کھٹے میٹھے کینو وہ فواہد جنہیں جان کر آبھی استفادہ حاصل کریں گے


اسلام آ باد(نیو زڈیسک)موسمی پھلوں میں قدرت کی طرف سے بے شمار فوائد موجود ہوتے ہیں، جنہیں کھانا فرحت بخش بھی ہوتا ہے۔کینو کا شمار بھی موسم سرما کے ایسے ہی پھلوں میں ہوتا ہے، جس کا جوس ہو یا پھانکیں، حتیٰ کہ چھلکا بھی صحت کے لیے بہت مفید و موثر ثابت ہوتا ہے۔کینو میں قدرتی طور پر وافر مقدار میں وٹامن سی، کاربوہائیڈریٹس، فائبر،

وٹامن اے، تھائیمن، فاسفورس، فولیٹ اور پوٹاشیئم شامل ہوتا ہے جو انسان کو مختلف جراثیم اور کمزوریوں سے محفوظ رکھتے ہیں۔کینو نہ صرف معدہ، قلب، جلد اور نظام ہضم کی بیماریوں سے تحفظ فراہم کرتا ہے، بلکہ اس میں موجود وٹامن سی خون کو شریانوں کو سخت ہونے سے روکتا ہے جبکہ یہ بلڈ پریشر والے مریضوں کے لیے بھی بے حد موثر ہے۔کینو آنکھوں کی بینائی تیز کرنے میں کلیدی کردار ادا کرتا ہے، اس میں موجود وٹامن اے اور پوٹاشیئم آنکھوں کی روشنی تیز کرتے ہیں اور آنکھوں کے نیچے گہرے حلقے ختم کرتے ہیں۔کینو کھانے سے معدے میں تیزابیت، قبض اور نظام ہضم کی شکایات بھی دور ہوجاتی ہیں۔ کینو کا جوس ڈینگی کے مریضوں کے لیے بھی مددگار ثابت ہوتا ہے اور اس سے جسم کی نقاہت دور ہوجاتی ہے۔کینو جلد کو پرکشش بنانے کے ساتھ ساتھ اس کی خوبصورتی میں اضافہ کرتا ہے اور حسن برقرار رکھنے میں بھی مدد دیتا ہے۔ماہرین جلد کہتے ہیں کہ اگر کینو کے چھلکوں کو سکھانے کے بعد انہیں پیس کر اس میں دودھ اور شہد ملا کر پیسٹ کی صورت میں جلد پر لگایا جائے تو اس سے داغ دھبے دور ہوجاتے ہیں۔

وگرا کی جانب سے مٹی کا تیل 12 روپے 74 پیسے فی لٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی گئی ہے


اسلام آباد (نیوزڈیسک) اوگرا کی جانب سے مٹی کا تیل 12 روپے 74 پیسے فی لٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ لائٹ ڈیزل 11 روپے 72 پیسے فی لٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ پٹرول کی قیمت میں 2 روپے 98 پیسے فی لٹر اضافے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 10 روپے 25 پیسے فی لٹر اضافے کی

سفارش کی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق حکومت نے ایک بار پھر عوام پر پٹرول بم گرانے کی تیاری کر لی ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں پھر اضافے کا امکان ہے۔ اوگرا نے سمری وزارت خزانہ کو ارسال کر دی۔ لائٹ ڈیزل 11 روپے 72 پیسے فی لٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ پٹرول کی قیمت میں 2 روپے 98 پیسے فی لٹر اضافے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 10 روپے 25 پیسے فی لٹر اضافے کی سفارش کی گئی ہے۔

سردرد کو روزمرہ زندگی کا حصہ سمجھا جاتا ہے اور اس کے علاج کے لیے درد کش ادویات پر ہی اکتفا کیا جاتا ہے لیکن


اسلام آباد (نیو زڈیسک )سردرد کو روزمرہ زندگی کا حصہ سمجھا جاتا ہے اور اس کے علاج کے لیے درد کش ادویات پر ہی اکتفا کیا جاتا ہے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ سر کے درد پر ہمیں کب تشویش ہونی چاہیے اور اسے کب سنجیدگی سے لینا ہے۔ اوورلیڈ پارک، کنساس کے ڈاکٹر مائیکل مونگر کا کہنا ہے کہ تین ہفتوں کے دوران ہر ہفتے دو سے زائد مرتبہ سردرد

کی صورت میں اُسے سنجیدگی سے لینا چاہیے۔ تاہم اس کا مطلب یہ ہرگز نہیں کہ متاثرہ شخص بہت زیادہ پریشان ہو اور یہ کسی طبی مسئلے کی جانب اشارہ ہو۔ڈاکٹر مونگر کا کہنا ہے کہ میڈیکل چیک اپ سے ڈاکٹرز کو سر درد کی تہہ تک پہنچنے میں مدد ملتی ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ سر کے درد کو بدترین تکلیف سمجھا جاتا ہےجو بہت کم کیسز میں دماغ میں رسولی کی علامت ہوتا ہے۔ڈاکٹر مونگر کا کہنا ہے کہ لوگوں کو اس پر غیر ضروری ردعمل نہیں دینا چاہیے لیکن اسے نظر انداز بھی نہیں کرنا چاہیے۔دوسری جانب بالٹی مور میں جان ہوپکنز میڈیسن کے ڈائریکٹر ہیڈک سینٹر نعمان طارق نے خبردار کیا ہے کہ مریض کو طویل عرصے تک درد کُش ادویات نہیں لینی چاہئیں کیونکہ ان ادویات کا زیادہ استعمال سر درد سے زیادہ نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔ایک تحقیق کے مطابق درد کُش ادویات کا زیادہ استعمال السر کا باعث بن سکتا ہے جب کہ یہ گردوں اور جگر کو بھی نقصان پہنچا سکتا ہے۔عالمی ادارہ صحت کے اعداد و شمار کے مطابق دنیا کی نصف بالغ آبادی کو ذہنی تناؤ اور درد شقیقہ (Migraine) سمیت مختلف وجوہات کے باعث سال میں کم از کم ایک بار ضرور سر درد ہوتا ہے۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر کوئی شخص اکثر سر درد کا شکار رہے اور دردکُش دوا موثر نہ ہو تو اُسے اپنے معالج سے مشورہ لینا چاہیے۔

سپریم کورٹ نے اسٹنٹ کی تیاری کیلئے سائنسدان ثمر مبارک مند کو ساڑھے تین کروڑ روپے دینے پر نوٹس لے لیا


اسلام آباد(نیو زڈیسک ) سپریم کورٹ نے اسٹنٹ کی تیاری کیلئے سائنسدان ثمر مبارک مند کو ساڑھے تین کروڑ روپے دینے پر نوٹس لے لیا۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے دل کے عارضے کے مریضوں کے لیے ملکی سطح پر اسٹنٹ کی تیاری کے لیے ساڑھے تین کروڑ یعنی 35 ملین روپے کی رقم دئیے جانے کے باوجود اسٹنٹ نا بنائے جانے کا نوٹس لیا

ہے۔جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ دل کے عارضے میں مبتلا افراد کے غیر معیاری اسٹنٹ سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کر رہا تھا کہ چیف جسٹس نے کہا کہ ہمارے سامنے رپورٹس آئی ہیں کہ 2004 میں مقامی سطح پر اسٹنٹ کی تیاری کے لیے ساڑھے تین کروڑ روپے کی خطیر رقم ڈاکٹر ثمر مبارک مند کو ادا کی گئی تھی تاہم رقم کی ادائیگی کے باوجود مقامی سطح پر اسٹنٹ نہیں بنے تو یہ رقم کہاں خرچ کی گئی ۔عدالت نے ڈاکٹر ثمر مبارک مند کو 3 فروری طلب کرتے ہوئے وفاقی حکومت کو بھی جواب داخل کرنے کی ہدایت کی ہے۔یاد رہے کہ 2 روز قبل چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے غیر معیاری اسٹنٹس سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت کی تھی۔ اس موقع پر چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے پاکستان میں بنائے گئے اسٹنٹ کی پاکستانی مارکیٹوں میں تین ماہ کے اندر دستیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے تکلیف ہو اور پاکستانی اسٹنٹ ڈالا جائے تو خوشی ہوگی۔

سابق ٹیسٹ کرکٹر سعید انور کے بہنوئی کو ان کے گھر سے اٹھائے جانے کی وجوہات سامنے آگئیں


لاہور(نیو زڈیسک)سابق ٹیسٹ کرکٹر سعید انور کے بہنوئی کو ان کے گھر سے اٹھائے جانے کی وجوہات سامنے آگئیں ۔تفصیلات کے مطابق سابق ٹیسٹ کرکٹر سعید انور کی بہن شکیلہ انور کے شوہر اسد منیر کو گھر سے اٹھایا کرلیا گیا جس کی درخواست انہوں نے تھانہ جنوبی چھانی میں جمع کرائی ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق درخواست کے متن میں بتایا گیا

کہ10روز قبل رات ڈیڑھ بجے سرکاری گاڑیوں میں سوار وردی اور سادہ لباس میں ملبوس نقاب پوش افراد ان کے گھر کی دیوار پھلانگ کر داخل ہوئے اور ان کے شوہر اسد منیر کو اٹھا کر لے گئے۔شکیلہ انور کا کہنا ہے کہ ان کا اپنے شوہر سے اب تک کوئی رابطہ نہیں ہوا۔دوسری جانب پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اسد منیر کو قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ریاست کیخلاف کام کرنے کے مبینہ الزامات پر اٹھایا گیا ہے اور خفیہ اداروں نے ان کے گھر سے لیپ ٹاپ اور کچھ دیگر ضروری مواد بھی قبضے میں لے کر اسد منیر کو نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔تھانا جنوبی چھانی کے سب انسپکٹر حبیب اللہ کے مطابق اسد منیر کے معاملے کی تفتیش کی جارہی ہے تاہم واقعے کا ابھی مقدمہ درج نہیں کیا گیا ہے۔

سپا ٹ فکسنگ کیس ، خالد لطیف پی سی بی نے بڑی خوشخبری سنادی مگر ساتھ ہی ۔۔۔!!!


لاہور(نیو زڈیسک)پی سی بی کے ایڈجو ڈیکیٹر نے پاکستان سپر لیگ کے دوسرے سیزن میں سپاٹ فکسنگ کے الزام میںکرکٹر خالد لطیف پر 5سالہ پابندی کی سزا برقراررکھنے کا حکم سنا نے کے ساتھ ساتھ10لاکھ روپے جرمانہ ختم کردیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ سال پاکستان سپر لیگ ٹو کے ساتھ ہی سپاٹ فکسنگ سکینڈل کا طوفان اٹھا تھا جس میں

شرجیل خان، خالد لطیف، شاہ زیب حسن، محمد عرفان اور ناصر جمشید کے نام سامنے آئے، پی سی بی نے کیس کی سماعت کیلئے 3رکنی اینٹی کرپشن ٹریبیونل تشکیل دیا جس نے خالد لطیف کو ڈھائی سال معطلی سمیت 5سال پابندی کی سزا سنائی۔اوپنر نے معطلی جبکہ پی سی بی نے کم سزا کیخلاف اپیل دائر کی تھی، ایڈجوڈیکیٹر جسٹس(ر) فقیر محمد کھوکھر نے اس کیس پر فیصلہ سناتے ہوئے خالد لطیف پر 5 سال کی پابندی برقراررکھی تاہم جرمانہ معاف کردیا۔یاد رہے کہ اسی کیس میں سہولت کاری کے ملزم ناصر جمشید کو تحقیقات میں عدم تعاون پر ایک سال پابندی کی سزا سنائی جاچکی،بکی کے رابطے کی اطلاع نہ کرنے پر محمد عرفان 6ماہ کیلئے معطل ہوئے تھے، شاہ زیب حسن کا کیس ابھی چل رہا ہے۔

خیبر پختونخوا کی پولیس نے میڈیکل کی طالبہ عاصمہ رانی کے قتل میں ملوث ملزم مجاہد آفریدی کی گرفتاری کے لیے


پشاور (نیو زڈیسک )خیبر پختونخوا کی پولیس نے میڈیکل کی طالبہ عاصمہ رانی کے قتل میں ملوث ملزم مجاہد آفریدی کی گرفتاری کے لیے سعودی انٹرپول سے مدد مانگ لی ہے۔خیبر پختونخوا پولیس کی درخواست پر وفاقی تحقیقاتی ادارے نے سعودی عرب میں انٹرپول سے عاصمہ رانی کے قتل میں ملوث ملزم مجاہد آفریدی کی گرفتاری میں تعاون کی اپیل کی ہے۔

ایف آئی اے کی جانب سے انٹرپول کو بھیجے گئے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ملزم مجاہد اللہ آفریدی کو ڈھونڈ کر گرفتار کرنے اور وطن واپس بھیجنے میں تعاون کیا جائے۔خیال رہے کہ چند روز قبل کوہاٹ میں تحریک انصاف کے ضلعی صدر آفتاب عالم کے بھتیجے نے رشتے سے انکار پر ایبٹ آباد میڈیکل کالج میں زیر تعلیم ایم بی بی ایس تھرڈ ایئر کی طالبہ عاصمہ رانی کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا۔صفیہ رانی نے آرمی چیف اور چیف جسٹس سے انصاف کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہماری گھر والوں کی جان کو خطرہ ہے اور پولیس نے ملزم کو اس لئے گرفتار نہیں کیا کیونکہ وہ امیر گھرانے سے تعلق رکھتا ہے۔

وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق ہر سال کی طرح اس سال بھی ملک بھر میں


اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق ہر سال کی طرح اس سال بھی ملک بھر میںچھٹی کا اعلان کیا ہے ۔ وفاقی حکومت نے 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر پر عام تعطیل کا اعلان کردیا ہے۔وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق ہر سال کی طرح اس سال بھی ملک

بھر میں 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر بھر پور طریقے سے منایا جائے گا۔ اس روز ملک بھر میں عام تعطیل ہوگی اور تمام سرکاری،نیم سرکاری اور نجی ادارے بند رہیں گے۔ہر سال کی طرح ملک بھر میں کشمیری عوام سے اظہاریکجہتی کے لئے صبح 10 بجے ایک منٹ کے لئے خاموشی اختیار کی جائے گی، آزاد کشمیر میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے انسانی ہاتھوں کی زنجیربنائی جائے گی۔ اس کے علاوہ تمام چھوٹے بڑے شہروں میں ریلیوں، مذاکروں اور کانفرنسس کا اہتمام کیا جائے گا جس میں مسئلہ کشمیر کی اہمیت اور کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی غرض و غایت اور بھارتی قابض فوج کے نہتے عوام پر ظلم وستم پر روشنی ڈالی جائے گی۔

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے راؤ انوار کی گرفتاری پر بے بسی کا اظہار کرتے ہوئے کوئی ڈیڈ لائن دینے سے انکار کردیا


کراچی(نیو زڈیسک ) آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے راؤ انوار کی گرفتاری پر بے بسی کا اظہار کرتے ہوئے کوئی ڈیڈ لائن دینے سے انکار کردیا۔سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کے باہر میڈیا نمائندوں نے آئی جی سندھ سے سوالات کیے اور ان سے راؤ انوار کی عدم گرفتاری کی وجہ جاننے کی کوشش کی۔صحافی کے سوال پر کہ راؤ انوار کال کررہے ہیں لیکن

گرفتار کیوں نہیں ہورہے؟ آئی جی سندھ نے جواب دیا کہ ہمارے پاس واٹس ایپ کال ٹریس کرنے کا کوئی نظام نہیں۔میڈیا نمائندوں نے آئی جی سندھ سے پوچھا کہ راؤ انوار ایئرپورٹ سے کس طرح نکل گئے؟ اے ڈی خواجہ نے کہا کہ اس کا جواب اسلام آباد ائیر پورٹ سے لیں۔اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے کیس درج کرلیا ہے، جو قانونی کارروائی کرنا تھی کرلی لیکن گرفتاری پر کوئی تاریخ نہیں دے سکتا۔یاد رہے کہ چیف جسٹس پاکستان نے آئی جی سندھ کی استدعا پر انہیں 27 جنوری کے روز راؤ انوار کی گرفتاری کےلیے تین روز کی مہلت دی تھی لیکن نقیب اللہ قتل کیس میں نامزد روپوش معطل ایس ایس پی راؤ انوار کو پولیس اب تک گرفتار نہیں کرسکی ہے۔

پولیس تھانہ صدر قصور نے پیرو والا روڈ کے نزدیک زینب کیس میں ڈی این اے ہونے پر خود کشی


قصور (نیو زڈیسک ) پولیس تھانہ صدر قصور نے پیرو والا روڈ کے نزدیک زینب کیس میں ڈی این اے ہونے پر خود کشی کرنیوالے بابا شبیر کی نعش پوسٹمارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کر دی جس کو مقامی قبرستان میں سپردِ خاک کر دیا گیا۔اہل محلہ نے بتایا کہ بابا شبیر غیر شادی شدہ اور تعویذ دھاگے کا کام کرتا تھا۔ اس کو متعدد مرتبہ پولیس نے زینب سمیت

مختلف بچیوں سے زیادتی کیسز کے حوالے سے حراست میں لیا تھا۔پولیس نے اس کا ڈی این اے بھی لیا تھا اور خود کشی کے دن اس کو دوبارہ طلب کر رکھا تھا جس کی وجہ سے وہ پریشان تھا۔ اس کے بھائیوں نے بتایا کہ ہمارے بھائی نے نامعلوم وجوہات پر خود کشی کی ہے۔ایس ایچ او تھانہ صدر قصور انسپکٹر ملک طارق نے اہل محلہ کے الزامات کی تردید کی۔ انہوں نے بتایا کہ ورثا نے اپنے تحریری بیان میں کہا کہ بابا شبیر نے نامعلوم وجوہات پر خود کشی کی ہے۔قبل ازیں معصوم زینب کے والدین اور دیگر متاثرہ خاندانوں نے لاہور میں سی ٹی ڈی سنٹر چوہنگ میں مرکزی ملزم عمران علی سے ملاقات کی تو سب اس درندہ صف شخص کو دیکھ کر آبدیدہ ہو گئے اور اس سے مختلف سوالات پوچھے اور جے آئی ٹی ممبران سے پھانسی دینے کا مطالبہ کیا۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق یہ ملاقات جے آئی ٹی ممبران کی موجودگی میں انسداد دہشت گردی سنٹر چوہنگ میں ہوئی جس دوران زینب کے والد اور دیگر بچیوں کے والدین مرکزی ملزم عمران علی کو کوستے رہے۔ امین انصاری اور دیگر لوگوں نے سوال پوچھا کہ اس نے یہ سب کیوں اور کس کے کہنے پر کیا ہے تو ملزم نے

کوئی جواب نہ دیا البتہ معافی ضرور مانگتا رہا۔زینب اور دیگر متاثرہ بچیوں کے لواحقین نے جے آئی ٹی ممبران سے ایک ہی مطالبہ کیا کہ اس نے جو ظلم کیا ہے اسے منطقی انجام تک پہنچایا جائے اور پھانسی دی جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی ایسا نہ کرے۔