شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

بریکنگ نیوز نقیب اللہ قتل کیس:سپریم کورٹ کارائوانوارکوگرفتارنہ کرنے کاحکم


اسلام آباد (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ میں نقیب اللہ قتل کیس پر از خود نوٹس کی سماعت ہوئی۔ سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی۔ سپریم کورٹ نے راؤانوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم دے دیا۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ راؤ انورا نے خط میں لکھا ہے کہ میں بے گناہ ہوں ،ان کا موقف ہے کہ وہ ان کاؤنٹر کے وقت میں موقع پر موجود نہیں

تھے۔خط میں لجھا گیا کہ میں نے کافی عرصہ ملیر کےلوگوں کی خدمت کی ہے۔ میں نے جو بھی کیا قانون کے مطابق کیا ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ہم راؤ انوار کو حفاظتی ضمانت دے دیتے ہیں۔ راؤ انوار کو سکیورٹی دینا بھی ضروری ہے۔ راؤ انوار نے خط میں لکھا ہے کہ آزاد جے آئی ٹی بنا دیں میں پیش ہو جاؤں گا ، جو فیصلہ جے آئی ٹی کرے گی مجھے منظور ہو گ۔ چیف جسٹس نے خط پر کیے گئے راؤ انوار کے دستخط تصدیق کے لیے آئی جی سندھ کو دکھائے۔جس پر آئی جی سندھ نے کہا کہ ستخط راؤ انوار سے ملتے جلتے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ٹھیک ہے پھر جے آئی ٹی بنا دیتے ہیں ۔ چیف جسٹس نے آئی جی سندھ سے کہا کہ دیکھ لیں آئی جی صاحب راؤ انوار کا ہم نے ہی پتہ کروایا ہے آپ نے کچھ نہیں کیا جس پر آئی جی سندھ نے کہا کہ سر آپ میں اور ہم میں بہت فرق ہے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ راؤ انوار کو گرفتار نہیں کیا جائے گا جبکہ نقیب اللہ محسود قتل کیس پر آزاد جے آئی ٹی تشکیل دے دی جائے گی,جے آئی ٹی میں پولیس افسر بھی شامل کریں گے۔ سپریم کورٹ نے راؤ انوار کو جمعے کو پیش ہونے کا حکم دیا۔

 





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس