آ سٹر یلیا کو ٹی 02میں کلین سویپ کر نے کے بعد پا کستا ن نے نیوز ی لینڈ کو حیر ا ن کن ہد ف دے دیا


ابوظہبی: تین ٹی ٹوئنٹی میچوں پر مشتمل سیریز کے پہلے میچ میں پاکستان نے نیوزی لینڈ کو جیت کے لیے 149 رنز کا ہدف دیا ہے۔ابوظہبی کے شیخ زید اسٹیڈیم میں کھیلے جا رہے میچ میں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے مہمان ٹیم کو فیلڈنگ کی دعوت دی۔پاکستان کی جانب سے اننگز کا آغاز بابراعظم اور صاحبزادہ فرحان نے کیا لیکن ان فارم

بابراعظم صرف 7 رنز بنا کر ملنے کی گیند پر وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ ہو گئے۔صاحبزادہ فرحان بھی 8 گیندوں پر صرف ایک رن بنا پائے اور اعجاز پٹیل کی گیند پر کیچ آؤٹ ہو گئے۔ قومی ٹیم کے اوپنر فخر زمان انجری کے باعث نیوزی لینڈ کے خلاف آج ہونے والے میچ میں شرکت نہیں کر رہے ہیں جب کہ بچے کی ولادت کے باعث بھارت جانے والے شعیب ملک آج پاکستان ٹیم کا حصہ ہیں۔

تحریک انصاف کی حکومت 3 ماہ بعد رخصت ہو جائے گی


تحریک انصاف کی حکومت 3 ماہ بعد رخصت ہو جائے گی
اسلام آباد : سربراہ جمیعت علماء اسلام ف مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت 3 ماہ بعد رخصت ہو جائے گی، حکومتی کارکردگی ایسی نہیں کہ قوم اس کو مزید برداشت کرسکے۔ تفصیلات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے ایک مرتبہ پھر حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔
سربراہ جمیعت علماء اسلام ف مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ حکومتی کارکردگی ایسی نہیں کہ قوم اس کو مزید برداشت کرسکے، اس لیے تحریک انصاف کی حکومت 3 ماہ بعد رخصت ہو جائے گی۔ اپنے سیاسی کیرئیر کے دوران پہلی مرتبہ کسی حکومت کا حصہ نہ بن پانے والے مولانا فضل الرحمان نے تحریک انصاف کی موجودہ حکومت کو بدترین اور نااہل ترین حکومت قرار دیا ہے۔
دوسری جانب جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) موخر کرنے کا فیصلہ بھی کر لیا ہے۔ بدھ کو مولانا فضل الرحمان کی زیرصدارت پارٹی کی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں اے پی سی اور مسلم لیگ (ن) کی جانب سے ٹی آو آرز طے کرنے پر مشاورت کی گئی۔مولانا فضل الرحمان نے کہاکہ پارٹی اجلاس میں تجویز دی گئی کہ اپوزیشن کے پارلیمانی رہنماؤں کا اجلاس بلالیں جس میں ٹی او آرز طے کرلیے جائیں، پارٹی قیادت کی موجودگی میں اے پی سی کانفرنس ہونی چاہیے۔
انہوں نے کہا کہ شہبازشریف سے پارٹی کی سطح پر رابطہ کررہے ہیں، پارٹی فیصلے سے متعلق (ن) لیگی قیادت کوآگاہ کردیا جائے گا، پارلیمان میں شہبازشریف،آصف زرداری اور بلاول بھٹو شامل ہیں۔

آسیہ مسیح کا خاندان اس وقت کہاں مقیم ہے ؟ پتہ لگا لیا گیا


لندن (نیوز ڈیسک ) توہین رسالت کے الزام میں قید مسیحی خاتون آسیہ بی بی کے اہل خانہ کا کہنا ہےکہ انہیں امید ہے کہ سپریم کورٹ آسیہ کو رہا کردے گی تاہم ان کا کہنا ہےکہ انہیں اب پاکستان میں رہنے سے خوف آتا ہے۔پیرکو سپریم کورٹ نے آسیہ بی بی کیسزائے موت کیخلاف اپیل کی سماعت کی تھی اور عدالت کا کہناتھاکہ فیصلہ محفوظ کرلیاگیا ہے۔آسیہ کے شوہرعاشق مسیح نے غیر ملکی خبررساں ادارے سے گفتگو کی جبکہ آسیہ کی بیٹی عشام عاشق کا کہنا ہےکہ جس روز ان کی والدہ رہاہوں گی وہ دن ان کی زندگی کا سب سے اچھا ہوگا۔آسیہ بی بی کی فیملی اس وقت لندن میں عارضی طور پر مقیم ہے۔

پاکستانیوں تیاری کرلو ، بارشیں ہی بارشیں ،کب سے کب تک ، محکمہ موسمیات نے شہریوں کو ٹھنڈی ٹھنڈی پیش گوئی کردی


اسلام آباد(نیو زڈیسک)مالاکنڈ، ہزارہ، مردان، پشاور، راولپنڈی، اسلام آباد، کوہاٹ، بنوں، سرگودھا، گوجرانوالہ اور لاہور میں چند مقامات پر تیز ہواؤں اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ آج ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم خشک رہے گا، جبکہ بالائی علاقوں میں شدید ٹھنڈ ہوگی۔تفصیلات کے مطابق محکمہ موسمیات نے پیش گوئی کی ہے کہ ملک کے مختلف شہروں میں موسم خشک رہے گا تاہم وسطی اور بالائی پنجاب، خیبرپختونخوا کے مختلف علاقے سردی کی لپیٹ میں رہیں گے۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مطابق مالاکنڈ، سوات، چترال، کالام، مالم جبہ، اپردیر، ہزارہ، مری، گلیات، گلگت بلتستان اور کشمیر میں برفباری متوقع ہے۔کراچی میں رواں ہفتے ہیٹ اسٹروک کا خطرہ، محکمہ موسمیات کی وارننگ کراچی سمیت سندھ بھر میں موسم گرم اور خشک رہے گا۔گزشتہ روز سب سے کم درجہ حرارت اسکردو میں منفی چار ڈگری سینٹی گریڈریکارڈ کیا گیا تھا۔خیال رہے کہ رواں سال مارچ میں محکمہ موسمیات نے شہریوں کو وارننگ دیتے ہوئے کہا تھا کہ رواں ہفتے کراچی میں شدید گرمی پڑے گی۔گرم ہواؤں کے سبب ہیٹ اسٹروک کا بھی خدشہ ظاہر کیا تھا

کاجول کے گھر خوشیاں ہی خوشیاں ، ہر طرف سے مبارکبادیں


اسلام آباد(نیو زڈیسک) بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق اداکارہ کاجول کا کہنا تھا ان کو خوشی ہے کہ وہ اس کمپنی کا حصہ ہیں۔بالی وڈ اداکارہ کاجول ہیئر ڈائی بنانے والی کمپنی ’’سپر وسمول‘‘ کی برانڈ ایمبیسیڈر بن گئیں۔ بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق اداکارہ کاجول کا کہنا تھا ان کو خوشی ہے کہ وہ اس کمپنی کا حصہ ہیں۔بالی وڈ کی یادگار فلموں میں مرکزی کردار ادا کرنے والی اداکارہ کاجول ان دنوں کاسمیٹکس فرمز کے ساتھ کام میں مصروف ہیں۔ اب وہ بالوں کو مختلف رنگ دینے والی ایک کاسمیٹکس کمپنی کی برانڈ ایمبیسیڈر بن گئی ہیں جس پر ان کا کہنا ہے کہ انھیں خوشی ہے کہ وہ اُس کمپنی کا حصہ ہیں۔

بھارتی ماں اور پاکستان باپ کا بیٹا کس ملک کا شہری؟ شعیب اور ثانیہ مرزا کے بچے کی شہریت کا فیصلہ ہوگیا ؟


اسلام آباد(نیو زڈیسک)پاکستانی آل راؤنڈر کرکٹر شعیب ملک اور بھارتی ٹینس کھلاڑی ثانیہ مرزا کے ہاں بیٹے کی پیدائش کے بعد اس کی شہریت کا معاملہ سوشل میڈیا پر معمہ بن گیا۔شعیب ملک نے 30 اکتوبر 2018 کو ٹوئٹر پر اپنے گھر میں ننھے مہمان کی آمد کا اعلان کیا، ساتھ ساتھ یہ بھی بتایا کہ ان کی اہلیہ اس وقت بالکل ٹھیک ہیں۔شعیب نے ساتھیوں اور فینز کی نیک تمناؤں کا شکریہ بھی ادا کیا۔اس کے بعد سے سوشل میڈیا پر اس بحث کا آغاز ہوگیا کہ شعیب ملک کے بیٹے کے شہریت پاکستان ہے یا وہ بھارتی ہوگا۔کستوری شنکر نامی صارف نے ٹوئٹر پر ٹویٹ کی کے ثانیہ مرزا کے بیٹے کی پیدائش بھارت میں ہوئی ہے تو اس لیے وہ یہیں کا شہری ہوگا۔جس کے بعد ایسی کئی ٹویٹس سامنے آئیں جن میں دعویٰ کیا گیا کہ یہ بچہ بھارت میں ہی پیدا ہوا ہے۔ایک صارف نے اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ شعیب ملک خود چاہتے تھے کہ ان کی اولاد کی پیدائش بھارت میں ہو تاکہ اس کی شہریت وہیں کی ہو۔ربینہ جان نامی صارف نے بھی یہی لکھا کہ شعیب ملک کی خواہش تھی کہ ان کی اولاد کی شہریت بھارتی ہو۔شعیب ملک کی اپنے بیٹے کی پیدائش کے بعد ہسپتال کی ایک جف ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہوئی، جس میں ثانیہ مرزا کی بہن بھی موجود ہیں۔یاد رہے کہ ثانیہ مرزا سے بھی ایک انٹرویو میں ان کے بچے کی شہریت کے حوالے سے سوال کیا گیا تھا۔اس پر انہوں نے کہا تھا کہ ‘ہم اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ ہیں، مگر ہم شہریت کے معاملے کو سنجیدگی سے نہیں لیتے، یہ شہ سرخیوں میں تو اچھا لگ سکتا ہے، مگر گھر میں ہمارے لیے اس کی کوئی اہمیت نہیں۔

رات گئے وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف کی ہنگامی ملاقات۔۔ اہم ترین فیصلہ ہو گیا


اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) وزیر اعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہنگامی ملاقات، ملاقات کے دوران ملک کی موجودہ سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، ملاقات وزیر اعظم ہاؤس میں ہوئی۔ تفصیلات کے مطابق وزہراعظم عمران خان اور آرمی چیرف جنرل قمر باجوہ کے درمیان ہنگامی ملاقات ہوئی ہے۔ وزیراعظم ہاوس سے

موصول ہونے والی تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کی ملاقات وزیراعظم ہاوس میں ہوئی۔ملاقات کے دوران ملک کی موجودہ سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں بدھ کے روز آسیہ بی بی کیس کے فیصلے کے بعد پیدا ہونے والی کشیدہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان نے قومی سے ہنگامی خطاب بھی کیا۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب کے دوران کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پرجوزبان استعمال ہوئی اس پر آپ سے بات کرنے پرمجبورہوں۔جوججزنے فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق دیا ہے۔ ہم نے پہلی بار او آئی سی میں معاملہ اٹھایا اور یو این میں معاملہ اٹھایا۔ کسی کاایمان اس وقت تک مکمل نہیں ہوتاجب تک نبی کریم ﷺسےعشق نہیں کرتا۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ والہٰ وسلم کی شان میں گستاخی آزادی رائے نہیں۔ ہم نبی کریم ﷺکی شان میں کسی قسم کی گستاخی نہیں دیکھ سکتے۔ تاہم آسیہ بی بی کیس پر ججز نے آئین و قانون کے مطابق فیصلہ دیا ہے۔پاکستان کا آئین و قانون قرآن کے تابع ہیں۔ سپریم کورٹ کے فیصلے پرچھوٹے سے طبقے نے ردعمل دیا ہے۔ مدینہ کی ریاست کے

بعد پاکستان واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا۔ اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں کوئی قانون اسلام کے منافی نہیں ہوسکتا۔ بعض لوگ فوج اور جرنیلوں کوکہہ رہے ہیں کہ آرمی چیف کیخلاف بغاوت کریں۔ فیصلے کے بعد بعض لوگ کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ کےججرواجب القتل ہیں۔ جوزبان استعمال کی گئی کون سی حکومت چل سکتی ہے۔ اس

معاملے میں حکومت کا کیا قصورہے۔ سپریم کورٹ کے ججوں نے جو فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق ہے۔ یہ لوگ کوئی اسلام کی خدمت نہیں کررہے،یہ ملک دشمن عناصراس قسم کی باتیں کرتے ہیں۔ اپنی سیاست اور ووٹ بینک کے چکر میں ملک کے خلاف کام نہ کریں۔ ملک دشمن عناصرایسی باتیں کرتے ہیں کہ ججوں کوقتل کردوفوج میں بغاوت ہوجائے۔ ریاست کومجبور نہ کریں کہ وہ ایکشن لینے پر مجبور ہو جائے، ریاست لوگوں کی جان ومال کی حفاظت کرے گی، ہم کوئی توڑ پھوڑ نہیں ہونے دیں گے، امن و امان کی صورتحال کسی صورت خراب نہیں ہونے دیں گے۔

آسیہ بی بی کی رہائی کے بعد مذہبی جماعتوں نے انتہائی اہم اعلان کردیا


لاہور/اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سپریم کورٹ کی جانب سے توہین مذہب کیس کا سامنا کرنے والی آسیہ بی بی کی رہائی کے حکم کے بعد لاہور سمیت ملک کے دیگر حصوں میں مذہبی جماعتوں نے احتجاج شروع کردیا ہے. واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے قبل ہی تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) نے اپنے کارکنان کو جمع ہونے کی کال دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر آسیہ بی بی کو رہا کیا جائے تو کے خلاف احتجاج ریکارڈ کروائیں.عدالت عظمیٰ کے فیصلے کے بعد مذہبی جماعت کے کارکنان اسلام آباد اور راولپنڈی کے سنگم فیض آباد پر جمع ہونا شروع ہوگئے اور وہاں روڈ کو بلاک کردیا، علاوہ ازیں اسلام آباد میں آبپارہ کے علاقے کو بھی بند کروادیا گیا.ایک روز قبل علامہ خادم حسین رضوی کی سربراہی میں ٹی ایل پی کے کارکنان نے بھی پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج کیا تھا، جبکہ داتا دربار کے باہر بھی دھرنا دیا تھا.تحریک لبیک پاکستان نے لاہور‘ شیخوپورہ اور قصور شہر میں احتجاج کرتے ہوئے ان کے مختلف علاقوں کو بند کردیا. اطلاعات کے مطابق لاہور میں اسمبلی ہال چوک‘داتا دربار‘بابوصابو‘چونگی امرسدھو اور دیگر علاقوں میں کشیدیدگی پائی جارہی ہے . ادھر کراچی میں بھی مظاہرین نے سہراب گوٹھ کے علاقے میں سپر ہائی وے کو بند کردیا جس کے ساتھ ہی کراچی سے حیدرآباد جانے والی ٹریفک متاثر ہوگئی.قانونی ماہر ریما عمر نے سپریم کورٹ کی جانب سے دیے گئے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے بتایا کہ آسیہ بی بی کی بریت چار وجوہات پر ہوئی ہے ایف آئی آر درج کرنے میں دیر جس کے بارے میں کوئی وضاحت نہیں‘ گواہان کے بیانات میں عدم مطابقت‘ آسیہ بی بی کے غیر عدالتی اعتراف جرم پر انحصار اور عدالتوں کی جانب سے آسیہ بی بی پر لگائے جانے والے الزامات کی صحت اور ان کے ماحول کے تناظر کو نظر انداز کرنا شامل ہیں .چیف جسٹس ثاقب نثار اور جسٹس آصف سعید کھوسہ کے ہاتھوں تحریر کیا گیا سپریم کورٹ کا فیصلہ ان کی ویب سائٹ پر جاری کر دیا گیا ہے . سوشل میڈیا پر اس فیصلے کے بعد انتہائی متضاد ردِ عمل دیکھنے میں آ رہا ہے . ایک طرف تو لوگ اس فیصلے کو سراہتے ہوئے اسے قانون اور انصاف کی فتح قرار دے رہے ہیں، تو دوسری جانب انتہائی شدید اور دھمکی آمیز پیغامات بھی آ رہے ہیں جن میں ججوں کے خلاف سخت زبان استعمال کی جا رہی ہے .مقامی نشریاتی ادارے نے بتایا ہے کہ آسیہ بی بی کے حق میں فیصلے کے خلاف مذہبی تنظیموں کی طرف سے ممکنہ احتجاج کے پیش نظر اسلام آباد اور لاہور کے بعض سکولوں میں کلاسیں منسوخ کر کے والدین سے کہا جا رہا ہے کہ وہ بچوں کو گھر لے جائیں .دریں اثناءمحکمہ داخلہ پنجاب نے صوبے بھر میں دفعہ 144 کے نفاذ کا اعلان کر دیا ہے. آسیہ مسیح کی رہائی کے بعد ملک بھر میں سیکورٹی ہائی الرٹ ہے جب کہ محکمہ داخلہ پنجاب نے صوبے بھر میں دفعہ 144 کے نفاذ کا اعلان کر دیا جس کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے.محکمہ داخلہ پنجاب کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق دفعہ 144 میں 31 اکتوبر سے 10 نومبر تک جاری رہے گی جس کے تحت تمام عوامی اجتماعات اور 5 سے زائد افراد کے جمع ہونے پر پابندی ہوگی، اس دوران اسلحہ کی نمائش اور لاوڈ اسپیکر کے استعمال پر بھی پابندی ہوگی۔

خطاب کے فوراً بعدوزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف کی ہنگامی ملاقات۔۔ اہم ترین فیصلہ ہو گیا


اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) وزیر اعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہنگامی ملاقات، ملاقات کے دوران ملک کی موجودہ سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، ملاقات وزیر اعظم ہاؤس میں ہوئی۔ تفصیلات کے مطابق وزہراعظم عمران خان اور آرمی چیرف جنرل قمر باجوہ کے درمیان ہنگامی ملاقات ہوئی ہے۔ وزیراعظم ہاوس سے

موصول ہونے والی تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر باجوہ کی ملاقات وزیراعظم ہاوس میں ہوئی۔ملاقات کے دوران ملک کی موجودہ سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں بدھ کے روز آسیہ بی بی کیس کے فیصلے کے بعد پیدا ہونے والی کشیدہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان نے قومی سے ہنگامی خطاب بھی کیا۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب کے دوران کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پرجوزبان استعمال ہوئی اس پر آپ سے بات کرنے پرمجبورہوں۔جوججزنے فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق دیا ہے۔ ہم نے پہلی بار او آئی سی میں معاملہ اٹھایا اور یو این میں معاملہ اٹھایا۔ کسی کاایمان اس وقت تک مکمل نہیں ہوتاجب تک نبی کریم ﷺسےعشق نہیں کرتا۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ والہٰ وسلم کی شان میں گستاخی آزادی رائے نہیں۔ ہم نبی کریم ﷺکی شان میں کسی قسم کی گستاخی نہیں دیکھ سکتے۔ تاہم آسیہ بی بی کیس پر ججز نے آئین و قانون کے مطابق فیصلہ دیا ہے۔پاکستان کا آئین و قانون قرآن کے تابع ہیں۔ سپریم کورٹ کے فیصلے پرچھوٹے سے طبقے نے ردعمل دیا ہے۔ مدینہ کی ریاست کے بعد پاکستان واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا۔ اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں کوئی

قانون اسلام کے منافی نہیں ہوسکتا۔ بعض لوگ فوج اور جرنیلوں کوکہہ رہے ہیں کہ آرمی چیف کیخلاف بغاوت کریں۔ فیصلے کے بعد بعض لوگ کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ کےججرواجب القتل ہیں۔ جوزبان استعمال کی گئی کون سی حکومت چل سکتی ہے۔ اس معاملے میں حکومت کا کیا قصورہے۔ سپریم کورٹ کے ججوں نے جو فیصلہ دیا وہ آئین کے مطابق ہے۔ یہ لوگ کوئی اسلام کی خدمت نہیں کررہے،یہ ملک دشمن عناصراس قسم کی باتیں کرتے ہیں۔ اپنی سیاست اور ووٹ بینک کے چکر میں ملک کے خلاف کام نہ کریں۔ ملک دشمن عناصرایسی باتیں کرتے ہیں کہ ججوں کوقتل کردوفوج میں بغاوت ہوجائے۔ ریاست کومجبور نہ کریں کہ وہ ایکشن لینے پر مجبور ہو جائے، ریاست لوگوں کی جان ومال کی حفاظت کرے گی، ہم کوئی توڑ پھوڑ نہیں ہونے دیں گے، امن و امان کی صورتحال کسی صورت خراب نہیں ہونے دیں گے۔

فوجی ہیلی کاپٹرگر کر تباہ، پائلٹ سمیت25 اعلیٰ افسران جاں بحق


اسلام آباد(نیو زڈیسک)افغانستان کے مغربی صوبے میں فوجی ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں پائلٹ سمیت 25 افراد ہلاک ہوگئے۔تفصیلات کے مطابق افغانستان کے مغربی صوبے فرح میں فوجی ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں دو پائلٹ، 25 اعلیٰ فوجی افسران اور صوبائی حکومت کے اعلیٰ عہدیداران موقع پر ہی ہلاک ہوگئے، افغان حکام

کی جانب سے حادثے میں ہلاکتوں کی تصدیق کردی گئی ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ افغانستان کے فوجی ہیلی کاپٹر میں مغربی زون کے ڈپٹی کمانڈر بریگیڈئر نعمت اللہ خلیل، صوبہ فرح کی کونسل کے سربراہ فرید بختاور اور کونسل ممبر جمیلہ امینی بھی ہیلی کاپٹر میں موجود تھی۔صوبائی گورنر کے ترجمان ناصر مہری کے مطابق ہیلی کاپٹر نے افغانستان کے پہاڑی علاقے انار دارا ڈسٹرکٹ سے اڑان بھرنے کے کچھ دیر بعد ہی صبح 9 بج کر 10 منٹ پر حادثے کا شکار ہوا تھا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ افغان طالبان کی جانب سے فوجی ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے کا دعویٰ کیا گیا ہے جبکہ افغان حکام کا کہنا ہے ہیلی کاپٹر خراب موسم کے باعث حادثے کا شکار ہوا تھا۔یاد رہے کہ کچھ دیر قبل افغانستان کے دارالحکومت کابل کی پل چرخی جیل کے مرکزی دروازے کے قریب جیل ملازمین کی بس کو خودکش دھماکے کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے نتیجے میں 7 افراد ہلاک اور تین افراد کے زخمی ہوئے تھے۔افغان میڈیا کا کہنا تھا کہ جیل ملازمین کی بس کو اس وقت دھماکے کا نشانہ بنایا گیا جب وہ مرکزی دروازے پر سیکیورٹی کلئیرنس کے لیے رکی تھی۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ دھماکے کے وقت متاثرہ گاڑی میں خواتین افسران سوار تھیں۔