاشیں تحویل

میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھجوادیں اور مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہیں۔

تیاری کر لو، آرمی چیف جنرل باجوہ کا بھارت اور عالمی برادری کوکھلاپیغام


راولپنڈی (ویب ڈیسک )بھارت نے 27اکتوبر1947ء کو سرینگر میں فوجیں اتار کر جموں و کشمیر پر جو ناجائز قبضہ کیا تھا مقبوضہ کشمیر پاکستان اور دنیا بھر میں پاکستانی کشمیر ی عوام نے یوم سیاہ منایا اس یوم سیاہ کی تاریکی 70سال سے کشمیری عوام کو بخشی ہوئی ہے ۔لاکھوں افراد شہید‘ہزاروں زخمی اور ہزاروں عصمتیں پامال ہو چکیں۔ ہزاروں بے گناہ

جیلوں ‘عقوبت خانوں میں اذیتیں برداشت کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔بھارت کنٹرول لائن کی بھی مسلسل خلاف ورزیاں کر رہا ہے پاک فوج کے جوانوں کی جرات آبیاری اور اعلیٰ ترین پیشہ ورانہ عسکری صلاحیتوں کے باعث اس کسی بڑی کاروائی کی جرات نہیں ہو رہی۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاونڈوسیکٹر میں پاک فوج کے جوانوں سے ملاقات کی ان کی جرات وبہادری اور دشمنوں کے ناپاک ارادوں کو خاک چٹان کی صلاحیت ومہارت کو سراہا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ کشمیر ایک غیر حل شدہ تنازعہ ہے پاکستان کے عوام اور پاک فوج کشمیریوں کے موقف کی حمایت کرتے ہیں ۔پاک فوج خطے میں امن واستحکام کی خواہاں ہے لیکن کسی جارحیت کی مہم جوئی کے خلاف ملک سلامتی کے لئے بھی ہمہ وقت تیار ہے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ کے اس خطاب پر غور کیا جائے تو یہ کئی پہلو رکھتا ہے ۔بلکہ اگر اسے خطاب کی بجائے واضح پیغام سمجھاجائے تو شاید بلکہ یقینا غلط نہ ہو گا۔اول یہ خطے میں امن واستحکام کی سچی خواہش کا اظہار کیا ہے کیونکہ خطے میں اس سے ہی استحکام جنم لے گا اور استحکام کی کو کھ سے ترقی

وخوشحالی جنم لے گی۔ جس کا جتنا فائدہ پاکستان کو ہے اتنا ہی یہ بھارت کیلئے بھی مفید ہے ۔جس کے عوام کی بہت بڑی اکثریت غربت و افلاس کی چکی میں پسی اذیت ناک زندگی گزاررہی ہے ۔دوئم یہ بھارت کے جنگی جنوں میں مبتلا حکمرانوں کے لئے پیغام ہے کہ وہ کسی غلط فہمی کا شکار نہ ہوں ۔وہ جو اپنے عوام کو ننگا بھوکار کھ کر ہتھیاروں کے ڈھیرلگانے کیلئے اربوں کھربوں ڈالر سے اسلحہ ساز غیر ملکی کمپنیوں یا ملکوں جن میں امریکہ سر فہرست ہے کی تجوریوں کو بھررہے ہیں پاک فوج کے جوانوں کی اعلیٰ ترین پیشہ ورانہ عسکری مہارت اور جرات وبہادری کے لئے پر کاہ کی حثیت نہیں رکھتے لہٰذا بھارت کے جنگی جنون میں مبتلا حکمران خبردار رہیں پاک فوج وفاع وطن کے لئے ہر لمحے چوکس وتیار ہے ان کی جانب سے کسی بھی احمقانہ مہم جوئی کا بھرپور جواب دیاجائے گا ۔پاک فوج کی جوابی اہلیت ہے جس نے بھارت کے جنگی جنون میں مبتلا حکمرانوں اور بھارتی فوج کے دلوں میں مچلتی سر جیکل سٹرائیک کی خواہش کوآرزوئے ناتمام بنا رکھا ہے کیونکہ وہ جانتے ہیں ایسی کسی حماقت کی کیا قیمت ادا کرنی ہو گی۔ لہٰذا نہ

صرف عوام کو دھو کہ دینے اور اپنی خواہش میں جھوٹ کا رنگ بھرنے کے لئے بھارتی آرمی چیف نے سرجیکل سٹرائیک کا شوشہ چھوڑا جس کا خود بھارت میں سوچ سمجھ رکھنے والے افراد کا پول کھول دیا اور اس حوالے سے بھارتی فوج کے سربراہ کوئی واضح ثبوت پیش نہ کر سکے ۔دوسرے پاکستان کا ایٹمی طاقت ہونا بھی بھارت کو کسی جارحیت سے باز رکھے ہوئے ہے ورنہ پوکھران میں ایٹمی دھماکہ کرتے ہی اس وقت آج کی بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما دم پر کھڑے ہو گئے تھے ۔اور نائب وزیراعظم ایل کے ایڈوانی نے تو باقاعدہ دھمکی دے دی تھی پاکستانی ٹولوں آزاد کشمیر سے نکل جائے لیکن چند دنوں بعد جب پاکستان نے چاغی کے مقام پر ایک بجائے چھ دھماکوں سے جواب دیا تو ان بھارتی رہنماؤں کی بولتی بند ہو گئی تھی ۔جس کے بعد بھارت کے مکار حکمرانوں نے پاکستان کے خلاف دیگر محاذ کھول دےئے جن میں کراچی اور بالخصوص بلوچستان میں دہشت گردی ایک بڑا محاذ تھا مگر پاک فوج نے اس چیلنج کو قبول کیا اور عظیم قربانی دیکر ملک وقوم کو دہشت گردی کے عفریت سے نجات دلادی ۔پاک فوج کی یہ عظیم کامیابی دراصل بھارت کی

شرمناک شکست ہے اور اس شکست کی واضح نشانی بھارتی جاسوس حاضر سروس فوجی آفیسر کلبھو شن یا دیو کی گرفتاری ہے ۔بھارت نے اسے کاونٹر کرنے کے لئے ایک نام نہاد امریکی فرم کی جانب سے پاکستان کے سابق فوجی آفیسر کی انتہائی پر کشش معاوضہ پر خدمات کا اشتہار دیا کئی سابق فوجی افسروں نے اس پیشکش کے جواب میں اپنی خدمات پیش کی ہوں گی لیکن نگاہ انتخاب کرنل (ر)ایوب پر پڑی اس کی وجہ یہ سمجھ میں آتی ہے کہ کلبھوشن یادیو نیوی میں کرنل کے عہدے کا آفیسر ہے لہٰذا اس عہد کے پاکستان آفیسر کو پھانسنے کی چال چلی گئی نام نہاد امریکی فرم کی آفسر کرنل ایوب کی خدمات قبول کرنے کیلئے دبئی پہنچے ۔دبئی سے نیپال بلوانے اور نیپال کے دارالحکومت کھٹمنڈو سے بھارتی سر حد کے نزدیک ایک گاؤں میں لے جائے جانے کی تفصیل کرنل ایوب اپنے لیپ ٹاپ کے ذریعہ گھر والوکو بھیجتے رہے ۔چنانچہ جب انہیں اس سر حدی گاؤں لے جا کر بھارتی فوج کے حوالے کیا گیا اور اس سے پہلے کہ بھارت کی جانب سے یہ اعلان ہوتا کہ پاکستان کا ایک کرنل کا عہدہ رکھنے والا جاسوس پکڑلیا گیا ہے اور اس کے بدلے کلبھوشن کی رہائی کا

مطالبہ منوایا جاتا کر نل ایوب کی ساری داستان منظر عام پر آگئی اور بھارتی منصوبہ ناکام ہو گیا ۔تا ہم وہ افغانستان میں امریکہ سے مل کر پاکستان کے خلاف سازشوں کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے ۔مگر پاک فوج کے آہنی عزم واداروں اور جرات وبہادری کے آگے اس کا بس نہیں چل رہا۔جنرل قمر باجوہ نے عالمی برادری کو بھی خبردار کیا ہے کیونکہ بھارت کے جنگی جنون سے جنوبی ایشیا میں امن اوستحکام کو پہنچنے والے نقصان سے عالمی سطح پر بھی منفی اثرات پڑیں گے اس لئے عالمی برادری کوبھارت کی امن دشمن کارروائیوں کانو ٹس لینا چاہیے۔