شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

مائیک پومپیو نے عمران خان سے ایسا کیا مطالبہ کیا تھا جس سے عمران خان نے صاف صاف انکار کر دیا ۔۔۔ امریکی میڈیا نے حیران کن انکشاف کرڈالا


واشنگٹن(ویب ڈیسک ) امریکا کی قومی سلامتی کے مشر جان بلٹن نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے پاکستان کی عسکری امداد روکنے کا فصلہ معمولی نہیں تھا جس کاٹرمپ انتظامیہ کو بھرپور ادراک تھا کہ ایک جوہری قوت کے حامل ملک کے خلاف ایکشن لنےا سے ممکنہ طور پر کاک نتائج مرتب ہو سکتےہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکی تھنک ٹینک۔

فڈکرلسٹ سوسائٹی فار لا اینڈ پبلک پالیکہ اسٹڈ یز کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امریکا، پاکستان سے دہشت گردی خلاف جنگ مںئ بھرپور تعاون چاہتا ہے حققتی تو یہ ہے کہ امریکا کے لےا یہ انتہائی اہمتس کا حامل ہے۔انہوں نے کہا کہ مرلے آنے سے پہلے، ٹرمپ انتظامہہ نے پاکستان کی عسکری امداد کے بڑے حصے کو ختم کرنے کا فصلہ نہںن کاڈ تھا۔ان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ انتظامہہ کو پورا ادراک تھا کہ پاکستان ایک اییمی طاقت ہے اور یہ خدشہ تھا کہ حکومت دہشت گردوں کے ہاتھوں مں یرغمال نہ بن جائے اور وہ جوہری ہتیھاروں پر کنٹرول حاصل نہ کرلںہ۔امرییش قومی سلامتی کے مشر جان بلٹن نے بتایا کہ دہشت گردی پورے خطے کے لےس سنگن مسئلہ ہے لکنہ پاکستان کو دہشت گردوں کے خلاف بھرپور کارروائی کرنے کی ضرورت ہے کورنکہ یہ دہشت گردی خود پاکستان کے لےش خطرہ ہے۔انہوں نے زور دیا کہ امریکا کے لے دہشت گردی انتہائی اہم نوعت کا مسئلہ ہے اور اسی وجہ سے وہ چاہتے ہںڈ کہ پاکستان کی نئی حکومت اس مسئلے پر توجہ دے۔جان بلٹن نے کہا کہ سکرییٹری مائک پومپوج پاکستان کے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کرنا

چاہتے تھے لکن نہںر کرسکے۔جس پر صحافوہں نے انہںپ یاد دلایا کہ عمران خان نے ہی امرییر اور پاکستانی وفد کے اجلاس کی صدارت کی تھی تاہم جان بلٹن اپنی تصیح نہں کر سکے۔بعدازاں بعض شرکاء نے سمجھا شاید مائکا پومپور وزیراعظم سے علحد گی مںں ملاقات کرنا چاہتے تھے





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس