شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

شاہدمسعودکوسمجھائیں ورنہ۔۔۔۔چیف جسٹس نے وکیل سے بڑی بات کہہ دی


اسلام آباد(ویب ڈیسک) چیف جسٹس پاکستان نے زینب قتل کیس میں مجرم کے اکاؤنٹس کا دعویٰ کرنے والے اینکر شاہد مسعود پر کیس کی سماعت کے دوران شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ان کی سرزنش کی ہے۔سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ زینب قتل کیس میں اینکر شاہد مسعود کے الزامات سے متعلق کیس کی سماعت

کررہا ہے۔دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان نے اینکر شاہد مسعود پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے تو آپ سے محبت کی لیکن لگتاہے شاہد مسعود کو بڑوں کی نصیحت کااحساس نہیں، دوسرے دن بھی پروگرام میں میرے کورٹ آفیسر کی تضحیک کی، آپ کی ہمت کیسے ہوئی میرے لاء آفیسر کی توہین کرنے کی؟ دیکھتا ہوں کتنے دن پروگرام چلتا ہے۔چیف جسٹس پاکستان نے شاہد مسعود کے وکیل شاہ خاور کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ شاہ خاور صاحب انہیں سمجھایا کریں اور اپنی زبان میں سمجھا دیں، ورنہ ہمیں بھی آتا ہے کس طرح عزت کروائی جاتی ہے، اب جا کر ٹی وی پر نہ بولنا شروع کردیں،جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ہوسکتاہے شاہد مسعود کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کریں۔چیف جسٹس نے عدالتی عملے کو اینکر شاہد مسعود کے پروگرام کا حصہ پروجیکٹر پر لگانے کی ہدایت کی جو سماعت میں وقفہ ختم ہونے کے بعد چلایا جائے گا۔واضح رہے کہ رواں برس جنوری میں پنجاب کے ضلع قصور میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی کمسن زینب کے کیس میں ٹی وی اینکر شاہد مسعود نے مجرم عمران کے بیرون ملک 37 بینک اکاؤنٹس ہونے کا دعویٰ کیا

تھا جس پر سپریم کورٹ نے نوٹس لیا تھا جب کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے بھی معاملے کی تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی بنائی تھی۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس