Tag Archives: تحریک انصاف

تحریک انصاف کا زینب کے ظالمانہ قتل کا مقدمہ کونسی عدالت میں چلانے کا مطالبہ کر دیا


اسلام آباد(نیو زڈیسک )تحریک انصاف نے زینب کے ظالمانہ قتل کا مقدمہ فوجی عدالت میں چلانے کا مطالبہ کردیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سینیٹ میں پارلیمانی رہنما اعظم سواتی کی جانب سے تحریک التوا جمع کرائی گئی ہے۔ تحریک التوا پر شبلی فراز ، نعمان وزیر خٹک، محسن عزیز اور لیاقت خان ترکئی کے دستخط موجودہیں۔ تحریک کے ذریعے ایوان کا

ایجنڈا روکنے کا مطالبہ کیا گیا اور کہا گیا کہ زینب کے ظالمانہ قتل سے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کا تشخص مجروح ہوا ہے۔ عوام پنجاب کے حکمرانوں سے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔مجرموں کو سر عام عبرتناک سزا دی جائے تاکہ ان جرائم میں ملوث افراد کو ایک واضح پیغام پہنچے۔ریاست ملک کے بچوں کے تحفظ کی ذمہ دار ہوتی ہے۔

شریف خاندان کی منی لانڈرنگ کمپنی کس ملک میں ہے؟ حیران کن انکشاف


اسلام آباد(نیو زڈیسک )شریف خاندان کے بارے میں حالیہ تحقیقات میں ایف زیڈ ای کیپیٹل کی بھاری شراکت سامنے آئی ہے۔ ایف زیڈ ای کیپیٹل شریف خاندان کی منی لانڈرنگ کا مرکز تھا۔یہ بات تحریک انصاف کے سینئر مرکزی رہنما عمران اسماعیل نے اپنے ایک بیان میں کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ ایف زیڈ ای کیپیٹل کی بینک سٹیٹمنٹ ظاہر کرتی ہے کہ کوئی کاروبار نہیں تھا

صرف پیسے کی آمد و رفت تھی۔ایف زیڈ ای کیپیٹل کا ایک اکاؤنٹ نیشنل بینک آف دبئی میں تھا۔ایف زیڈ ای کیپیٹل کی 2009 تا 2017کی بینک سٹیٹمنٹ سے پیسیکی منتقلی کا طریقہئ کار پتا چلتا ہے۔ایف زیڈ ای کیپیٹل نیشنل بینک دبئی کا اکائوٹ حسن نواز کے نام پر ہے۔حسن نواز کا سی بینک میں ایک اور اکاؤنٹ بھی ہے جو ان کا ذاتی ہے۔نواز شریف نے ایک ملین ڈالر ایف زیڈ ای کیپیٹل سے 31دسمبر 2009 کو وصول کیئے۔نواز شریف کی سٹیٹمنٹ سے یہ رقم گفٹ ظاہر ہوتی ہے۔پیسہ انگلینڈ سے سعودیہ اور پھر شریف خاندان کے ذاتی اور کمپنیوں کے اکائونٹس میں آتا رہا ہے۔سپریم کورٹ نے نواز شریف کو ایف زیڈ ای کا اقامہ رکھنے اور یہ ساری معلومات ظاہر نہ کرنے پر نا اہل کیا

تحریک انصاف سینٹرل پنجاب نے سال2017کے اختتام پر موجودہ حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے


لاہور (نیو زڈیسک ) تحریک انصاف سینٹرل پنجاب نے سال2017کے اختتام پر موجودہ حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ شریفوں کو ڈیل ملے گی نہ ڈھیل ،2018کرپٹ ٹولے سے نجات کا سال ہوگا ،صدر سینٹرل پنجاب عبدالعلیم خان نے کہاہے کہ پنجاب کا ہر ضلع ناکامیوں ،مایوسیوں اور بد عنوانیوںکی بڑی بڑی داستانیں سنا رہا ہے ، نواز لیگ کے آقاؤں نے تیز تر طریقے سے پیسہ بنانے کیلئے کرپشن کے میگا منصوبے

اپنی ناک تلے رکھے اور پنجاب کے کسی ضلع میں کوئی نیا ہسپتال ،تعلیمی ادارہ یا فلاحی منصوبہ شروع نہیں کیا ،مریض ایڑیاں رگڑ رہے ہیں بچے سیڑھیوں میں پیدا ہو رہے ہیں لیکن حکمران بے حس رہے، اسی طرح وزیر آباد کے کارڈیالوجی ہسپتال سمیت حکمرانوں نے ان فلاحی منصوبوں کو بھی محض اپنی سیاسی آناء کی تسکین کیلئے کئی ایک فلاحی منصوبوں کو لٹکائے رکھا ،پی ٹی آئی وسطی پنجاب کے صدر عبدالعلیم خان نے اس اعلامیے کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ اختتام پذیر ہونے والے سال میں بے روزگاری ،بد امنی ، اقرباء پروری اور مہنگائی حکمرانوں کے”تحفے”رہے لیکن شریف خاندان خاطر جمع رکھے اب اس ملک گیر تبدیلی کا سورج طلوع ہو رہا ہے جس کیلئے پاکستان کے عوام نے گزشتہ21برسوں میں عمران خان کی قیادت میں جدوجہد کی ہے انہوں نے کہا کہ سیاسی مخالفین کے لئے زمین تنگ کرنے والے اب اپنی بقاء کیلئے ہاتھ پاؤں مارنا شروع ہو گئے ہیں لیکن اب انہیں جدہ یا لندن کہیں سے گرین سگنل نہیں ملے گا اور نہ ہی عوام کسی این آر او کو قبو ل کریں گے عبدالعلیم خان نے کہا کہ2017کاسال سپریم کورٹ کی طرف سے نا اہل وزیر اعظم کو ایکسپوز کرنے کے تاریخی فیصلے کے حوالے سے ہمیشہ یاد رکھا جائے گا جس سے ملک میں کرپشن کے خلاف عوامی لہر بیدار ہوئی انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کو اپنی پر امن جدوجہد پر فخر ہے جس کے نتیجے میں نا ممکن کو ممکن کر دکھا یا گیا

اب پاکستان میں کرپشن کے خلاف رائے عامہ ہموار ہو چکی ہے اور چارو نا چار ہر پارٹی کو کرپشن کے خلاف بات کرنا پڑ رہی ہے عبدالعلیم خان نے کہا کہ تحریک انصاف صوبہ پنجاب کے ہر ضلع سے نواز لیگ کو چاروں شانے چت کرنے کی سیاسی حکمت عملی وضع کر چکی ہے انشاء اللہ 2018پی ٹی آئی کا سال ہو گا جس میں پنجاب کے ہر ضلع میں عمران خان کے متوالے بھاری اکثریت سے کامیاب ہو کر عوامی امنگوں کو پورا کریں گے انہوں نے کہا کہ لاہور شہر سے لے کر راجن پور اور اٹک تک کے عوام کو عمران خان سے امیدیں وابستہ ہیں جن کو پورا کرنے کیلئے وہ آئندہ کبھی بھی نواز لیگ کو موقع نہیں دیں ۔ عبدالعلیم خان نے نئے سال2018کی مبارکباد دیتے ہوئے توقع ظاہر کی جلد پاکستان عمران خان کی قیادت میں خوشحال مستقبل کا ہدف حاصل کر لے گا۔

سب سے پہلے تحریک انصاف کی وکٹ اُڑانے والی ہیں ؟ نام بارے پتہ چل گیا


لاہور (نیوز ڈیسک) عائشہ گلالئی نے تحریک انصاف کی خواتین کو توڑنے کے لئے رابطے شروع کر دیئے۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان سے حال ہی میں منحرف ہونے والی ممبر قومی اسمبلی عائشہ گلالئی نے ملک کی اہم سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف کے خلاف ایک نئے مشن کا آغاز کر دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق فاٹا سے پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹ پر منتخب اور حال ہی میں چیئرمین

پاکستان تحریک انصاف عمران خان کے خلاف علم بغاوت بلند کرنے والی عائشہ گلالئی نے گزشتہ دنوں اپنی نئی سیاسی جماعت تحریک انصاف گلالئی بنانے کے اعلان کے بعد پاکستان تحریک انصاف ( عمران ) کی خواتین کو توڑنے اور کابینہ میں شامل کرنے کے لئے رابطے شروع کر دیئے ہیں اس سلسلے میں عائشہ گلالئی نے گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کی سینئر راہنما سیما انوار سے ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق عائشہ گلالئی نے راہنما پی ٹی آئی سیماانوار کو اپنی پارٹی کابینہ میں آنے کی پیش

کش بھی کی ہے۔عائشہ گلالئی نے اس موقع پر راہنما پی ٹی آئی سیماانوار کو اپنی نئی سیاسی پارٹی کا نام ’’تحریک انصاف گلالئی‘‘ بھی بتایا۔دوسری جانب عائشہ گلالئی سے ملاقات پر سیما انوار نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان اورچوہدری سرور کو دھوکہ نہیں دے سکتی، عائشہ گلالئی مجھ سے ملنے آئیں تھیں، عائشہ گلالئی نے اپنی پارٹی میں شمولیت کی دعوت دی، میں اپنی پارٹی سے غداری نہیں کر سکتی۔واضح رہے کہ ایک ہفتہ پہلے ہونے والی ملاقات کی ویڈیو منظر عام پر آ گئی ہے۔عائشہ گلا لئی نے پارٹی کی رہنما سیما انوار سے پنجاب میں ناراض خواتین کی لسٹ مانگ لی،

جس پر سیما انوار کا کہنا تھا کہ پارٹی رہنما زینب، فرید ہ اور بہت سی خواتین پارٹی چھوڑ چکی ہیں وہ انکو رابطہ نمبر دے سکتی ہیں، عائشہ گلا لئی نے سیما انوار کو بھی اپنی پارٹی میں شمولیت کی دعوت دی اور کہا کہ جھوٹی امیدیں چھوڑ دیں، عمران خان خواتین کو عزت دینے پر یقین نہیں رکھتے۔جس پر سیما انوار کا کہنا تھا کہ وہ ابھی اس پر کچھ نہیں کر پائیں گی، یہ سوچ سمجھ کرکرنے والا کام ہے جبکہ عائشہ گلالئی کا کہنا تھا کہ آدھی تحریک انصاف انکے ساتھ آ جائے گی۔

تحریک انصاف نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیخلاف عوامی تحریک سے ملکرمشترکہ تحریک چلانے کااعلان کردیا


لاہور( نیو زڈیسک ) تحریک انصاف نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیخلاف عوامی تحریک سے ملکرمشترکہ تحریک چلانے کااعلان کردیا۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہاکہ ملٹری ڈکٹیٹرکی گود میں پلنے والے ہمیں جمہوریت کے درس دے رہے ہیں،یہ ملٹری ڈکٹیٹرسے زیادہ خطرناک ہیں، مافیانے طاہرالقادری کوڈرانے کیلئے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیا،

اس موقع پرطاہرالقادری نے کہاکہ ایک بھائی پاناما کیس میں اور ایک کو سانحہ ماڈل ٹاؤن میں جانا ہوگا، میرانام ای سی ایل میں ڈال دیں تواچھاہے۔چیئرمین تحریک انصاف عمران خان آج ماڈل ٹاؤن میں ڈاکٹرطاہرالقادری سے ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کررہے تھے۔ عمران خان نے کہاکہ ہماری پارٹی نہیں بلکہ پوراپاکستان آپ کے ساتھ کھڑاہے۔ہم نے ٹی وی پردیکھا کہ پولیس لوگوں پرگولیاں چلارہی ہے اور لوگ مر رہے ہیں۔گلوبٹ ڈنڈا پکڑ کرمار رہاہے۔پولیس شہبازشریف اور راناثنائ اللہ کے حکم کے بغیراتناقتل عام کرہی نہیں سکتی تھی۔انہوں نے کہاکہ ملٹری ڈکٹیٹرکی گود میں پلے ہوئے ہمیں جمہوریت کے درس دیتے ہیں۔یہ ملٹری ڈکٹیٹرسے زیادہ خطرناک ہیں۔انہوں نے جمہوریت کوہائی جیک کررکھا ہے۔جمہوریت ہوتی توشہبازشریف جیل میں ہوتے۔انہوں نے کہاکہ یہ سیاستدان نہیں بلکہ سیسلین مافیاہے انہوں نے طاہرالقادری کوڈرانے کیلئے سب کچھ کیا۔انصاف اس لیے نہیں ملا کہ سب مافیاہے۔ورنہ انصاف مل جاتا۔ان حکمرانوں کی تاریخ مافیا والی ہے۔یہ جب کہتے ہیں کہ کمیشن بنادوکیونکہ ان کو پتاہے کہ سب ادارے ان کے کنٹرول میں ہے۔پاناما کیس میں یہی ہواہے۔نیب ،ایف آئی اے ایف بی آران کوبچاتے رہے۔

انہوں نے کہاکہ 30اگست کوجوانہوں نے ہمارے ساتھ کیا۔ہم تب سے اکٹھے ہیں۔ہماری تب ڈیمانڈ دھاندلی کی تحقیقات تھیں جبکہ طاہرالقادری کی ڈیمانڈ سانحہ ماڈل ٹاؤن کیلئے انصاف تھا۔انہوں نے اس موقع پراعلان کیاکہ تحریک انصاف عوامی تحریک کے ساتھ کھڑی ہے۔طاہرالقادری جوبھی فیصلہ کریں گے ہم ساتھ دیں گے۔انہوں نے کہاکہ نوازشریف صاحب

خداکے واسطے تحریک شروع کریں۔نوازشریف جب باہرنکلیں گے تولوگ انہیں انڈے ماریں گے۔ان میں تحریک چلانے کی جرات ہی نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ نوازشریف نے مجھے لاڈلاکہاہے۔لاڈلاتو نوازشریف ہے جس کو جنرل ضیائ الحق نے چوسنی دے کرپالا۔آئی جے آئی بنائی گئی۔پھر90ئ میں مہران بینک کاپیسا دیاگیا۔پھر ان کیخلاف کیس نہیں سنا گیا۔

پھر فاروق لغاری کے ساتھ مل کربے نظیرکی حکومت گرائی۔اسی طرح پھر 2013ئ میں ٹھپے لگے۔فوج نے لاڈلے کوبچایا۔اب اسٹیبلشمنٹ ان کاپاناما میں ساتھ نہیں دے رہی۔جبکہ پاناما ایک انٹرنیشنل کیس ہے۔شریف برادران اللہ کی پکڑمیں آگیاہے۔اب ان کاگلاہے کہ عدلیہ جسٹس قیوم کی طرح مدد کیوں نہیں کرتی اور فوج نے ان کوجے آئی ٹی میں کیوں نہیں بچایا؟

اس موقع پرطاہرالقادری نے کہاکہ تحریک انصاف کے وفد کوخوش آمدید کہتاہوں۔عمران خان نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کو اپنا کیس اور اپنی تحریک کاسانحہ سمجھا۔ہمیشہ ہماری حمایت کی۔متاثرین کو انصاف دلانے کیلئے شانہ بشانہ رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اے پی سی سے متعلق معاملات پربھی مشاورت کی۔31دسمبر کالائحہ مشترکہ سوچ سے بنائیں گے۔

مجھے شک نہیں کہ نوازشریف اس میں ملوث نہیں بلکہ مجھے 100فیصد یقین ہے کہ ماڈل ٹاؤن میں قتل عام میں نوازشریف کی مرضی شامل تھی۔نجفی کمیشن نے پنجاب حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایاہے۔شہبازشریف اور راناثنائ اللہ خود کوقانون کے حوالے کریں تاکہ انکوائری شفاف ہوسکے۔طاہرالقادری نے کہاکہ ہمیں رپورٹ کو پبلک کروانے میں

ساڑھے تین سال لگ گئے لیکن ذمہ دران ابھی بھی بیٹھے ہوئے ہیں۔کبھی تاریخ میں نہیں ہواکہ لوگوں کا قتل عام ہواہواورایک بھی شخص جیل میں نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ میں اعلان کرتاہوں آپ لوگوں کوگھرجانا ہوگا۔ایک بھائی پاناما کیس میں گیا ایک کو سانحہ ماڈل ٹاؤن میں جانا ہوگا۔آپ کے خاندان کے بچے کی بھی اقتدارمیں جگہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہاکہ میرانام اگرای سی ایل میں ڈال دیں تویہ اچھاہے کہ میری باہرکی مصروفیات ختم ہوجائیں گی اور میں ان کیخلاف کھل کرسڑکوں پرنکلوں گا۔انہوں نے کہاکہ خان صاحب کاکندھا اللہ کے فضل سے اتنامضبوط ہے کہ ان کوخبرہوجائے گی۔

جہانگیر ترین ایک بار پھر سے اہل ہو جائیں گے۔۔تحریک انصاف نے حکمت عملی بنا لی۔۔حکومت پریشان


لاہور (انقلاب ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصا ف کے مرکزی رہنما فواد چودھری کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین کی نا اہلی کا فیصلہ واپس لیا جا سکتا ہے۔ نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین کو نا اہل قرار دیے جانے والا فیصلہ کئی بنیادوں پر انتہائی کمزور ہے۔ اس لئے اس بارے میں قانونی ماہرین سے مشاورت کر لی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم پر امید ہیں کہ نظر ثانی اپیل دائر کرکے جہانگیر ترین کی قومی اسمبلی کی رکنیت کو بحال کروا لیں گے۔ واضح رہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے جمعہ کے روز حنیف عباسی کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے جہانگیر ترین کو نا اہل قرار دے دیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کی نا اہلی کے بعد خالی ہونے والے


اسلام آباد (نیو زڈیسک)الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کی نا اہلی کے بعد خالی ہونے والے قومی اسمبلی کی نشست این اے 154 لودھراں میں ضمنی انتخاب کے شیڈول کا اعلان کردیا۔الیکشن کمیشن نے لودھراں سے قومی اسمبلی کی نشست پر 12 فروری کو ضمنی انتخاب کرانے کا اعلان کیا ہے۔الیکشن کمیشن کی

جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق امیدوار اپنے کاغذات نامزدگی 26 سے 28 دسمبر تک جمع کرا سکیں گے جب کہ کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 5 جنوری کو ہو گی۔الیکشن کمیشن کے مطابق امیدواروں کی حتمی فہرست کا اجرا 17 جنوری کو ہو گا اور ضمنی انتخاب 12 فروری کو ہوگا۔یاد رہے کہ 15 دسمبر کو سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین کو تاحیات نااہل قرار دیا تھا جس کے بعد الیکشن کمیشن نے این اے 154 کی نشست کو خالی قرار دے دیا تھا۔

تین بڑی شخصیات نے ایک ساتھ تحریک انصاف جوائن کر لی۔۔کھلاڑیوں کے کیمپ میں جشن


اسلام آباد (انقلاب ویب ڈیسک)معروف ڈرامہ نویس حسینہ معین نے سیاست میں انٹری دیتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) میں شمولیت اختیار کرلی۔پاکستانی ڈراموں کی شہزادی کے نام سے معروف حسینہ معین نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سے ملاقات کے دوران پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔حسینہ معین کے ساتھ ٹی وی شخصیات ظہیر خان اور یاسر مظہر نے بھی پی ٹی آئی میں شمولیت کی۔عمران خان کے ساتھ ملاقات کے دوران جہاں حسینہ معین نے اپنے

ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی، وہیں سیاستدان محفوظ النبی بھی تحریک انصاف کا حصہ ہوگئے۔تحریک انصاف میں شمولیت کرنے والے افراد نے چیئرمین عمران خان کے ساتھ پی ٹی آئی کراچی کے رہنما فردوس شمیم نقوی کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔تحریکانصاف کے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل پر عمران خان کی حسینہ معین، ظہیر خان اور یاسر مظہر کے ساتھ ملاقات کی تصاویر شیئر کی گئیں۔ٹوئیٹ میں بتایا گیا کہ

حسینہ معین سمیت دیگر رہنماؤں نے عمران خان سے ملاقات کے دوران پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔حسینہ معین اور دیگر شخصیات کی جانب سے پارٹی میں شمولیت پرعمران خان نے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نئے اقدام سے پارٹی مضبوط ہوگی۔

پاکستانی ڈراموں کی ’’حسینہ ‘‘ نے تحریک انصاف میں انٹری دیدی


لاہور(انقلاب ویب ڈیسک) پاکستانی ٹی وی کی ممتاز ڈرامہ نویس حسینہ معین نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) میں شمولیت اختیار کرلی۔ حسینہ معین کے ساتھ ٹی وی شخصیات ظہیر خان اور یاسر مظہر نے بھی پی ٹی آئی میں شمولیت کی۔تفصیلات کے مطابق عمران خان کے ساتھ ملاقات کے دوران جہاںحسینہ معین نے اپنے ساتھیوں سمیت پی ٹی ا?ئی میں شمولیت

اختیار کی، وہیں سیاستدان محفوظ النبی بھی تحریک انصاف کا حصہ ہوگئے۔تحریک انصاف میں شمولیت کرنے والے افراد نے چیئرمین عمران خان کے ساتھ پی ٹی آئی کراچی کے رہنما فردوس شمیم نقوی کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔تحریک انصاف کے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل پر عمران خان کی حسینہ معین، ظہیر خان اور یاسر مظہر کے ساتھ ملاقات کی تصاویر شیئر کی گئیں۔ٹوئیٹ میں بتایا گیا کہ حسینہ معین سمیت دیگر رہنماو¿ں نے عمران خان سے ملاقات کے دوران پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔حسینہ معین اور دیگر شخصیات کی جانب سے پارٹی میں شمولیت پرعمران خان نے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نئے اقدام سے پارٹی مضبوط ہوگی۔

معروف ڈرامہ نویس حسینہ معین نے سیاست میں انٹری دیتے ہوئے


کراچی (نیوز ڈیسک)معروف ڈرامہ نویس حسینہ معین نے سیاست میں انٹری دیتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) میں شمولیت اختیار کرلی۔پاکستانی ڈراموں کی شہزادی کے نام سے معروف حسینہ معین نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سے ملاقات کے دوران پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔حسینہ معین کے ساتھ ٹی وی

شخصیات ظہیر خان اور یاسر مظہر نے بھی پی ٹی آئی میں شمولیت کی۔عمران خان کے ساتھ ملاقات کے دوران جہاں حسینہ معین نے اپنے ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی، وہیں سیاستدان محفوظ النبی بھی تحریک انصاف کا حصہ ہوگئے۔تحریک انصاف میں شمولیت کرنے والے افراد نے چیئرمین عمران خان کے ساتھ پی ٹی آئی کراچی کے رہنما فردوس شمیم نقوی کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔تحریک انصاف کے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل پر عمران خان کی حسینہ معین، ظہیر خان اور یاسر مظہر کے ساتھ ملاقات کی تصاویر شیئر کی گئیں۔ٹوئیٹ میں بتایا گیا کہ حسینہ معین سمیت دیگر رہنماؤں نے عمران خان سے ملاقات کے دوران پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔حسینہ معین اور دیگر شخصیات کی جانب سے پارٹی میں شمولیت پرعمران خان نے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نئے اقدام سے پارٹی مضبوط ہوگی۔