شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

(ن) لیگ کو شرمناک شکست سے دوچار کرنے والے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کا ماضی میں نواز شریف کے ساتھ کیا تعلق رہا ہے ؟ دنگ کر ڈالنے والا انکشاف


لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان کی پارلیمان کے ایوان بالا یعنی سینیٹ کے نو منتخب چیئرمین بنیادی طور پر بزنس مین ہیں اور ان کا کاروبار بلوچستان سے دبئی تک پھیلا ہوا ہے ۔صادق سنجرانی کا تعلق بلوچستان کے خان بہادر فیملی کے سنجرانی قبیلے سے ہے۔ وہ ملک کے دو وزرائے اعظم نواز شریف اور یوسف رضا گیلانی کےکوآرڈینیٹر کے فرائض بھی سر انجام

دے چکے ہیں۔اس لحاظ سے ان کے مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی سے بھی قریبی تعلقات رہ چکے ہیں۔ صادق سنجرانی نے یونیورسٹی آف بلوچستان سے بیچلرز ڈگری حاصل کی ہے۔ ان کے کزن عاطف سنجرانی 1997 سے 1999 تک رکن قومی اسمبلی رہ چکے ہیں جبکہ ایک اور کزن میرامان اللہ سنجرانی چاغی سے رکن صوبائی اسمبلی ہیں۔صادق سنجرانی ہائی پروفائل حکومتی عہدوں پرکام کرچکے ہیں۔ 1999 میں وزیر اعظم سیکرٹریٹ کے شکایت سیل کے کوآرڈینیٹر رہے اس کے علاوہ2009 میں وزیراعظم معائنہ کمیشن کے رکن اور پھر چیف کوآرڈینیٹر، مشیر کے طورپر بھی کام کیا۔ صادق سنجرانی’’ سنجران مائننگ کمپنی‘‘ کے چیف ایگزیکٹوبھی ہیں اور نیشنل انڈسٹریل پارکس ڈویلپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی اور حب پاور کمپنی (حبکو) میں ڈائریکٹر ہیومین ریسورس کے طور پر بھی کام کر رہے ہیں صادق سنجرانی کے والد خان محمد آصف سنجرانی ضلع کونسل چاغی کے رکن ہیں جبکہ ایک بھائی رازق سنجرانی سینڈیک میں ڈائریکٹر جبکہ دوسرے بھائی میر محمد سنجرانی بلوچستان کے سابق وزیر اعلیٰ ثنا اللہ زہری کے مشیر رہ چکے ہیں۔ صادق سنجرانی کا عوامی سیاست سے

کبھی کوئی تعلق نہیں رہا بلکہ ان کی پہچان ایک کاروباری شخصیت کی ہے۔ ان کا کاروبار بلوچستان کے علاوہ دبئی میں بھی پھیلا ہوا ہے۔ وہ 1998 میں میاں نواز شریف کے کوآرڈینیٹر رہے بعد میں دس سال انھوں نے حکومت سے کنارہ کشی اختیار کی۔ جب 2008 میں پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت بنی تو انھیں یوسف رضا گیلانی کا کوآرڈینیٹر مقرر کیا گیا اور وہ پانچ سال تک اسی منصب پر فائز رہے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس