شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

’’ مجھے پاکستان آنے کی اجازت دیں امی۔۔۔۔‘‘ نواز شریف کا ابو ظہبی پہنچتے ہی اپنی والدہ سے رابطہ، بیگم شمیم اختر نے کیا حکم دیا؟


ابو ظہبی (ویب ڈیسک) سابق وزیر اعظم نواز شریف نے اپنی والدہ سے ٹیلی فون پر رابطہ کرکے پاکستان آنے کی اجازت طلب کی ہے۔نجی ٹی وی چینل نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ نواز شریف اور مریم نواز لندن سے ابوظہبی پہنچ چکے ہیں۔ ایئر پورٹ کے لاؤنج میں،نواز شریف نے اپنی والدہ سے فون پر رابطہ کیا اور ان کی خیریت دریافت کی۔

سابق وزیر اعظم نے اپنی والدہ کو واپسی کے پلان کے حوالے سے بھی آگاہ کیا اور پاکستان واپس آنے کی اجازت طلب کی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی والدہ نے انہیں پاکستان آنے کی اجازت دے دی ہے۔خیال رہے کہ نواز شریف کو اپنی والدہ اور مرحوم والد کے انتہائی قریب سمجھا جاتا ہے، سعودی عرب میں جلا وطنی کے دوران جب بھی شریف خاندان عمرہ یا حج کیلئے جاتا تو نواز شریف خود اپنے والد کی وہیل چیئر چلایا کرتے تھے ۔ سپریم کورٹ سے نا اہلی کے بعد جب نواز شریف بذریعہ جی ٹی روڈ لاہور پہنچے تو جیسے ہی اپنی والدہ کو دیکھا تو آبدیدہ ہوگئے تھے۔ جبکہ دوسری جانب سابق وزیراعظم نواز شریف کی والدہ شمیم اختر کا کہنا ہے کہ اگر ان کے بچوں کو جیل بھیجا گیا تو وہ بھی ان کے ساتھ جیل جائیں گی۔ اپنے ویڈیو بیان میں نواز شریف کی والدہ نے کہا کہ پاکستان کا بیٹا میرا بیٹا ہے جس نے اسے روشن بنایا، کل وہ واپس آرہا ہے تاکہ میں پھر سے اس کا ماتھا چوم سکوں۔شمیم اختر نے کہا کہ میرے بیٹے نواز شریف، مریم اور صفدر کے خلاف ناحق فیصلہ آیا، میں ان تینوں کو جیل جانے نہیں دوں گی،اگر جیل بھیجا گیا تو میں بھی ان کے ساتھ جاؤں گی۔سابق

وزیراعظم کی والدہ نے کہا کہ ان کا ایمان ہے یہ تینوں بے گناہ ہے اور اللہ تعالیٰ ان کی حفاظت کرے گا، ظالموں کو خدا کے خوف اوراس کی پکڑ سے ڈرنا چاہیے۔نواز شریف کی والدہ کا مزید کہنا تھا کہ عدالت نے خود فیصلے میں لکھا کہ کرپشن ثابت نہیں ہوئی تو پھر میرے بچوں کو سزا کس بات کی دی جارہی ہے، صرف ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگانے اور ملک سے وفاداری کی سزا دی جارہی ہے۔ سابق وزیراعظم نواز شریف نے کل لندن سے لاہور آنے کا اعلان کر رکھا ہے اور اس سے قبل نیب نے ان کی گرفتاری کے لئے تمام انتظامات بھی مکمل کرلیے ہیں۔نواز شریف اور مریم کی گرفتاری کیلئے 16 رکنی ٹیم تشکیل دی گئی ہے جب کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب نے دو ہیلی کاپٹرز کا انتظام بھی کر لیا ہے۔ایک ہیلی کاپٹر لاہور اور دوسرا اسلام آباد ایئرپورٹ پر کھڑا کیا جائے گا، کسی بھی ایئرپورٹ پر اترتے ہی نواز شریف اور مریم نواز کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے اڈیالہ جیل منتقل کیا جائے گا۔خیال رہے احتساب عدالت نے 6 جولائی کو ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو مجموعی طور پر 11، مریم نواز کو 8 اور کیپٹن (ریٹائرڈ) صفدر کو ایک برس قید کی سزائیں سنائی تھیں۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس