شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

ڈنمارک میں خواتین کے نقاب کرنے پر پابندی کے خلاف ماڈلز کا انوکھا احتجاج


کوپن ہیگن (نیوزڈیسک) : ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن میں منعقدہ دو روزہ فیشن ویک میں خواتین کے برقع اور نقاب پر لگائی جانے والی پابندی کے خلاف منفرد انداز میں احتجاج کیا گیا تھا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ کوپن ہیگن فیشن ویک میں ایک فیشن شو سجایا گیا۔جس میں ماڈلز نے منفرد اسٹائل پیش کیے۔اس فیشن یک میں متعدد ڈیزائنرز نے اپنی

اپنی کلیکشنز کی تشہیر کی تا ہم اس فیشن کی ویک کی ایک خاص بات یہ تھی کہ اس میں ایرانی ڈیزائنر اعتمادی نے اپنے برانڈ ” ایم یو ایف 10″ کے تحت تمام ماڈلز کو برقعے اور نقاب میں پیش کیا۔ برقع اور نقاب میں ملبوس ماڈلز نے نہایت اعتماد کے ساتھ ریمپ پر واک کی۔اس موقع پر جہاں خواتین نے نقاب اور برقع میں ماڈلنگ کی وہیں ان کے ساتھ مرد بھی پولیس اہلکاروں کی وردی میں ملبوس تھے۔ جنھیں خواتین کے حقوق پر مسلط ہوتا دکھایا گیا۔ ماڈلز نے انوکھا احتجاج کرتے ہوئے خواتین کے حقوق کی پامالی کے حوالے سے آواز بلند کی۔ جب کہ ڈیزائیر اعتمادی کا اس متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ان کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ خواتین کی آزادی اور ان کے خیالات میں معاونت کریں۔اور حکام نے خواتین کے نقاب کرنے پر پابندی لگا کر ان کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا ہے۔واضح رہے ڈنمارک میں مسلم خواتین کے نقاب اور برقع کرنے پر پابندی عائدکی گئی تھی۔ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ ڈنمارک میں نقاب پر پابندی کے بعد پہلی سزا میں مسلم خاتون کو بھاری جرمانہ کی سزا سنا دی گئی ۔ ڈنمارک میں نقاب پہننے پر پابندی کے قانون کی منظوری کے بعد پہلی بار اس قانون

کے تحت ایک خاتون کو عوامی مقام میں نقاب پہننے پر جرمانے کی سزا سنائی گئی ۔ واقعہ کوپن ہیگن سے 25 کلومیٹر دور ہورشوم قصبے کے ایک شاپنگ مال میں اس وقت پیش آیا جب 28 سالہ نقاب پوش خاتون کا ایک دوسری خاتون سے جھگڑا شروع ہو گیا جو ان کا نقاب اتارنے کی کوشش کر رہی تھی۔۔پولیس نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جھگڑا شروع ہونے کے بعد انھیں وہاں بلایا گیا اور دونوں عورتوں پر جرمانے عائد کیے گئے ۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس