شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

پیٹرولیم مصنوعات کی سپلائی بند ملک بھر میں پیٹرول کی قلت کا خدشہ


کراچی /لاہور(ویب ڈیسک) ہڑتال کے معاملے پر آئل ٹینکرز مالکان اورآئل کنٹریکٹرز دو گروپوں میں تقسیم ہو گئے،آل پاکستان آئل ٹینکر اونرز ایسوسی ایشن نے پٹرولیم مصنوعات کی سپلائی بند کردی جس کے بعد ملک میں پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے جبکہ آئل کنٹریکٹرز نے ہڑتال سے لا تعلقی کا اظہار کر دیا ہے۔آئل ٹینکر اونرز ایسوسی ایشن

کے رہنما شمس شاہوانی نے کہا ہے کہ ہم نے حکومت کے سامنے بارہا اپنے مطالبات رکھے اور بتایا کہ پرانے ماڈل کے آئل ٹینکرزپر پابندی معاشی قتل کے مترادف ہے۔2010 ماڈل کی گاڑیوں کی شرط سے آئل ٹینکرز مالکان اورکارکنوں کے گھروں کے چولہے ٹھنڈے ہو جائیں گے لیکن حکومت کی جانب سے پنجاب میں 600، خیبر پختوانخواہ میں 300، بلوچستان 200 اور کراچی میں 700 ٹینکرزپرپابندی عائد کردی گئی۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ہمیں 10دن میں پابندی ہٹانے کی یقین دہانی بھی کرائی گئی تھی لیکن10دن گزر جانے کے باجود ہمارے مسائل جوں کے توںہی ہیں اس لیے اتوار سے غیرمعینہ مدت کی ہڑتال شروع کر دی ہے اور ملک بھر میں پٹرولیم مصنوعات کی سپلائی بند کردی گئی ہے، اس دوران جیٹ فیول سپلائی بھی معطل رہے گی۔دوسری جانب ہڑتال کے معاملے پرآئل ٹینکرز مالکان اورآئل کنٹریکٹرز دو گروپوںمیں تقسیم ہو گئے۔آل پاکستان آئل کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال سے لاتعلقی کا اظہارکرتے ہوئے تیل کی سپلائی جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔آل پاکستان آئل کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری نعمان بٹ نے

گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ سہالہ آئل ڈپو اسلام آباد سے جڑواں شہروں سمیت آزاد کشمیر، گلگت ، ناردرن ایئریاز میں تیل کی سپلائی جاری رکھیں گے۔انہوںنے کہا کہ مالکان کی تنظیم کے کچھ افراد ذاتی مفادات کے لئے ہڑتال کر رہے ہیں۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس