شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

اگریہ کام نہ رکاتوہم حملہ کرنے پرمجبورہوجائیں گے ،امریکی سفیرنے دھمکی دیدی


دمشق(ویب ڈیسک) اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی نے دھمکی دی ہے شامی حکومت کو نہ روکا تو امریکہ حملے پر مجبور ہو گا۔ شامی فورسز نے غوطہ کے 60 فیصد حصے پر قبضہ کر لیا ہے۔ سلامتی کونسل میں جنگ بندی کوششوں پر تبادلہ خیال کیا۔شام کے علاقے مشرقی غوطہ میں فوج اور باغیوں کے درمیان شدید زخمیوں کو محفوظ طبی سینٹرز تک

منتقل کرنے کے لیے معاہدہ طے پا گیا ہے۔شامی فوج اور باغیوں کے درمیان طے پائے گئے معاہدے کے تحت زخمیوں کو مرحلہ وار منتقل کیا جائے گا تاہم مریضوں کی باحفاظت منتقلی کا آغاز کب اور کس طرح انجام پائے گا اس حوالے سے تفصیلات سامنے نہیں آسکی ہیں۔ غوطہ میں گزشتہ ماہ ے جاری شامی حکومت کی بمباری میں ایک ہزار افراد جاں بحق ہو گئے ہیں جب کہ بچوں، خواتین اور بزرگوں سمیت 4 ہزار افراد شدید زخمی ہیں جنہیں فوری طبی امداد کی ضرورت ہے بصورت دیگر ان کی جانوں کو خدشہ لاحق ہے۔اقوام متحدہ نے زخمیوں کی منتقلی سے متعلق معاہدے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ مشرقی غوطہ میں ایک ہزار افراد کی حالت نہایت نازک ہے جن میں اکثریت بچوں کی ہے۔ انہیں فوری طبی امداد مہیا نہیں کی گئی تو ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے، لہذا اس معاہدے پر جلد از جلد عمل درآمد کرنے کی اشد ضرورت ہے۔اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹونیو گوئٹرس نے کہا کہ جنگ بندی کی قرار داد پاس ہونے کے باوجود جنگ بندی کی گئی ہے اور نہ ہی شدید زخمی مریضوں کو محفوظ مقام پر منتقل کیا گیا ہے جس پر اقوام متحدہ نے شامی حکومت، روس اور

باغیوں کی تین گروپوں کے مابین مریضوں کی منتقلی کے لیے معاہدے کرانے کی پیشکش کی تھی۔آئندہ ہفتے قزاقستان کے دارالحکومت آستانہ میں روس، ایران اور ترکی کے وزرائے خارجہ کا ایک ابتدائی سہ فریقی اجلاس ہوگا، جس میں شام کی بگڑتی ہوئی صورت حال پر غور ہوگا، جس میں تینوں ملکوں کی جانب سے اپریل میں شام پر ہونے والے سربراہ اجلاس کے ایجنڈا کو آخری شکل دی جائے گی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق قزاقستان کی خارجہ امور کی وزارت نے بتایا کہ 16 مارچ کو آستانہ میں ہونے والے اجلاس میں سفارت کار اْس طریقہ کار پر بات کریں گے جس کی مدد سے شام کے بحران کا خاتمہ لایا جاسکے





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس