شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

حج پر جانے والے خواہشمند متوجہ ہوں :درخواستوں کی وصولی اور قرعہ اندازی کب ہو گی ؟ تاریخ کا اعلان کر دیا گیا


اسلام آباد(ویب ڈیسک) حج 2018ء کیلیے درخواستوں کی وصولی کاعمل کل شروع ہو گا جب کہ قرعہ اندازی26 جنوری کو ہوگی۔حج 2018ء کیلیے درخواستوں کی وصولی کاعمل کل شروع ہو گا جو 24 جنوری تک جاری رہے گا جب کہ قرعہ اندازی26 جنوری کو ہوگی۔ وزارت مذہبی امور کے مطابق اس سال سرکاری اسکیم کے تحت ایک لاکھ 20 ہزارجبکہ

پرائیویٹ اسکیم کے تحت59ہزار210 خوش نصیب حج کی سعادت حاصل کرینگے۔ اسی طرح ہارڈ شپ کوٹے کے تحت 2400 عازمین حج کی سعادت حاصل کریں گے۔کراچی، کوئٹہ، سکھر سے 2 لاکھ 83 ہزار 50 روپے جب کہ پشاور، اسلام آباد، لاہور، رحیم یار خان، فیصل آباد اور سیالکوٹ سے 2لاکھ93 ہزار50 روپے فی کس اخراجات وصول کیے جائیں گے۔خیال رہے کہ وزارت مذہبی امور کی جانب سے حج پالیسی 2018 میں سرکاری حج سکیم میں حج کا دورانیہ کم کرکے 30 سے 32 دن کرنے کی تجویز کے باوجود حج پیکیج گزشتہ برس کا برقرار رکھا گیا ہے۔ سرکاری سکیم کے تحت عازمین حج کا قیام 40 سے 42 دن تھا، قیام کی اس مدت کو ہر حکومت نے برقرار رکھا مگر موجودہ حکومت اپنے آخری حج میں سرکاری سکیم کے ایک لاکھ 20 ہزار حجاج کے لئے حجاز مقدس میں قیام کی مدت کم کرنے کے بارے میں سنجیدگی سے مشاورت کررہی ہے۔ گزشتہ سال 2 لاکھ 80 ہزار اور 2 لاکھ 70 ہزار میں سرکاری سکیم کے حجاج نے 40 سے 45 دن قیام کیا اور رواں سال اسی پیکیج میں 30 سے 32 روز قیام ہوگا۔ ٹرانسپورٹ، تین وقت کا کھانا، رہا ئش

گاہوں کے اخراجات میں دس دن کم کئے جانے کافائدہ وزارت مذہبی امور اور حجاج کرام کو نہیں دیا جا رہا۔ عازمین حج کا موقف ہے کہ سرکاری سکیم کے تحت دن کم کرنے کے بجائے دن بڑھائے جائیں تاکہ حجاز مقدس میں زیادہ سے زیادہ وقت بسر کیا جاسکے۔ دوسری جانب ناخوشگوار واقعات سے بچنے کیلئے حج کے رکن رمی کا دورانیہ 12 گھنٹے تک کم کردیا گیا، سعودی میڈیا کے مطابق گزشتہ سال حج کے دوران بھگدڑ کے حادثے کے پیش نظر اس سال حج کے انتظامی امور میں سختی کردی گئی ہے۔ اگلے ماہ سے شروع ہونے والے حج کے رکن رمی کا دورانیہ 12 گھنٹے تک کم کردیا گیا ہے ۔وزارت حج کے مطابق منیٰ میں رمی کے پہلے دن صبح 6 بجے سے ساڑھے دس بجے،دوسرے دن دوپہر دو بجے سے شام 6 بجے اور تیسرے اور آخری دن صبح ساڑھے دس بجے سے دوپہر 2 بجے تک پابندی ہوگی ۔ سعودی وزارت حج کے مطابق اس طریقے کار سے عازمین حج کو آسانی ہوگی، گزشتہ سال رمی کے دوران بھگدڑ مچنے سے 2 ہزار 2 سو 97 عازمین حج شہید ہو گئے تھے۔ حکومت نے حج کا دورانیہ کم کر کے 30 سے 32 روز کرنے پر غور شروع کر دیا جبکہ عازمین سے پیسے پہلے جتنے ہی بٹورے جائیں گے۔تفصیلات کے مطابق حکومت نے عازمین حج کو مالی فائدہ دئیے بغیر حج کا دورانیہ کم کرنے کے لیے غور شروع کر دیا ہے ۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس