شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

سابق وزیراعظم کو بڑاجھٹکا،اہم کیس میں وکیل نے ساتھ چھو ڑ دیا


اسلام آباد(ویب ڈیسک)احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نیب ریفرنسز سے علیحدہ ہوگئےاور عدالت سےاپنا و کالت نامہ واپس لے لیا۔پیر کو اسلام آباد کی احتساب عدالت میں شریف خاندان کیخلاف العزیزیہ اسٹیل ملزریفرنس کی سماعت کے دوران خواجہ حارث نے عدالت سے اپنا وکالت نامہ واپس لینے کی درخواست کی۔خواجہ

حارث نے عدالت کو تحریری طورپرآگاہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کیخلاف تینوں نیب ریفرنسز کا ٹرائل 6 ہفتوں میں مکمل کرنے سے متعلق ان کے مؤقف کو تسلیم نہیں کیا اور یہ ڈکٹیشن بھی دی کہ ایک ماہ میں ریفرنسز کا فیصلہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ عدالتی اوقات کے بعد بھی کام کرنےکی ڈکٹیشن دی گئی،ہفتے اوراتوارکو بھی عدالت لگانے کا کہا گیا،ایسے حالات میں وہ کام جاری نہیں رکھ سکتے،اس دباؤ کے ساتھ عدالت کیس کے ساتھ انصاف نہیں کرسکتی اور جلد بازی میں انصاف بھی نہیں دے سکتی۔خواجہ حارث کی جانب سے وکالت نامہ واپس لینے کے بعد احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نوازشریف کو روسٹرم پربلایا اور استفسار کیا کہ آپ کے وکیل نے وکالت نامہ واپس لے لیا ہے، اب آپ کس کو وکیل رکھیں گے یا خواجہ حارث کو ہی منا لیں گے۔سابق وزیراعظم میاں نوازشریف نے کہا کہ اس حوالے سے مشاورت کے بعد ہی فیصلہ کریں گے جس پر معزز جج محمد بشیر نے کہا کہ آپ کے پاس ایک دن ہے آپ سوچ لیں۔ بعدازاں احتساب عدالت نے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت کل تک ملتوی کردی۔خیال رہے کہ خواجہ حارث

تقریباََ 9 ماہ کے بعد مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کے نیب ریفرنسز سے علیحدہ ہوئے ہیں۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس